سورہ انسان

ویکی شیعہ سے
یہاں جائیں: رہنمائی، تلاش کریں
قیامہ سورۂ انسان مرسلات
سوره انسان..jpg
ترتیب کتابت: 76
پارہ : 29
نزول
ترتیب نزول: 96
مکی/ مدنی: مدنی
اعداد و شمار
آیات: 31
الفاظ: 243
حروف: 1089

سورہ انسان یا ہل اتی یا دَہر، قرآن کی 76ویں اور مدنی سورتوں میں سے ہے جو قرآن کے 29ویں پارے میں واقع ہے۔ انسان کی خلقت اور اسکی ہدایت نیز نیکوکاروں کے اوصاف اور خدا کی طرف سے ان کو دی جانے والی نعمات اور ان کے علل و اسباب کے بارے میں اس سورت میں بحث کی گئی ہے۔ اسی طرح قرآن کی اہمیت اور خداوند متعال کی مشیت کے بارے میں بھی اس سورت میں گفتگو ہوئی ہے۔

شیعہ اور بعض اہل سنت مفسرین کے مطابق اس سورت کی آٹھویں آیت، آیہ اطعام کے نام سے معروف ہے۔ یہ آیت حضرت علیؑ، حضرت فاطمہؑ، امام حسنؑ و امام حسینؑ اور اہل بیت کی خادمہ فضہ کی شان میں نازل ہوئی ہے۔ کہا جاتا ہے کہ مذکورہ شخصیات نے حسنین شریفینؑ کی صحت یابی کے شکرانے میں تین دن روزے رکھے، افطار کے وقت پہلے دن کسی مسکین دوسرے دین کسی یتیم اور تیسرے دن کسی اسیر نے در اہل بیت سے کھانا طلب کیا یوں تینوں دنوں کی افطاری راہ خدا میں دے دئے اور خود بھوکے رہے۔ اس سورت کے پڑھنے کا بہت ثواب ہے منجملہ یہ کہ اس کا پڑھنے والا قیامت کے دن پیغمبر اکرمؑ کا ہم نیشن ہوگا۔

تعارف

  • وجہ تسمیہ

یہ سورہ، سورہ انسان، سورہ ہل اتی اور سورہ دہر کے نام سے مشہور ہے۔ یہ تینوں نام اس سورت کی پہلی آیت میں آئے ہیں اسی وجہ سے یہ سورہ ان ناموں سے جانا جاتا ہے۔ اس سورت کو سورہ ابرار بھی کہا جاتا ہے کیونکہ یہ کلمہ اس سورت کی پانچویں آیت میں آیا ہے اور اس سورے کے نصف سے زیارہ مطالب انہی لوگوں(ابرار) کے حالات پر مشتمل ہے۔[1]

  • محل نزول اور ترتیب نزول

سورہ انسان مدنی سورتوں میں سے ہے اور ترتیب نزول میں یہ سورت 98ویں نمبر پر ہے۔ جبکہ موجودہ ترتیب کے مطابق یہ سورہ 76ویں نمبر پر ہے۔[2] یہ سورہ قرآن کے 29ویں پارے میں موجود ہے۔[3]

  • اعداد و شمار اور دوسری خصوصیات

سورہ انسان 31 آیات، 243 الفاظ اور 1089 حروف پر مشتمل ہے۔ حجم کے اعتبار سے یہ سورت نسبتا چھوٹے سوروں میں سے ہے اس بنا پر اس کا شمار مفصلات میں ہوتا ہے۔[4] سورہ انسان منجملہ ان سورتوں میں سے ہے جسے مکمل طور پر حضرت عباس کے روضہ اقدس پر کندہ کی ہوئی ہے۔[5]

مضامین

تفسیر نمونہ کے مطابق اس سورے کے مضامین کو پانچ نکات میں تقسیم کیا جا سکتا ہے:

  • پہلا نکتہ: انسان کی آفرینش، نطفے سے انسان کی خلقت، انسان کی ہدایت اور اس کا با اختیار ہونا؛
  • دوسرا نکتہ: ابرار اور نیک لوگوں(اہل بیتؑ) کی جزا؛
  • تیسرا نکتہ: نیک لوگوں کی خصوصیات جس کے باعث یہ لوگ جزا کے مستحق قرار پاتے ہیں؛
  • چوتھا نکتہ: قرآن کی اہمیت، اس کے احکام کی اجراء کا طریقہ اور خودسازی کا پرفراز و نشیب راستہ؛
  • پانچواں نکتہ: خدا کی مشیت اور ارادے کی حاکمیت ۔[6]
سورہ انسان کے مضامین[7]
 
