سورہ عنکبوت

ویکی شیعہ سے
یہاں جائیں: رہنمائی، تلاش کریں
قصص سورۂ عنکبوت روم
سوره عنکبوت.jpg
ترتیب کتابت: 29
پارہ : 20 و 21
نزول
ترتیب نزول: 85
مکی/ مدنی: مکی
اعداد و شمار
آیات: 69
الفاظ: 983
حروف: 4321

سوره عنکبوت [سُوْرَةُ الْعَنكَبُوتِ] کفار اور جھٹلانے والوں کے حالات اور انجام کو بیان کرتی ہے اور کہتی ہے کہ جو لوگ خدا کے سوا دوسروں کو اپنے لئے آقا قرار دیتے ہیں ان کی حالت مکڑی جیسی ہے جو ایک گھر بنالیتی ہے حالانکہ اگر وہ جانتے تو حقیقت یہ ہے کہ کمزور ترین گھر، مکڑی کا گھر ہے۔ یہ حروف مقطعہ سے شروع ہونے والی سورتوں میں پندرہویں نمبر پر ہے۔

سورہ عنکبوت

اس سورت کو اس لئے "سورہ عنکبوت" کا نام دیا گیا ہے کیونکہ اس کے ضمن میں اور ایک تمثیل کے سانچے میں اس جانور کا نام لیا گیا ہے (آیت 41)۔ لفظ "عنکبوت" قرآن کی اسی سورت میں دو بار استعمال ہوا ہے۔ یہ حروف مقطعہ [=الم:الف.لام.میم] سے شروع ہونے والی سورتوں میں پندرہویں نمبر پر ہے۔ مصحف کے اعتبار سے انتیسویں اور ترتیب نزول کے لحاظ سے پچاسی ویں سورت ہے؛ مکی ہے۔ اس سورت کی آیات کی تعداد اتفاق رائے سے 69، الفاظ کی تعداد 989 اور حروف کی تعداد 4321 ہے۔ یہ حجم و کیفیت کے لحاظ سے سور مثانی کے زمرے میں آتی ہے اور ایک چوتھائی پارے (ایک حزب) کا احاطہ کئے ہوئے ہے۔[1]

مفاہیم

سوره عنکبوت کفار اور جھٹلانے والوں کے حالات اور انجام کو بیان کرتی ہے اور کہتی ہے کہ جو لوگ خدا کے سوا دوسروں کو اپنے لئے آقا قرار دیتے ہیں ان کی حالت مکڑی کی سی ہے ہے جو ایک گھر بنالیتی ہے خدا کے لئے شریک قرار دینے والوں کی حالت مکڑی جیسی ہے جو گھر بنتا ہے حالانکہ اگر وہ جانتے تو حقیقت یہ ہے کہ کمزور ترین گھر، مکڑی کا گھر ہے۔ یہ حروف مقطعہ سے شروع ہونے والی سورتوں میں پندرہویں نمبر پر ہے۔ اور اگر وہ جانتے تو مکڑی کا گھر کمزور ترین اور سست ترین گھر ہے۔ اس سورت کے ایک حصے میں ایمان اور اس (ایمان) کی راہ میں پیش آنے والی آزمایشوں میں صبر کی طرف اشارہ کیا گیا ہے اور اس کو "آزمایشوں پر صبر" کا عنوان دیا جاتا ہے۔ نیز نوح، ابراہیم، لوط، شعیب، صالح اور ہود ـ علیہم السلام ـ کی داستانوں کی طرف اشارہ نیز قارون، ہامان اور فرعون کا تذکرہ ہوا ہے اور آخر میں بشارت دی گئی ہے کہ خداوند متعال نیک عمل اور صالح لوگوں کے ساتھ ہے اور جو لوگ اس کی راہ میں جدوجہد کرتے ہیں خداوند متعال انہیں اپنی راہوں پر لگا لیتا ہے۔[2]

متن سورہ

سورہ عنکبوت مدنیہ ـ نمبر 29 - آیات 69 - ترتیب نزول 85
بِسْمِ اللّهِ الرَّحْمَنِ الرَّحِيمِ

