سورہ فجر

ویکی شیعہ سے
یہاں جائیں: رہنمائی، تلاش کریں
غاشیہ سورۂ فجر بلد
سوره فجر.jpg
ترتیب کتابت: 89
پارہ : 30
نزول
ترتیب نزول: 10
مکی/ مدنی: مکی
اعداد و شمار
آیات: 30
الفاظ: 139
حروف: 584

سوره فَجْر 89ویں سورت اور قرآن کی مکی سورتوں میں سے ہے جو 30ویں پارے میں واقع ہے۔ اس سورت کا نام فجر ہے جو صبح کی سفیدی کے معنی میں ہے۔ یہ کلمہ جو سورہ کے آغاز میں اللہ تعالی نے جس کی قسم کھائی ہے بعض روائی تفاسیر میں اس سے مراد حضرت قائمؑ لیا ہے۔

سورہ فجر قسم سے شروع ہوتی ہے اور قوم عاد، ثمود و قوم فرعون نیز ان کی سرکشی اور برائیوں کی طرف اشارہ کرتی ہے اور ارشاد ہوتا ہے کہ انسان ہمیشہ اللہ کی طرف سے امتحان کی حالت میں ہے؛ بعض اس امتحان میں ناکام ہوتے ہیں اور اس شکست کی دلائل بھی بیان ہوئی ہیں۔

سورہ فجر، سورہ امام حسینؑ سے بھی مشہور ہے اور روایات میں یہ ان سے منسوب ہے اور ارشاد ہوتا ہے کہ آخری آیات میں «نفس مطمئنہ» سے مراد امام حسینؑ ہیں۔ اسی طرح نقل ہوا ہے کہ جو بھی ان دس راتوں میں سورہ فجر کی تلاوت کرے گا، اللہ تعالی اس کے گناہ معاف کرے گا اور اگر دوسرے دنوں میں تلاوت کرے تو قیامت میں ایک نور اس کے ساتھ ہوگا۔ امام حسینؑ کی موجودہ ضریح پر بھی سورہ فجر لکھی گئی ہے۔