 
 
 
انسانوں کو دین خدا کی پیروی کی ترغیب
 
 
 
 
 
 
 
 
 
 
 
 
 
 
 
 
 
 
 
 
 
 
 
 
تیسرا نکتہ؛ آیہ 23-31
دین خدا کی پیروی کی ضرورت
 
دوسرا نکتہ؛ آیہ 4-22
دین خدا کی پیروی کا ثواب
 
پہلا نکتہ؛ آیہ 1-3
دین خدا کی طرف انسانی کی فطری ہدایت
 
 
 
 
 
 
 
 
 
 
 
 
پہلا مطلب؛ آیہ 23-26
کافروں کی پیروی نہ کرنا پیغمبر اکرمؐ کی ذمہ داریوں میں سے ہے
 
پہلا مطلب؛ آیہ 4
کافروں کیلئے آخرت میں عذاب
 
پہلا مطلب؛ آیہ 1-2
انسانوں میں پیدائشی طور پر حق کی پہچان کا مادہ پایا جاتا ہے
 
 
 
 
 
 
 
 
 
 
 
 
دوسرا مطلب؛ آیہ 27-28
کافروں کی پیروی نہ کرنے کی علت ان کی دنیاپرستی ہے
 
دوسرا مطلب؛ آیہ 5-6
ایمان داروں کا بہشت کے چشموں سے سیراب ہونا
 
دوسرا مطلب؛ آیہ 3
انسانوں کی تکوینی اور تشریعی طور پر خدا کی طرف ہدایت
 
 
 
 
 
 
 
 
 
 
 
تیسرا مطلب؛ آیہ 29-31
کفار خدا کے ارادے پر غالب نہیں آ سکتے
 
تیسرا مطلب؛ آیہ 7-11
بندگان خدا کی صفات
 
 
 
 
 
 
 
 
 
 
 
 
 
 
چوتھا مطلب؛ آیہ 12-22
بندگان خدا کیلئے بہشتی نعمتیں

متن سورہ

سورہ قیامہ مدنیہ ـ نمبر 76 ـ آیات 31 ـ ترتیب نزول 96
ترجمہ
بِسْمِ اللَّـهِ الرَّ‌حْمَـٰنِ الرَّ‌حِيمِ

ہَلْ أَتَى عَلَى الْإِنسَانِ حِينٌ مِّنَ الدَّہْرِ لَمْ يَكُن شَيْئًا مَّذْكُورًا ﴿1﴾ إِنَّا خَلَقْنَا الْإِنسَانَ مِن نُّطْفَةٍ أَمْشَاجٍ نَّبْتَلِيہِ فَجَعَلْنَاہُ سَمِيعًا بَصِيرًا ﴿2﴾ إِنَّا ہَدَيْنَاہُ السَّبِيلَ إِمَّا شَاكِرًا وَإِمَّا كَفُورًا ﴿3﴾ إِنَّا أَعْتَدْنَا لِلْكَافِرِينَ سَلَاسِلَا وَأَغْلَالًا وَسَعِيرًا ﴿4﴾ إِنَّ الْأَبْرَارَ يَشْرَبُونَ مِن كَأْسٍ كَانَ مِزَاجُہَا كَافُورًا ﴿5﴾ عَيْنًا يَشْرَبُ بِہَا عِبَادُ اللَّہِ يُفَجِّرُونَہَا تَفْجِيرًا ﴿6﴾ يُوفُونَ بِالنَّذْرِ وَيَخَافُونَ يَوْمًا كَانَ شَرُّہُ مُسْتَطِيرًا ﴿7﴾ وَيُطْعِمُونَ الطَّعَامَ عَلَى حُبِّہِ مِسْكِينًا وَيَتِيمًا وَأَسِيرًا ﴿8﴾ إِنَّمَا نُطْعِمُكُمْ لِوَجْہِ اللَّہِ لَا نُرِيدُ مِنكُمْ جَزَاء وَلَا شُكُورًا ﴿9﴾ إِنَّا نَخَافُ مِن رَّبِّنَا يَوْمًا عَبُوسًا قَمْطَرِيرًا ﴿10﴾ فَوَقَاہُمُ اللَّہُ شَرَّ ذَلِكَ الْيَوْمِ وَلَقَّاہُمْ نَضْرَةً وَسُرُورًا ﴿11﴾ وَجَزَاہُم بِمَا صَبَرُوا جَنَّةً وَحَرِيرًا ﴿12﴾ مُتَّكِئِينَ فِيہَا عَلَى الْأَرَائِكِ لَا يَرَوْنَ فِيہَا شَمْسًا وَلَا زَمْہَرِيرًا ﴿13﴾ وَدَانِيَةً عَلَيْہِمْ ظِلَالُہَا وَذُلِّلَتْ قُطُوفُہَا تَذْلِيلًا ﴿14﴾ وَيُطَافُ عَلَيْہِم بِآنِيَةٍ مِّن فِضَّةٍ وَأَكْوَابٍ كَانَتْ قَوَارِيرَا ﴿15﴾ قَوَارِيرَ مِن فِضَّةٍ قَدَّرُوہَا تَقْدِيرًا ﴿16﴾ وَيُسْقَوْنَ فِيہَا كَأْسًا كَانَ مِزَاجُہَا زَنجَبِيلًا ﴿17﴾ عَيْنًا فِيہَا تُسَمَّى سَلْسَبِيلًا ﴿18﴾ وَيَطُوفُ عَلَيْہِمْ وِلْدَانٌ مُّخَلَّدُونَ إِذَا رَأَيْتَہُمْ حَسِبْتَہُمْ لُؤْلُؤًا مَّنثُورًا ﴿19﴾ وَإِذَا رَأَيْتَ ثَمَّ رَأَيْتَ نَعِيمًا وَمُلْكًا كَبِيرًا ﴿20﴾ عَالِيَہُمْ ثِيَابُ سُندُسٍ خُضْرٌ وَإِسْتَبْرَقٌ وَحُلُّوا أَسَاوِرَ مِن فِضَّةٍ وَسَقَاہُمْ رَبُّہُمْ شَرَابًا طَہُورًا ﴿21﴾ إِنَّ ہَذَا كَانَ لَكُمْ جَزَاء وَكَانَ سَعْيُكُم مَّشْكُورًا ﴿22﴾ إِنَّا نَحْنُ نَزَّلْنَا عَلَيْكَ الْقُرْآنَ تَنزِيلًا ﴿23﴾ فَاصْبِرْ لِحُكْمِ رَبِّكَ وَلَا تُطِعْ مِنْہُمْ آثِمًا أَوْ كَفُورًا ﴿24﴾ وَاذْكُرِ اسْمَ رَبِّكَ بُكْرَةً وَأَصِيلًا ﴿25﴾ وَمِنَ اللَّيْلِ فَاسْجُدْ لَہُ وَسَبِّحْہُ لَيْلًا طَوِيلًا ﴿26﴾ إِنَّ ہَؤُلَاء يُحِبُّونَ الْعَاجِلَةَ وَيَذَرُونَ وَرَاءہُمْ يَوْمًا ثَقِيلًا ﴿27﴾ نَحْنُ خَلَقْنَاہُمْ وَشَدَدْنَا أَسْرَہُمْ وَإِذَا شِئْنَا بَدَّلْنَا أَمْثَالَہُمْ تَبْدِيلًا ﴿28﴾ إِنَّ ہَذِہِ تَذْكِرَةٌ فَمَن شَاء اتَّخَذَ إِلَى رَبِّہِ سَبِيلًا ﴿29﴾ وَمَا تَشَاؤُونَ إِلَّا أَن يَشَاء اللَّہُ إِنَّ اللَّہَ كَانَ عَلِيمًا حَكِيمًا ﴿30﴾ يُدْخِلُ مَن يَشَاء فِي رَحْمَتِہِ وَالظَّالِمِينَ أَعَدَّ لَہُمْ عَذَابًا أَلِيمًا ﴿31﴾

اللہ کے نام سے جو بہت رحم والا نہایت مہربان ہے

کیا انسان پر عالم امکان کے دور میں ایک وقت ایسا نہ تھا جب کہ وہ کوئی ذکر میں آنے والی چیز نہ تھا (1) ہم نے اس انسان کو ملے جلے ہوئے نطفے سے پیدا کیا تا کہ اس کو محل آزمائش میں لائیں تو اسے دیکھنے والا اور سننے والا بنایا (2) ہم نے اسے ایک خاص راستے کی ہدایت کی اب یا تو وہ شکر گزار ثابت ہوتاہے یا ناشکرا (3) ہم نے تیار رکھی ہیں کافروں کے لئے زنجیریں اور طوق اور بھڑکتی ہوئی آگ (4) یقینا نیک لوگ ایسے (بہشت کی شراب کے) جام پئیں گے جن میں کافور کی شرکت ہو گی (5) وہ چشمہ جس سے اللہ کے بندے اپنی جگہ بیٹھے بیٹھے شاخیں نکال نکال کر سیراب ہوں گے (6) یہ وہ ہیں جو نذر کو پورا کرتے ہیں اور اس دن کا اندیشہ محسوس کرتے رہے ہیں جس کی مصیبت پھیلی ہوئی ہو گی (7) اور وہ کھانا کھلاتے ہیں اس کی محبت کے ساتھ ساتھ غریب محتاج اور یتیم اور جنگ کے قیدی کو (8) ہم تمہیں صرف اللہ کی رضا کے لئے کھلاتے ہیں نہ تم سے جزاء چاہتے ہیں اور نہ شکریہ (9) ہم ڈرتے ہیں اپنے پروردگار کی طرف سے اس دن کے عذاب کے ڈر سے جو بہت ترش روا اور سخت ہو گا (10) تو بچایا انہیں اللہ نے اس دن کی سختی سے اور انہیں ملایا تروتازگی اور مسرت سے (11) اور انہیں صلہ دیا اس کا جو انہوں نے صبر کیا بہشت اور ریشم کے کپڑوں کے ساتھ (12) جن میں وہ بیٹھیں تکیوں سے لگے ہوئے اونچی مسندوں پر نہ دیکھیں گے وہاں سورج کی گرمی اور نہ سردی کی ٹھٹھر (13) اور ان پر جھکی ہو گی وہاں کی چھاؤں اور وہاں کے پھلوں کا حاصل ہونا ان کے لئے آسان رکھا جائے گا (14) اور ان پر گردش کرائی جاتی ہو گی چاندی کے برتنوں کی (15) اور ان ساغروں کی جو شیشے کے ہوں گے جنہیں صحیح اندازے کے ساتھ ان کے سامنے لایا جائے گا (16) اور انہیں پلائے جائیں گے وہ جام جن میں آمیزش ہو گی سونٹھ کی (17) اس چشمے سے جو وہاں ہے جس کا نام سلسبیل ہے (18) اور ان کے سامنے گردش کر رہے ہوں گے وہ خدمت کرنے والے لڑکے جو ہمیشہ ایک ہی حال پر رہیں گے جب تم انہیں دیکھو گے سمجھو گے بکھرے ہوئے موتی (19) اور جب دیکھو گے تو اس موقع پر دیکھو گے منظر ایک بڑے عیش وآرام اور بڑے اقتدار کا (20) ان پر ہوں گے سبز باریک ریشم کے اور اطلس ودیبا کے اور انہیں پہنائے جائیں گے کنگن چاندی کے اور ان کا پروردگار انہیں پلائے گا پاک وپاکیزہ شراب (21) یقینا یہ تمہارا کچھ صلہ ہے اور تمہاری کوشش قدردانی کے قابل ہے (22) ہم ہی نے آپ پر یہ قرآن تدریجی طور پر وقتاً فوقتاً نازل کیا ہے (23) تو اپنے پروردگار کے حکم کی خاطر صبر کیجئے اور ان میں سے کسی بداعمال یا منکر ایمان کی بات نہ مانیئے (24) اور اپنے پروردگار کو یاد کیجئے صبح وشام (25) اور رات کے ایک حصہ میں بھی سجدہ کیجئے اور اس کی تسبیح کیجئے رات کے طویل حصے میں (26) یہ لوگ اس وقتی دور زندگی کو دوست رکھتے ہیں اور جو بھاری دن آگے آنے والا ہے اسے چھوڑے ہوئے ہیں (27) ہم نے انہیں پیدا کیا ہے اور ان کے اعضاء وجوارج کا مضبوط نظام بنایا ہے اور جب ہم چاہیں تو ان کی صورتوں کو پورے طور پر بدل دیں (28) یقینا اس میں ایک بڑی نصیحت ہے تو جو چاہے اپنے پروردگار کی طرف کاراستا اختیار کرے (29) اور تمہارا چاہنا کچھ نہیں جب تک کہ اللہ نہ چاہے یقینا اللہ جاننے والا ہے۔ صحیح صحیح کام کرنے والا (30) جسے چاہتا ہے اپنی رحمت میں داخل کرتا ہے اور جو ظالم ہیں ان کے لئے اس نے دردناک عذاب تیار رکھا ہے (31)