الم ﴿1﴾ أَحَسِبَ النَّاسُ أَن يُتْرَكُوا أَن يَقُولُوا آمَنَّا وَهُمْ لَا يُفْتَنُونَ ﴿2﴾ وَلَقَدْ فَتَنَّا الَّذِينَ مِن قَبْلِهِمْ فَلَيَعْلَمَنَّ اللَّهُ الَّذِينَ صَدَقُوا وَلَيَعْلَمَنَّ الْكَاذِبِينَ ﴿3﴾ أَمْ حَسِبَ الَّذِينَ يَعْمَلُونَ السَّيِّئَاتِ أَن يَسْبِقُونَا سَاء مَا يَحْكُمُونَ ﴿4﴾ مَن كَانَ يَرْجُو لِقَاء اللَّهِ فَإِنَّ أَجَلَ اللَّهِ لَآتٍ وَهُوَ السَّمِيعُ الْعَلِيمُ ﴿5﴾ وَمَن جَاهَدَ فَإِنَّمَا يُجَاهِدُ لِنَفْسِهِ إِنَّ اللَّهَ لَغَنِيٌّ عَنِ الْعَالَمِينَ ﴿6﴾ وَالَّذِينَ آمَنُوا وَعَمِلُوا الصَّالِحَاتِ لَنُكَفِّرَنَّ عَنْهُمْ سَيِّئَاتِهِمْ وَلَنَجْزِيَنَّهُمْ أَحْسَنَ الَّذِي كَانُوا يَعْمَلُونَ ﴿7﴾ وَوَصَّيْنَا الْإِنسَانَ بِوَالِدَيْهِ حُسْنًا وَإِن جَاهَدَاكَ لِتُشْرِكَ بِي مَا لَيْسَ لَكَ بِهِ عِلْمٌ فَلَا تُطِعْهُمَا إِلَيَّ مَرْجِعُكُمْ فَأُنَبِّئُكُم بِمَا كُنتُمْ تَعْمَلُونَ ﴿8﴾ وَالَّذِينَ آمَنُوا وَعَمِلُوا الصَّالِحَاتِ لَنُدْخِلَنَّهُمْ فِي الصَّالِحِينَ ﴿9﴾ وَمِنَ النَّاسِ مَن يَقُولُ آمَنَّا بِاللَّهِ فَإِذَا أُوذِيَ فِي اللَّهِ جَعَلَ فِتْنَةَ النَّاسِ كَعَذَابِ اللَّهِ وَلَئِن جَاء نَصْرٌ مِّن رَّبِّكَ لَيَقُولُنَّ إِنَّا كُنَّا مَعَكُمْ أَوَلَيْسَ اللَّهُ بِأَعْلَمَ بِمَا فِي صُدُورِ الْعَالَمِينَ ﴿10﴾ وَلَيَعْلَمَنَّ اللَّهُ الَّذِينَ آمَنُوا وَلَيَعْلَمَنَّ الْمُنَافِقِينَ ﴿11﴾ وَقَالَ الَّذِينَ كَفَرُوا لِلَّذِينَ آمَنُوا اتَّبِعُوا سَبِيلَنَا وَلْنَحْمِلْ خَطَايَاكُمْ وَمَا هُم بِحَامِلِينَ مِنْ خَطَايَاهُم مِّن شَيْءٍ إِنَّهُمْ لَكَاذِبُونَ ﴿12﴾ وَلَيَحْمِلُنَّ أَثْقَالَهُمْ وَأَثْقَالًا مَّعَ أَثْقَالِهِمْ وَلَيُسْأَلُنَّ يَوْمَ الْقِيَامَةِ عَمَّا كَانُوا يَفْتَرُونَ ﴿13﴾ وَلَقَدْ أَرْسَلْنَا نُوحًا إِلَى قَوْمِهِ فَلَبِثَ فِيهِمْ أَلْفَ سَنَةٍ إِلَّا خَمْسِينَ عَامًا فَأَخَذَهُمُ الطُّوفَانُ وَهُمْ ظَالِمُونَ ﴿14﴾ فَأَنجَيْنَاهُ وَأَصْحَابَ السَّفِينَةِ وَجَعَلْنَاهَا آيَةً لِّلْعَالَمِينَ ﴿15﴾ وَإِبْرَاهِيمَ إِذْ قَالَ لِقَوْمِهِ اعْبُدُوا اللَّهَ وَاتَّقُوهُ ذَلِكُمْ خَيْرٌ لَّكُمْ إِن كُنتُمْ تَعْلَمُونَ ﴿16﴾ إِنَّمَا تَعْبُدُونَ مِن دُونِ اللَّهِ أَوْثَانًا وَتَخْلُقُونَ إِفْكًا إِنَّ الَّذِينَ تَعْبُدُونَ مِن دُونِ اللَّهِ لَا يَمْلِكُونَ لَكُمْ رِزْقًا فَابْتَغُوا عِندَ اللَّهِ الرِّزْقَ وَاعْبُدُوهُ وَاشْكُرُوا لَهُ إِلَيْهِ تُرْجَعُونَ ﴿17﴾ وَإِن تُكَذِّبُوا فَقَدْ كَذَّبَ أُمَمٌ مِّن قَبْلِكُمْ وَمَا عَلَى الرَّسُولِ إِلَّا الْبَلَاغُ الْمُبِينُ ﴿18﴾ أَوَلَمْ يَرَوْا كَيْفَ يُبْدِئُ اللَّهُ الْخَلْقَ ثُمَّ يُعِيدُهُ إِنَّ ذَلِكَ عَلَى اللَّهِ يَسِيرٌ ﴿19﴾ قُلْ سِيرُوا فِي الْأَرْضِ فَانظُرُوا كَيْفَ بَدَأَ الْخَلْقَ ثُمَّ اللَّهُ يُنشِئُ النَّشْأَةَ الْآخِرَةَ إِنَّ اللَّهَ عَلَى كُلِّ شَيْءٍ قَدِيرٌ ﴿20﴾ يُعَذِّبُُ مَن يَشَاء وَيَرْحَمُ مَن يَشَاء وَإِلَيْهِ تُقْلَبُونَ ﴿21﴾ وَمَا أَنتُم بِمُعْجِزِينَ فِي الْأَرْضِ وَلَا فِي السَّمَاء وَمَا لَكُم مِّن دُونِ اللَّهِ مِن وَلِيٍّ وَلَا نَصِيرٍ ﴿22﴾ وَالَّذِينَ كَفَرُوا بِآيَاتِ اللَّهِ وَلِقَائِهِ أُوْلَئِكَ يَئِسُوا مِن رَّحْمَتِي وَأُوْلَئِكَ لَهُمْ عَذَابٌ أَلِيمٌ ﴿23﴾ فَمَا كَانَ جَوَابَ قَوْمِهِ إِلَّا أَن قَالُوا اقْتُلُوهُ أَوْ حَرِّقُوهُ فَأَنجَاهُ اللَّهُ مِنَ النَّارِ إِنَّ فِي ذَلِكَ لَآيَاتٍ لِّقَوْمٍ يُؤْمِنُونَ ﴿24﴾ وَقَالَ إِنَّمَا اتَّخَذْتُم مِّن دُونِ اللَّهِ أَوْثَانًا مَّوَدَّةَ بَيْنِكُمْ فِي الْحَيَاةِ الدُّنْيَا ثُمَّ يَوْمَ الْقِيَامَةِ يَكْفُرُ بَعْضُكُم بِبَعْضٍ وَيَلْعَنُ بَعْضُكُم بَعْضًا وَمَأْوَاكُمُ النَّارُ وَمَا لَكُم مِّن نَّاصِرِينَ ﴿25﴾ فَآمَنَ لَهُ لُوطٌ وَقَالَ إِنِّي مُهَاجِرٌ إِلَى رَبِّي إِنَّهُ هُوَ الْعَزِيزُ الْحَكِيمُ ﴿26﴾ وَوَهَبْنَا لَهُ إِسْحَقَ وَيَعْقُوبَ وَجَعَلْنَا فِي ذُرِّيَّتِهِ النُّبُوَّةَ وَالْكِتَابَ وَآتَيْنَاهُ أَجْرَهُ فِي الدُّنْيَا وَإِنَّهُ فِي الْآخِرَةِ لَمِنَ الصَّالِحِينَ ﴿27﴾ وَلُوطًا إِذْ قَالَ لِقَوْمِهِ إِنَّكُمْ لَتَأْتُونَ الْفَاحِشَةَ مَا سَبَقَكُم بِهَا مِنْ أَحَدٍ مِّنَ الْعَالَمِينَ ﴿28﴾ أَئِنَّكُمْ لَتَأْتُونَ الرِّجَالَ وَتَقْطَعُونَ السَّبِيلَ وَتَأْتُونَ فِي نَادِيكُمُ الْمُنكَرَ فَمَا كَانَ جَوَابَ قَوْمِهِ إِلَّا أَن قَالُوا ائْتِنَا بِعَذَابِ اللَّهِ إِن كُنتَ مِنَ الصَّادِقِينَ ﴿29﴾ قَالَ رَبِّ انصُرْنِي عَلَى الْقَوْمِ الْمُفْسِدِينَ ﴿30﴾ وَلَمَّا جَاءتْ رُسُلُنَا إِبْرَاهِيمَ بِالْبُشْرَى قَالُوا إِنَّا مُهْلِكُو أَهْلِ هَذِهِ الْقَرْيَةِ إِنَّ أَهْلَهَا كَانُوا ظَالِمِينَ ﴿31﴾ قَالَ إِنَّ فِيهَا لُوطًا قَالُوا نَحْنُ أَعْلَمُ بِمَن فِيهَا لَنُنَجِّيَنَّهُ وَأَهْلَهُ إِلَّا امْرَأَتَهُ كَانَتْ مِنَ الْغَابِرِينَ ﴿32﴾ وَلَمَّا أَن جَاءتْ رُسُلُنَا لُوطًا سِيءَ بِهِمْ وَضَاقَ بِهِمْ ذَرْعًا وَقَالُوا لَا تَخَفْ وَلَا تَحْزَنْ إِنَّا مُنَجُّوكَ وَأَهْلَكَ إِلَّا امْرَأَتَكَ كَانَتْ مِنَ الْغَابِرِينَ ﴿33﴾ إِنَّا مُنزِلُونَ عَلَى أَهْلِ هَذِهِ الْقَرْيَةِ رِجْزًا مِّنَ السَّمَاء بِمَا كَانُوا يَفْسُقُونَ ﴿34﴾ وَلَقَد تَّرَكْنَا مِنْهَا آيَةً بَيِّنَةً لِّقَوْمٍ يَعْقِلُونَ ﴿35﴾ وَإِلَى مَدْيَنَ أَخَاهُمْ شُعَيْبًا فَقَالَ يَا قَوْمِ اعْبُدُوا اللَّهَ وَارْجُوا الْيَوْمَ الْآخِرَ وَلَا تَعْثَوْا فِي الْأَرْضِ مُفْسِدِينَ ﴿36﴾ فَكَذَّبُوهُ فَأَخَذَتْهُمُ الرَّجْفَةُ فَأَصْبَحُوا فِي دَارِهِمْ جَاثِمِينَ ﴿37﴾ وَعَادًا وَثَمُودَ وَقَد تَّبَيَّنَ لَكُم مِّن مَّسَاكِنِهِمْ وَزَيَّنَ لَهُمُ الشَّيْطَانُ أَعْمَالَهُمْ فَصَدَّهُمْ عَنِ السَّبِيلِ وَكَانُوا مُسْتَبْصِرِينَ ﴿38﴾ وَقَارُونَ وَفِرْعَوْنَ وَهَامَانَ وَلَقَدْ جَاءهُم مُّوسَى بِالْبَيِّنَاتِ فَاسْتَكْبَرُوا فِي الْأَرْضِ وَمَا كَانُوا سَابِقِينَ ﴿39﴾ فَكُلًّا أَخَذْنَا بِذَنبِهِ فَمِنْهُم مَّنْ أَرْسَلْنَا عَلَيْهِ حَاصِبًا وَمِنْهُم مَّنْ أَخَذَتْهُ الصَّيْحَةُ وَمِنْهُم مَّنْ خَسَفْنَا بِهِ الْأَرْضَ وَمِنْهُم مَّنْ أَغْرَقْنَا وَمَا كَانَ اللَّهُ لِيَظْلِمَهُمْ وَلَكِن كَانُوا أَنفُسَهُمْ يَظْلِمُونَ ﴿40﴾ مَثَلُ الَّذِينَ اتَّخَذُوا مِن دُونِ اللَّهِ أَوْلِيَاء كَمَثَلِ الْعَنكَبُوتِ اتَّخَذَتْ بَيْتًا وَإِنَّ أَوْهَنَ الْبُيُوتِ لَبَيْتُ الْعَنكَبُوتِ لَوْ كَانُوا يَعْلَمُونَ ﴿41﴾ إِنَّ اللَّهَ يَعْلَمُ مَا يَدْعُونَ مِن دُونِهِ مِن شَيْءٍ وَهُوَ الْعَزِيزُ الْحَكِيمُ ﴿42﴾ وَتِلْكَ الْأَمْثَالُ نَضْرِبُهَا لِلنَّاسِ وَمَا يَعْقِلُهَا إِلَّا الْعَالِمُونَ ﴿43﴾ خَلَقَ اللَّهُ السَّمَاوَاتِ وَالْأَرْضَ بِالْحَقِّ إِنَّ فِي ذَلِكَ لَآيَةً لِّلْمُؤْمِنِينَ ﴿44﴾ اتْلُ مَا أُوحِيَ إِلَيْكَ مِنَ الْكِتَابِ وَأَقِمِ الصَّلَاةَ إِنَّ الصَّلَاةَ تَنْهَى عَنِ الْفَحْشَاء وَالْمُنكَرِ وَلَذِكْرُ اللَّهِ أَكْبَرُ وَاللَّهُ يَعْلَمُ مَا تَصْنَعُونَ ﴿45﴾ وَلَا تُجَادِلُوا أَهْلَ الْكِتَابِ إِلَّا بِالَّتِي هِيَ أَحْسَنُ إِلَّا الَّذِينَ ظَلَمُوا مِنْهُمْ وَقُولُوا آمَنَّا بِالَّذِي أُنزِلَ إِلَيْنَا وَأُنزِلَ إِلَيْكُمْ وَإِلَهُنَا وَإِلَهُكُمْ وَاحِدٌ وَنَحْنُ لَهُ مُسْلِمُونَ ﴿46﴾ وَكَذَلِكَ أَنزَلْنَا إِلَيْكَ الْكِتَابَ فَالَّذِينَ آتَيْنَاهُمُ الْكِتَابَ يُؤْمِنُونَ بِهِ وَمِنْ هَؤُلَاء مَن يُؤْمِنُ بِهِ وَمَا يَجْحَدُ بِآيَاتِنَا إِلَّا الْكَافِرُونَ ﴿47﴾ وَمَا كُنتَ تَتْلُو مِن قَبْلِهِ مِن كِتَابٍ وَلَا تَخُطُّهُ بِيَمِينِكَ إِذًا لَّارْتَابَ الْمُبْطِلُونَ ﴿48﴾ بَلْ هُوَ آيَاتٌ بَيِّنَاتٌ فِي صُدُورِ الَّذِينَ أُوتُوا الْعِلْمَ وَمَا يَجْحَدُ بِآيَاتِنَا إِلَّا الظَّالِمُونَ ﴿49﴾ وَقَالُوا لَوْلَا أُنزِلَ عَلَيْهِ آيَاتٌ مِّن رَّبِّهِ قُلْ إِنَّمَا الْآيَاتُ عِندَ اللَّهِ وَإِنَّمَا أَنَا نَذِيرٌ مُّبِينٌ ﴿50﴾ أَوَلَمْ يَكْفِهِمْ أَنَّا أَنزَلْنَا عَلَيْكَ الْكِتَابَ يُتْلَى عَلَيْهِمْ إِنَّ فِي ذَلِكَ لَرَحْمَةً وَذِكْرَى لِقَوْمٍ يُؤْمِنُونَ ﴿51﴾ قُلْ كَفَى بِاللَّهِ بَيْنِي وَبَيْنَكُمْ شَهِيدًا يَعْلَمُ مَا فِي السَّمَاوَاتِ وَالْأَرْضِ وَالَّذِينَ آمَنُوا بِالْبَاطِلِ وَكَفَرُوا بِاللَّهِ أُوْلَئِكَ هُمُ الْخَاسِرُونَ ﴿52﴾ وَيَسْتَعْجِلُونَكَ بِالْعَذَابِ وَلَوْلَا أَجَلٌ مُّسَمًّى لَجَاءهُمُ الْعَذَابُ وَلَيَأْتِيَنَّهُم بَغْتَةً وَهُمْ لَا يَشْعُرُونَ ﴿53﴾ يَسْتَعْجِلُونَكَ بِالْعَذَابِ وَإِنَّ جَهَنَّمَ لَمُحِيطَةٌ بِالْكَافِرِينَ ﴿54﴾ يَوْمَ يَغْشَاهُمُ الْعَذَابُ مِن فَوْقِهِمْ وَمِن تَحْتِ أَرْجُلِهِمْ وَيَقُولُ ذُوقُوا مَا كُنتُمْ تَعْمَلُونَ ﴿55﴾ يَا عِبَادِيَ الَّذِينَ آمَنُوا إِنَّ أَرْضِي وَاسِعَةٌ فَإِيَّايَ فَاعْبُدُونِ ﴿56﴾ كُلُّ نَفْسٍ ذَائِقَةُ الْمَوْتِ ثُمَّ إِلَيْنَا تُرْجَعُونَ ﴿57﴾ وَالَّذِينَ آمَنُوا وَعَمِلُوا الصَّالِحَاتِ لَنُبَوِّئَنَّهُم مِّنَ الْجَنَّةِ غُرَفًا تَجْرِي مِن تَحْتِهَا الْأَنْهَارُ خَالِدِينَ فِيهَا نِعْمَ أَجْرُ الْعَامِلِينَ ﴿58﴾ الَّذِينَ صَبَرُوا وَعَلَى رَبِّهِمْ يَتَوَكَّلُونَ ﴿59﴾ وَكَأَيِّن مِن دَابَّةٍ لَا تَحْمِلُ رِزْقَهَا اللَّهُ يَرْزُقُهَا وَإِيَّاكُمْ وَهُوَ السَّمِيعُ الْعَلِيمُ ﴿60﴾ وَلَئِن سَأَلْتَهُم مَّنْ خَلَقَ السَّمَاوَاتِ وَالْأَرْضَ وَسَخَّرَ الشَّمْسَ وَالْقَمَرَ لَيَقُولُنَّ اللَّهُ فَأَنَّى يُؤْفَكُونَ ﴿61﴾ اللَّهُ يَبْسُطُ الرِّزْقَ لِمَن يَشَاء مِنْ عِبَادِهِ وَيَقْدِرُ لَهُ إِنَّ اللَّهَ بِكُلِّ شَيْءٍ عَلِيمٌ ﴿62﴾ وَلَئِن سَأَلْتَهُم مَّن نَّزَّلَ مِنَ السَّمَاء مَاء فَأَحْيَا بِهِ الْأَرْضَ مِن بَعْدِ مَوْتِهَا لَيَقُولُنَّ اللَّهُ قُلِ الْحَمْدُ لِلَّهِ بَلْ أَكْثَرُهُمْ لَا يَعْقِلُونَ ﴿63﴾ وَمَا هَذِهِ الْحَيَاةُ الدُّنْيَا إِلَّا لَهْوٌ وَلَعِبٌ وَإِنَّ الدَّارَ الْآخِرَةَ لَهِيَ الْحَيَوَانُ لَوْ كَانُوا يَعْلَمُونَ ﴿64﴾ فَإِذَا رَكِبُوا فِي الْفُلْكِ دَعَوُا اللَّهَ مُخْلِصِينَ لَهُ الدِّينَ فَلَمَّا نَجَّاهُمْ إِلَى الْبَرِّ إِذَا هُمْ يُشْرِكُونَ ﴿65﴾ لِيَكْفُرُوا بِمَا آتَيْنَاهُمْ وَلِيَتَمَتَّعُوا فَسَوْفَ يَعْلَمُونَ ﴿66﴾ أَوَلَمْ يَرَوْا أَنَّا جَعَلْنَا حَرَمًا آمِنًا وَيُتَخَطَّفُ النَّاسُ مِنْ حَوْلِهِمْ أَفَبِالْبَاطِلِ يُؤْمِنُونَ وَبِنِعْمَةِ اللَّهِ يَكْفُرُونَ ﴿67﴾ وَمَنْ أَظْلَمُ مِمَّنِ افْتَرَى عَلَى اللَّهِ كَذِبًا أَوْ كَذَّبَ بِالْحَقِّ لَمَّا جَاءهُ أَلَيْسَ فِي جَهَنَّمَ مَثْوًى لِّلْكَافِرِينَ ﴿68﴾ وَالَّذِينَ جَاهَدُوا فِينَا لَنَهْدِيَنَّهُمْ سُبُلَنَا وَإِنَّ اللَّهَ لَمَعَ الْمُحْسِنِينَ ﴿69﴾