پچھلی سورت:
سورہ قیامہ
سورہ 76 اگلی سورت:
سورہ مرسلات
قرآن کریم

(1) سورہ فاتحہ (2) سورہ بقرہ (3) سورہ آل عمران (4) سورہ نساء (5) سورہ مائدہ (6) سورہ انعام (7) سورہ اعراف (8) سورہ انفال (9) سورہ توبہ (10) سورہ یونس (11) سورہ ہود (12) سورہ یوسف (13) سورہ رعد (14) سورہ ابراہیم (15) سورہ حجر (16) سورہ نحل (17) سورہ اسراء (18) سورہ کہف (19) سورہ مریم (20) سورہ طہ (21) سورہ انبیاء (22) سورہ حج (23) سورہ مؤمنون (24) سورہ نور (25) سورہ فرقان (26) سورہ شعراء (27) سورہ نمل (28) سورہ قصص (29) سورہ عنکبوت (30) سورہ روم (31) سورہ لقمان (32) سورہ سجدہ (33) سورہ احزاب (34) سورہ سباء (35) سورہ فاطر (36) سورہ یس (37) سورہ صافات (38) سورہ ص (39) سورہ زمر (40) سورہ غافر (41) سورہ فصلت (42) سورہ شوری (43) سورہ زخرف (44) سورہ دخان (45) سورہ جاثیہ (46) سورہ احقاف (47) سورہ محمد (48) سورہ فتح (49) سورہ حجرات (50) سورہ ق (51) سورہ ذاریات (52) سورہ طور (53) سورہ نجم (54) سورہ قمر (55) سورہ رحمن (56) سورہ واقعہ (57) سورہ حدید (58) سورہ مجادلہ (59) سورہ حشر (60) سورہ ممتحنہ (61) سورہ صف (62) سورہ جمعہ (63) سورہ منافقون (64) سورہ تغابن (65) سورہ طلاق (66) سورہ تحریم (67) سورہ ملک (68) سورہ قلم (69) سورہ حاقہ (70) سورہ معارج (71) سورہ نوح (72) سورہ جن (73) سورہ مزمل (74) سورہ مدثر (75) سورہ قیامہ (76) سورہ انسان (77) سورہ مرسلات (78) سورہ نباء (79) سورہ نازعات (80) سورہ عبس (81) سورہ تکویر (82) سورہ انفطار (83) سورہ مطففین (84) سورہ انشقاق (85) سورہ بروج (86) سورہ طارق (87) سورہ اعلی (88) سورہ غاشیہ (89) سورہ فجر (90) سورہ بلد (91) سورہ شمس (92) سورہ لیل (93) سورہ ضحی (94) سورہ شرح (95) سورہ تین (96) سورہ علق (97) سورہ قدر (98) سورہ بینہ (99) سورہ زلزال (100) سورہ عادیات (101) سورہ قارعہ (102) سورہ تکاثر (103) سورہ عصر (104) سورہ ہمزہ (105) سورہ فیل (106) سورہ قریش (107) سورہ ماعون (108) سورہ کوثر (109) سورہ کافرون (110) سورہ نصر (111) سورہ مسد (112) سورہ اخلاص (113) سورہ فلق (114) سورہ ناس


متعلقہ مآخذ

حوالہ جات

  1. خرمشاہی، انشنامہ قرآن و قرآن‌پژوہی، ۱۳۷۷ش، ج۲، ص۱۲۶۰.
  2. معرفت، آموزش علوم قرآن، ۱۳۷۱ش، ج۱، ص۱۶۸.
  3. خرمشاہی، انشنامہ قرآن و قرآن‌پژوہی، ۱۳۷۷ش، ج۲، ص۱۲۶۰.
  4. خرمشاہی، انشنامہ قرآن و قرآن‌پژوہی، ۱۳۷۷ش، ج۲، ص۱۲۶۰.
  5. "آج رات کربلا میں "چاند" سورج کو طعنہ دے رہا ہے" سایت خبری فردا، تاریخ بازدید ۲۱ شہریور ۱۳۹۵ش.
  6. مکارم شیرازی، تفسیر نمونہ، ۱۳۷۱ش، ج۲۵، ص۳۲۷.
  7. خامہ‌گر، محمد، ساختار سورہ‌ہای قرآن کریم، تہیہ مؤسسہ فرہنگی قرآن و عترت نورالثقلین، قم، نشر نشرا، چ۱، ۱۳۹۲ش.


مآخذ