قرآن کریم


ترجمہ
اللہ کے نام سے جو بہت رحم والا نہایت مہربان ہے

الف۔ لام۔ میم (1) کیا لوگ یہ سمجھ رہے ہیں کہ وہ چھوڑ دیئے جائیں گے بس اتنا کہنے پر کہ ہم ایمان لائے اور ان کی آزمائش نہیں ہوگی؟ (2) حالاں کہ ہم نے آزمائش میں ڈالا انہیں جو ان کے پہلے تھے تو اب بھی اللہ ضرور معلوم کرے گا انہیں جو سچے ہیں اور معلوم کرے گا جھوٹوں سے (3)کیا سمجھے ہوئے ہیں وہ جو برے کام کرتے ہیں کہ وہ ہمارے قابو سے نکل جائیں گے! کتنا برا ہے وہ حکم جو وہ لگاتے ہیں (4)جو امید رکھتا ہے اللہ سے ملنے کی تو بلاشبہ اللہ کی مقرر کردہ میعاد آنے ہی والی ہے اور وہ سننے والا ہے، بڑا جاننے والا (5)اور جو جدوجہد میں مقابلہ کرتا ہے، وہ مقابلہ کرتا ہے اپنے لیے، بلاشبہ اللہ تمام جہانوں سے بے نیاز ہے (6) اور جو ایمان لائے اور نیک کام کرتے رہے تو ہم یقینا ان کی غلطیوں کو نظرانداز کریں گے اور انہیں بدلہ دیں گے بہترین اس معیار پر جو ان کے اعمال کا تھا (7) اور ہم نے انسانوں کو ہدایت کی وہ اپنے ماں باپ کے ساتھ بھلائی کرے اور اگر وہ دونوں تم سے اس بات پر لڑائی جھگڑا کریں کہ تم میرے ساتھ اسے شریک کرو جس کے لیے تمہارے پاس کوئی علم نہیں ہے تو پھر ان کا کہا نہ مانو۔ میری ہی طرف تم سب کو پلٹنا ہے تو میں تمہیں بتاؤں گا جو کچھ تم کرتے تھے (8)اور جو ایمان لائے اور نیک اعمال کرتے رہے، ضرور ہم انہیں نیکو کاروں میں داخل کریں گے (9) اور انسانوں میں بعض ایسے ہیں جو کہتے ہیں کہ ہم اللہ پر ایمان لائے، اس کے بعد جب اللہ کی راہ میں اسے ایذا پہنچائی جاتی ہے تو وہ آدمیوں کی آزمائش کو اللہ کے عذاب کے مثل سمجھ لیتا ہے اور اگر تمہارے پروردگار کی طرف سے مدد آئے تو وہ کہتے ہیں کہ ہم تو تمہارے ساتھ تھے۔ کیا اللہ خوب واقف نہیں ہے اس سے جو تمام دنیا والوں کے دلوں میں ہو (10) اور ضرور اللہ جانے گا انہیں کہ جو ایمان رکھتے ہیں اور ضرور جانے گا منافقوں کو (11) اور کہا انہوں نے جو کافر ہیں ان سے کہ جو ایمان لائے ہیں کہ ہمارے مسلک کی پیروی کرو اور ہم تمہارے گناہوں کو اپنے اوپر اٹھا لیں۔ حالاں کہ وہ ان کے گناہوں کو کچھ بھی اٹھانے والے نہیں، یقینا وہ جھوٹے ہیں (12) اور بلاشبہ وہ اٹھائیں گے اپنے بوجھوں کو اور اپنے بوجھوں کے ساتھ کچھ اور بوجھ اور ان سے باز پرس ہوگی قیامت کے دن اسکی جو وہ غلط باتیں گھڑتے تھے (13) اور ہم نے نوح کو بھیجا ان کی قوم کی طرف تو وہ ان میں پچاس کم ایک ہزار برس رہے پھر اس قوم کو طوفان نے اپنی گرفت میں لے لیا درانحالیکہ وہ ظالم و گنہگار تھے (14) تو ہم نے انہیں اور کشتی والوں کو نجات دی اور اسے نشانی قرار دیا تمام جہانوں کے لیے (15) اور (ہم نے بھیجا) ابراہیم کو جب انہوں نے اپنی قوم سے کہا کہ اللہ کی عبادت کرو اور اس کے غضب سے بچو، یہ تمہارے لیے بہتر ہے اگر تم جانو (16) تم اسے چھوڑ کر جن کی عبادت کرتے ہو، وہ کچھ بہت ہی توہین اور جھوٹ بناتے ہو، یقینا یہ جن کی تم اللہ کو چھوڑ کر عبادت کرتے ہو، تمہاری روزی پر قدرت نہیں رکھتے تو اللہ سے رزق کے طلب گار رہو اور اسکی عبادت کرو اور اس کے شکر گزار رہو۔ اسی کی طرف تو تمہیں پلٹ کر جانا ہے (17) اور اگر تم جھٹلاؤ تو تمہارے پہلے بہت سی قوموں نے جھٹلایا اور نہیں ہے پیغمبر کے ذمے مگر کھلی ہوئی تبلیغ (18) کیا انہوں نے نہیں دیکھا کہ کس طرح اللہ پہلی وفعہ مخلوق کو پیدا کرتا ہے، پھر اسے دوبارہ پلٹاتا ہے بلاشبہ یہ اللہ پر آسان ہے (19) کہیے کہ چلو پھرو دنیا میں تو دیکھو کہ کس طرح اللہ نے مخلوق کو پہلی دفعہ پیدا کیا گیا، پھر اللہ آخرت کی زندگی دیتا ہے، بلاشبہ اللہ ہر چیز پر قادر ہے (20) وہ جسے چاہتا ہے سزا دیتا ہے اور جس پر چاہتا ہے رحم کرتا ہے اور اسی کی طرف تمہیں پلٹ کر جانا ہے (21) اور تم زمین میں اور نہ آسمان میں اس کے قابو سے باہر نہیں ہو سکتے اور اللہ کو چھوڑ کر تمہارا نہ کوئی دوست ہے اور نہ کوئی مددگار (22) اور جنہوں نے اللہ کی نشانیوں اور اس کی بارگاہ میں حاضری کا انکار کیا، یہ وہ ہیں جو میری رحمت سے ناامید ہو گئے اور ان کے لیے درد ناک عذاب ہے (23) تو نہیں تھا ان کی قوم کی طرف سے کوئی جواب سوا اس کے کہ انہوں نے کہا انہیں قتل کر دویا انہیں آگ میں جلا دو تو اللہ نے انہیں آگ سے نجات دی یقینا اس میں نشانیاں ہیں ان کے لیے جو ایمان لائیں (24) اور انہوں نے کہا کہ تم نے اللہ کو چھوڑ کر اختیار کیا ہے بس کچھ بتوں کو آپس کی محبت کی وجہ سے اس دینوی زندگی میں پھر قیامت کے دن تم میں سے ایک دوسرے کا انکار کرے گا اور ایک دوسرے پر لعنت کرے گا اور تمہارا ٹھکانا آگ میں ہو گا اور تمہارے کوئی مددگار نہ ہوں گے (25) اور ان کی بات کو مانا لوط نے اور انہوں نے کہا میں اپنے پروردگار کی طرف ہجرت کرنے کے لیے تیار ہوں۔ یقینا وہ عزت والا ہے، حکمت والا (26) اور ہم نے انہیں عطا کیے اسحاق اور یعقوب اور ان کی نسل میں نبوت اور کتاب قرار دی اور ہم نے ان کا صلہ دنیا میں بھی عطا کیا او ر بلاشبہ وہ آخرت میں نیکو کاروں میں تھے (27) اور لوط کو جب انہوں نے کہا اپنی قوم سے کہ تم لوگ ایک ایسی سیاہ کاری میں مبتلا ہو جس میں تم سے پہلے دنیا کی کوئی قوم مبتلا نہیں ہوئی (28) ارے تم مردوں سے نفسانی خواہش پوری کرتے ہو اور راہ زنی کرتے ہو اور اپنے مجمع میں بدکار کا ارتکاب کرتے ہو تو ان کی قوم والوں کے پاس کوئی جواب نہ تھا سوا اس کے کہ انہوں نے کہا لاؤ ہم پر اللہ کا عذاب اگر تم سچے ہو (29) انہوں نے کہا پروردگار! میری مدد کر اس تباہ کار جماعت کے مقابلے میں (30) اور جب ہمارے بھیجے ہوئے (فرشتے) ابراہیم کے پاس آئے خوش خبری لے کر تو انہوں نے (یہ بھی) کہا کہ ہم اس بستی والوں کو ہلاک کرنے والے ہیں۔ بلاشبہ اس کے باشندے ظالم و گنہگار ہیں (31) انہوں نے کہا کہ اس میں تو لوط بھی ہیں انہوں نے کہا کہ ہم خوب جانتے ہیں کہ اس میں کون کون ہے؟ ہم انہیں اور ان کے گھرانے کو نجات دیں گے مگر ان کی زوجہ، وہ رہ جانے والوں میں ہوگی (32) اور جب ہمارے بھیجے ہوئے لوط کے پاس آئے تو انہیں ان کی وجہ سے رنج ہوا اور وہ الجھن میں مبتلا ہو گئے اور ان لوگوں (فرستارگان الٰہی) نے کہا ڈرو نہیں اور رنجیدہ نہ ہو۔ ہم تمہیں اور تمہارے گھرانے کو نجات دینے والے ہیں مگر تمہاری بیوی رہ جانے والوں میں ہے (33) ہم اس بستی کے رہنے والوں پر آسمان سے عذاب اتاریں گے، اس لیے کہ وہ بدکاری کرتے رہے ہیں (34) اور ہم نے اس کی ایک کھلی ہوئی نشانی چھوڑی ان کے لیے جو عقل سے کام لیں (35) اور مدین والوں کی طرف ان کے بھائی شعیب کو تو انہوں نے کہا اے میری قوم والو! عبادت کرو اللہ کی اور روز آخرت کی امید رکھو اور دنیا میں خرابیاں پھیلاتے نہ پھرو (36) تو ان لوگوں نے انہیں جھٹلایا تو انہیں زلزلے نے اپنی گرفت میں لے لیا اور وہ اپنے گھروں میں مردہ ہو کر رہ گئے (37) اور (اسی طرح ہلاک کیا ہم نے) عاد اور ثمود کو اور یہ تمہارے لیے ان کی سکونت کے مقامات سے نمایاں ہے اور شیطان نے ان کے کاموں کو بنا سنوار کر ان کے سامنے پیش کیا تھا اور انہیں سیدھے راستے سے روک دیا حالاں کہ وہ آنکھیں رکھتے تھے (38) اور قارون، فرعون اور ہامان کو اور ان کے پاس آئے موسیٰ کھلی ہوئی دلیلیں لے کر تو انہوں نے تکبر سے کام لیا اور وہ بچ کے جانے والوں میں نہ تھے (39) تو ہر ایک کو ہم نے اس کے گناہوں کی پاداش میں پکڑا تو ان میں کوئی وہ ہے جس پر ہم نے تیز آندھی بھیجی اور ان میں کوئی وہ ہے جس کا ایک مہیب آواز نے کام تمام کیا اور ان میں کسی کو ہم نے زمین میں غرق کر دیا اور کسی کو ہم نے پانی میں ڈبو دیا اور اللہ ایسا نہیں کہ ان پر ظلم کرے مگر وہ خود اپنے اوپر ظلم کرتے تھے (40) مثال ان لوگوں کی جنہوں نے اللہ کو چھوڑ کر حوالی موالی مقرر کیے ہیں، مکڑی کی سی ہے جس نے ایک مکان تیار کیا اور یقینا تمام مکانوں میں سب سے زیادہ کمزور مکڑی کا بنایا ہوا مکان ہوتا ہے، کاش وہ جانیں (41) بلاشبہ اللہ جانتا ہے اسے جو اسے چھوڑ کر کسی کو بھی معبود بناتے ہیں اور وہ عزت والا ہے، بڑی سوجھ بوجھ والا (42) یہ باتیں ہیں جنہیں ہم لوگوں کے سامنے پیش کرتے ہیں اور سوا صاحبان علم کے انہیں کوئی سمجھتا نہیں (43) اللہ نے آسمان اور زمین کو پیدا کیا حق کے ساتھ۔ یقینا اس میں نشانی ہے ایمان لانے والوں کے لیے (44) پڑھ کر سنایئے یہ کتاب جو آپ پر وحی کے ذریعہ بھیجی گئی ہے بلاشبہ نماز بدکاری اور برائی سے روکتی ہے اور بلاشبہ اللہ کو یاد رکھنا بڑی سے بڑی چیز ہے اور اللہ جانتا ہے اسے جو تم لوگ کرتے ہو (45) اور بحث نہ کرو اہل کتاب سے مگر ایسے طریقے، پر جو بہتر سے بہتر ہو سوا ان کے جو ان میں سے ظالم ہوں اور کہو کہ ہم ایمان لائے ہیں اس پر جو ہماری طرف نازل کیا گیا اور تمہاری طرف نازل کیا گیا اور ہمارا خدا اور تمہارا خدا ایک ہی ہے اور ہم اس کے سامنے سر تسلیم خم کیے ہوئے ہیں (46) اور اسی لیے ہم نے آپ کی طرف کتاب اتاری اور جنہیں ہم نے کتاب دی تھی، وہ اس پر ایمان لاتے ہیں اور ان میں بھی ایسے ہیں جو اس پر ایمان لائیں اور ہماری آیتوں کا جان بوجھ کر انکار نہیں کرتے مگر کافر لوگ (47) اور آپ اس کے پہلے کوئی نوشتہ نہ پڑھتے تھے اور نہ اپنے ہاتھ سے اسے لکھتے تھے اس صورت میں باطل پرستوں کو شک کا موقع ہوتا (48) بلکہ یہ کھلی ہوئی آیتیں ہیں ان لوگوں کے سینوں میں جنہیں علم عطا ہوا ہے اور ہماری آیتوں کا جان بوجھ کر انکار نہیں کرتے مگر ظالم لوگ (49) اور انہوں نے کہا کہ ان پر ان کے پروردگار کی طرف سے کچھ خاص نشانیاں کیوں نہیں اترتیں، کہیے کہ نشانیاں بس اللہ کے پاس ہیں اور میں تو بس کھلا ہوا عذاب سے ڈرانے والا ہوں (50) کیا ان کے لیے یہ کافی نہیں ہے کہ ہم نے آپ پر کتاب اتاری جو ان کے سامنے پڑھی جاتی ہے، بلاشبہ اس میں رحمت اور یاد دہانی ہے ان لوگوں کے لیے جو ایمان لائیں (51) کہئے کہ اللہ میرے اور تمہارے درمیان گواہ ہونے کے لیے کافی ہے، وہ جانتا ہے اسے جو آسمانوں اور زمین میں ہے، اور جو باطل پر ایمان لائے ہیں اور اللہ کے ساتھ کفر اختیار کیے ہوئے ہیں، یہ لوگ گھاٹا اٹھانے والے ہیں (52) اور وہ آپ سے عذاب میں جلدی کرتے ہیں اور اگر نہ ہوتی ایک مقررہ مدت تو آ جاتا ان پر عذاب اور وہ آئے گا ان پر اچانک درآں حالیکہ انہیں خبر بھی نہ ہو گی (53) وہ آپ سے عذاب میں جلدی کرتے ہیں اور حقیقت یہ ہے کہ دوزخ گھیرنے والا ہے کافروں کو (54) جس دن چھا جائے گا ان پر عذاب ان کے اوپر سے اور ان کے پیروں کے نیچے سے اور وہ ارشاد فرمائے گا کہ چکھو اسے جو تم اعمال کرتے تھے (55) اے میرے ایمان لانے والے بندو! میری زمین بہت وسیع ہے تو میری ہی عبادت کرو (56) ہر متنفس موت کامزہ چکھنے والا ہے، پھر میری طرف تمہیں پلٹ کر آنا ہے (57) اور جو ایمان لائیں اور اچھے اعمال انجام دیں، انہیں ہم بہشت کے اونچے درجوں میں جگہ دیں گے جن کے نیچے سے نہریں رواں ہوں گی، وہ ان میں ہمیشہ رہیں گے اور کتنا اچھا صلہ ہے ان عمل کرنے والوں کا (58) جنہوں نے صبر و برداشت سے کام لیا اور وہ اپنے پروردگار پر بھروسہ کرتے ہیں (59) اور کتنی ہی چلنے پھرنے والی مخلوق ہے جو اپنی روزی خود اٹھا کر نہیں لاسکتی، اللہ ہی روزی دیتا ہے اسے بھی اور تمہیں بھی اور وہ سننے والا ہے، بڑا جاننے والا (60) اور اگر ان سے پوچھو کہ آسمانوں اور زمین کو کس نے پیدا کیا اور سورج اور چاند کو تابع حکم بنایا، وہ کہیں گے اللہ نے، تو پھر وہ کس وجہ سے منحرف ہوتے ہیں (61) اللہ وسعت دیتا ہے روزی میں اپنے بندوں میں جس کے لیے چاہتا ہے اور اس کے لیے (جب چاہتا ہے) تنگی کرتا ہے، یقینا اللہ ہر چیز کا جاننے والا ہے (62) اور اگر ان سے پوچھو کہ کس نے اتارا آسمان سے پانی تو زندہ کیا اس زمین کو اس کے مردہ ہونے کے بعد، تو کہیں گے اللہ نے کہئے اللہ کا شکر ہے بلکہ ان میں سے زیادہ سمجھتے نہیں (63) اور یہ دینوی زندگی نہیں ہے مگر تماشا اور کھیل اور یقینا آخرت کا گھر ہی اصل زندگی ہے کاش وہ جانیں (64) تو جب وہ کشتی میں سوار ہوتے ہیں تو اللہ سے دعا کرتے ہیں خالص اس کی عبادت کرتے ہوئے، اس کے بعد جب وہ انہیں نجات دے کر خشکی میں پہنچا دیتا ہے تو ایک دم وہ شرک کرنے لگتے ہیں (65) اچھا تو وہ کفر ان نعمت کر لیں اس کا جو ہم نے انہیں دیا ہے، اور فائدہ اٹھالیں اس کے بعد انہیں معلوم ہوگا (66) کیا انہوں نے نہیں دیکھا کہ ہم نے ایک امن والا محترم شہر قرار دیا حالانکہ اس کے ارد گرد سے لوگوں پر جھپٹے مارے جاتے رہتے ہیں تو کیا وہ غلط باتوں کو مانیں گے اور اللہ کی نعمت کا انکار کریں گے (67) اور کون زیادہ ظالم ہے اس سے کہ جو اللہ پر غلط باتیں منڈھے یا حق کو جھٹلائے، جب وہ اس کے پاس آیا، کیا دوزخ میں ٹھکانا نہیں ہے کافروں کا (68) اور جنہوں نے ہماری راہ میں جدوجہد کی، انہیں ہم اپنی راہوں پر لگاتے ہیں اور یقینا اللہ اچھے کردار والوں کے ساتھ ہے (69)


پچھلی سورت:
سورہ قصص
سورہ 29 اگلی سورت:
سورہ روم
قرآن کریم

(1) سورہ فاتحہ (2) سورہ بقرہ (3) سورہ آل عمران (4) سورہ نساء (5) سورہ مائدہ (6) سورہ انعام (7) سورہ اعراف (8) سورہ انفال (9) سورہ توبہ (10) سورہ یونس (11) سورہ ہود (12) سورہ یوسف (13) سورہ رعد (14) سورہ ابراہیم (15) سورہ حجر (16) سورہ نحل (17) سورہ اسراء (18) سورہ کہف (19) سورہ مریم (20) سورہ طہ (21) سورہ انبیاء (22) سورہ حج (23) سورہ مؤمنون (24) سورہ نور (25) سورہ فرقان (26) سورہ شعراء (27) سورہ نمل (28) سورہ قصص (29) سورہ عنکبوت (30) سورہ روم (31) سورہ لقمان (32) سورہ سجدہ (33) سورہ احزاب (34) سورہ سباء (35) سورہ فاطر (36) سورہ یس (37) سورہ صافات (38) سورہ ص (39) سورہ زمر (40) سورہ غافر (41) سورہ فصلت (42) سورہ شوری (43) سورہ زخرف (44) سورہ دخان (45) سورہ جاثیہ (46) سورہ احقاف (47) سورہ محمد (48) سورہ فتح (49) سورہ حجرات (50) سورہ ق (51) سورہ ذاریات (52) سورہ طور (53) سورہ نجم (54) سورہ قمر (55) سورہ رحمن (56) سورہ واقعہ (57) سورہ حدید (58) سورہ مجادلہ (59) سورہ حشر (60) سورہ ممتحنہ (61) سورہ صف (62) سورہ جمعہ (63) سورہ منافقون (64) سورہ تغابن (65) سورہ طلاق (66) سورہ تحریم (67) سورہ ملک (68) سورہ قلم (69) سورہ حاقہ (70) سورہ معارج (71) سورہ نوح (72) سورہ جن (73) سورہ مزمل (74) سورہ مدثر (75) سورہ قیامہ (76) سورہ انسان (77) سورہ مرسلات (78) سورہ نباء (79) سورہ نازعات (80) سورہ عبس (81) سورہ تکویر (82) سورہ انفطار (83) سورہ مطففین (84) سورہ انشقاق (85) سورہ بروج (86) سورہ طارق (87) سورہ اعلی (88) سورہ غاشیہ (89) سورہ فجر (90) سورہ بلد (91) سورہ شمس (92) سورہ لیل (93) سورہ ضحی (94) سورہ شرح (95) سورہ تین (96) سورہ علق (97) سورہ قدر (98) سورہ بینہ (99) سورہ زلزال (100) سورہ عادیات (101) سورہ قارعہ (102) سورہ تکاثر (103) سورہ عصر (104) سورہ ہمزہ (105) سورہ فیل (106) سورہ قریش (107) سورہ ماعون (108) سورہ کوثر (109) سورہ کافرون (110) سورہ نصر (111) سورہ مسد (112) سورہ اخلاص (113) سورہ فلق (114) سورہ ناس


متعلقہ مآخذ

حوالہ جات

  1. دانشنامه قرآن و قرآن پژوهی، ج2، ص1245۔
  2. دانشنامه قرآن و قرآن پژوهی، ج2، ص1244ـ1245


منابع