سورہ نساء

ویکی شیعہ سے
یہاں جائیں: رہنمائی، تلاش کریں
آل عمران سورۂ نساء مائدہ
سوره نساء.jpg
ترتیب کتابت: 4
پارہ : 4 و 5 و 6
نزول
ترتیب نزول: 92
مکی/ مدنی: مدنی
اعداد و شمار
آیات: 176
الفاظ: 3764
حروف: 16328

سوره نساء، [سُوْرَةُ النِّسَاءِ]، کو نساء کہا گیا ہے کیونکہ خواتین کے اکثر فقہی احکام اس سورت میں بیان کئے گئے ہیں؛ حجم کے لحاظ سے یہ سورت سات طویل سورتوں میں سے اور بقرہ کے بعد دوسری بڑی سورت ہے۔

سورہ نساء

لفظ نساء (خواتین) اس سورت میں 20 مرتبہ دہرایا گیا ہے اور عورتوں کے زیادہ تر فقہی احکام اسی سورت میں بیان ہوئے ہیں چنانچہ اس کو سورہ نساء کا نام دیا گیا ہے۔

اس سورت کا دوسرا نام سورةُ نِساءِ الكُبرٰی یعنی عورتوں کی بڑی سورت، ہے کیونکہ سورہ طلاق (سورہ نمبر 65) "‌نساء الصغرٰی‌" یا " نساءُالقصرٰی" یعنی عورتوں کی چھوٹی سورت، ہے۔ سورہ نساء مدنی ہے اور کوفی قراء کی نزدیک اس کی آیتوں کی تعداد 176 اور دوسرے قراء کے نزدیک 177 ہے؛ اور پہلا قول صحیح اور مشہور ہے اور اس کے الفاظ کی تعداد 3764 اور حروف کی تعداد 16328 ہے۔

یہ سورت تدوین اور تجمیع مصحف کے اعتبار سے چوتھی سورت اور نزول قرآن کی ترتیب کے لحاظ سے بانوےویں، مدینہ میں نازل ہونے والی سورتوں میں چھٹی سورت اور طول و حجم کے لحاظ سے سات طویل سورتوں میں تیسری نیز سورہ بقرہ کے بعد قرآن کی دوسری بڑی سورت اور تقریبا ڈيڑھ پاروں پر مشتمل ہے۔ یہ سورت سُوَرِ مخاطبات کہلانے والی گیارہ سورتوں میں پہلی سورت ہے جس کا آغاز "يا أَيُّهَا النّاسُ" کے عمومی خطاب سے ہوا ہے۔

مفاہیم

خواتین اور یتیموں کے سلسلے میں زیادہ تر فقہی احکام اور ارث کے احکام اسی سورت میں بیان ہوئے ہیں۔ اس سورت کے بعض مضامین و اہم مندرجات حسب ذیل ہیں:

  • خاندان کی تشکیل اور خاندانی انتظام کی روشیں؛
  • صلۂ ارحام اور والدین، اعزاء و اقارب، پڑوسیوں، راستے میں رہنے والوں اور محرومین کی مدد کرنا (معاشرتی تعاون)؛
  • کفار کے خلاف جہاد؛
  • منافقین کی نسبت انتباہ؛
  • ولایت اور حکومت اسلامی کا مسئلہ، معاشرتی عدل کا قیام، دینی مراسمات کی انجام دہی کے لئے فاسد معاشرے سے صحتمند معاشرے کی طرف ہجرت ہجرت۔[1]

متن سورہ

سورہ نساء مدنیہ ـ نمبر 4 ۔ آیات 176 - ترتیب نزول 99
بِسْمِ اللّهِ الرَّحْمَنِ الرَّحِيمِ


يَا أَيُّهَا النَّاسُ اتَّقُواْ رَبَّكُمُ الَّذِي خَلَقَكُم مِّن نَّفْسٍ وَاحِدَةٍ وَخَلَقَ مِنْهَا زَوْجَهَا وَبَثَّ مِنْهُمَا رِجَالاً كَثِيرًا وَنِسَاء وَاتَّقُواْ اللّهَ الَّذِي تَسَاءلُونَ بِهِ وَالأَرْحَامَ إِنَّ اللّهَ كَانَ عَلَيْكُمْ رَقِيبًا ﴿1﴾ وَآتُواْ الْيَتَامَى أَمْوَالَهُمْ وَلاَ تَتَبَدَّلُواْ الْخَبِيثَ بِالطَّيِّبِ وَلاَ تَأْكُلُواْ أَمْوَالَهُمْ إِلَى أَمْوَالِكُمْ إِنَّهُ كَانَ حُوبًا كَبِيرًا ﴿2﴾ وَإِنْ خِفْتُمْ أَلاَّ تُقْسِطُواْ فِي الْيَتَامَى فَانكِحُواْ مَا طَابَ لَكُم مِّنَ النِّسَاء مَثْنَى وَثُلاَثَ وَرُبَاعَ فَإِنْ خِفْتُمْ أَلاَّ تَعْدِلُواْ فَوَاحِدَةً أَوْ مَا مَلَكَتْ أَيْمَانُكُمْ ذَلِكَ أَدْنَى أَلاَّ تَعُولُواْ ﴿3﴾ وَآتُواْ النَّسَاء صَدُقَاتِهِنَّ نِحْلَةً فَإِن طِبْنَ لَكُمْ عَن شَيْءٍ مِّنْهُ نَفْسًا فَكُلُوهُ هَنِيئًا مَّرِيئًا ﴿4﴾ وَلاَ تُؤْتُواْ السُّفَهَاء أَمْوَالَكُمُ الَّتِي جَعَلَ اللّهُ لَكُمْ قِيَاماً وَارْزُقُوهُمْ فِيهَا وَاكْسُوهُمْ وَقُولُواْ لَهُمْ قَوْلاً مَّعْرُوفًا ﴿5﴾ وَابْتَلُواْ الْيَتَامَى حَتَّىَ إِذَا بَلَغُواْ النِّكَاحَ فَإِنْ آنَسْتُم مِّنْهُمْ رُشْدًا فَادْفَعُواْ إِلَيْهِمْ أَمْوَالَهُمْ وَلاَ تَأْكُلُوهَا إِسْرَافًا وَبِدَارًا أَن يَكْبَرُواْ وَمَن كَانَ غَنِيًّا فَلْيَسْتَعْفِفْ وَمَن كَانَ فَقِيرًا فَلْيَأْكُلْ بِالْمَعْرُوفِ فَإِذَا دَفَعْتُمْ إِلَيْهِمْ أَمْوَالَهُمْ فَأَشْهِدُواْ عَلَيْهِمْ وَكَفَى بِاللّهِ حَسِيبًا ﴿6﴾ لِّلرِّجَالِ نَصيِبٌ مِّمَّا تَرَكَ الْوَالِدَانِ وَالأَقْرَبُونَ وَلِلنِّسَاء نَصِيبٌ مِّمَّا تَرَكَ الْوَالِدَانِ وَالأَقْرَبُونَ مِمَّا قَلَّ مِنْهُ أَوْ كَثُرَ نَصِيبًا مَّفْرُوضًا ﴿7﴾ وَإِذَا حَضَرَ الْقِسْمَةَ أُوْلُواْ الْقُرْبَى وَالْيَتَامَى وَالْمَسَاكِينُ فَارْزُقُوهُم مِّنْهُ وَقُولُواْ لَهُمْ قَوْلاً مَّعْرُوفًا ﴿8﴾ وَلْيَخْشَ الَّذِينَ لَوْ تَرَكُواْ مِنْ خَلْفِهِمْ ذُرِّيَّةً ضِعَافًا خَافُواْ عَلَيْهِمْ فَلْيَتَّقُوا اللّهَ وَلْيَقُولُواْ قَوْلاً سَدِيدًا ﴿9﴾ إِنَّ الَّذِينَ يَأْكُلُونَ أَمْوَالَ الْيَتَامَى ظُلْمًا إِنَّمَا يَأْكُلُونَ فِي بُطُونِهِمْ نَارًا وَسَيَصْلَوْنَ سَعِيرًا ﴿10﴾ يُوصِيكُمُ اللّهُ فِي أَوْلاَدِكُمْ لِلذَّكَرِ مِثْلُ حَظِّ الأُنثَيَيْنِ فَإِن كُنَّ نِسَاء فَوْقَ اثْنَتَيْنِ فَلَهُنَّ ثُلُثَا مَا تَرَكَ وَإِن كَانَتْ وَاحِدَةً فَلَهَا النِّصْفُ وَلأَبَوَيْهِ لِكُلِّ وَاحِدٍ مِّنْهُمَا السُّدُسُ مِمَّا تَرَكَ إِن كَانَ لَهُ وَلَدٌ فَإِن لَّمْ يَكُن لَّهُ وَلَدٌ وَوَرِثَهُ أَبَوَاهُ فَلأُمِّهِ الثُّلُثُ فَإِن كَانَ لَهُ إِخْوَةٌ فَلأُمِّهِ السُّدُسُ مِن بَعْدِ وَصِيَّةٍ يُوصِي بِهَا أَوْ دَيْنٍ آبَآؤُكُمْ وَأَبناؤُكُمْ لاَ تَدْرُونَ أَيُّهُمْ أَقْرَبُ لَكُمْ نَفْعاً فَرِيضَةً مِّنَ اللّهِ إِنَّ اللّهَ كَانَ عَلِيما حَكِيمًا ﴿11﴾ وَلَكُمْ نِصْفُ مَا تَرَكَ أَزْوَاجُكُمْ إِن لَّمْ يَكُن لَّهُنَّ وَلَدٌ فَإِن كَانَ لَهُنَّ وَلَدٌ فَلَكُمُ الرُّبُعُ مِمَّا تَرَكْنَ مِن بَعْدِ وَصِيَّةٍ يُوصِينَ بِهَا أَوْ دَيْنٍ وَلَهُنَّ الرُّبُعُ مِمَّا تَرَكْتُمْ إِن لَّمْ يَكُن لَّكُمْ وَلَدٌ فَإِن كَانَ لَكُمْ وَلَدٌ فَلَهُنَّ الثُّمُنُ مِمَّا تَرَكْتُم مِّن بَعْدِ وَصِيَّةٍ تُوصُونَ بِهَا أَوْ دَيْنٍ وَإِن كَانَ رَجُلٌ يُورَثُ كَلاَلَةً أَو امْرَأَةٌ وَلَهُ أَخٌ أَوْ أُخْتٌ فَلِكُلِّ وَاحِدٍ مِّنْهُمَا السُّدُسُ فَإِن كَانُوَاْ أَكْثَرَ مِن ذَلِكَ فَهُمْ شُرَكَاء فِي الثُّلُثِ مِن بَعْدِ وَصِيَّةٍ يُوصَى بِهَآ أَوْ دَيْنٍ غَيْرَ مُضَآرٍّ وَصِيَّةً مِّنَ اللّهِ وَاللّهُ عَلِيمٌ حَلِيمٌ ﴿12﴾ تِلْكَ حُدُودُ اللّهِ وَمَن يُطِعِ اللّهَ وَرَسُولَهُ يُدْخِلْهُ جَنَّاتٍ تَجْرِي مِن تَحْتِهَا الأَنْهَارُ خَالِدِينَ فِيهَا وَذَلِكَ الْفَوْزُ الْعَظِيمُ ﴿13﴾ وَمَن يَعْصِ اللّهَ وَرَسُولَهُ وَيَتَعَدَّ حُدُودَهُ يُدْخِلْهُ نَارًا خَالِدًا فِيهَا وَلَهُ عَذَابٌ مُّهِينٌ ﴿14﴾ وَاللاَّتِي يَأْتِينَ الْفَاحِشَةَ مِن نِّسَآئِكُمْ فَاسْتَشْهِدُواْ عَلَيْهِنَّ أَرْبَعةً مِّنكُمْ فَإِن شَهِدُواْ فَأَمْسِكُوهُنَّ فِي الْبُيُوتِ حَتَّىَ يَتَوَفَّاهُنَّ الْمَوْتُ أَوْ يَجْعَلَ اللّهُ لَهُنَّ سَبِيلاً ﴿15﴾ وَاللَّذَانَ يَأْتِيَانِهَا مِنكُمْ فَآذُوهُمَا فَإِن تَابَا وَأَصْلَحَا فَأَعْرِضُواْ عَنْهُمَا إِنَّ اللّهَ كَانَ تَوَّابًا رَّحِيمًا ﴿16﴾ إِنَّمَا التَّوْبَةُ عَلَى اللّهِ لِلَّذِينَ يَعْمَلُونَ السُّوَءَ بِجَهَالَةٍ ثُمَّ يَتُوبُونَ مِن قَرِيبٍ فَأُوْلَئِكَ يَتُوبُ اللّهُ عَلَيْهِمْ وَكَانَ اللّهُ عَلِيماً حَكِيماً ﴿17﴾ وَلَيْسَتِ التَّوْبَةُ لِلَّذِينَ يَعْمَلُونَ السَّيِّئَاتِ حَتَّى إِذَا حَضَرَ أَحَدَهُمُ الْمَوْتُ قَالَ إِنِّي تُبْتُ الآنَ وَلاَ الَّذِينَ يَمُوتُونَ وَهُمْ كُفَّارٌ أُوْلَئِكَ أَعْتَدْنَا لَهُمْ عَذَابًا أَلِيمًا ﴿18﴾ يَا أَيُّهَا الَّذِينَ آمَنُواْ لاَ يَحِلُّ لَكُمْ أَن تَرِثُواْ النِّسَاء كَرْهًا وَلاَ تَعْضُلُوهُنَّ لِتَذْهَبُواْ بِبَعْضِ مَا آتَيْتُمُوهُنَّ إِلاَّ أَن يَأْتِينَ بِفَاحِشَةٍ مُّبَيِّنَةٍ وَعَاشِرُوهُنَّ بِالْمَعْرُوفِ فَإِن كَرِهْتُمُوهُنَّ فَعَسَى أَن تَكْرَهُواْ شَيْئًا وَيَجْعَلَ اللّهُ فِيهِ خَيْرًا كَثِيرًا ﴿19﴾ وَإِنْ أَرَدتُّمُ اسْتِبْدَالَ زَوْجٍ مَّكَانَ زَوْجٍ وَآتَيْتُمْ إِحْدَاهُنَّ قِنطَارًا فَلاَ تَأْخُذُواْ مِنْهُ شَيْئًا أَتَأْخُذُونَهُ بُهْتَاناً وَإِثْماً مُّبِيناً ﴿20﴾ وَكَيْفَ تَأْخُذُونَهُ وَقَدْ أَفْضَى بَعْضُكُمْ إِلَى بَعْضٍ وَأَخَذْنَ مِنكُم مِّيثَاقًا غَلِيظًا ﴿21﴾ وَلاَ تَنكِحُواْ مَا نَكَحَ آبَاؤُكُم مِّنَ النِّسَاء إِلاَّ مَا قَدْ سَلَفَ إِنَّهُ كَانَ فَاحِشَةً وَمَقْتًا وَسَاء سَبِيلاً ﴿22﴾ حُرِّمَتْ عَلَيْكُمْ أُمَّهَاتُكُمْ وَبَنَاتُكُمْ وَأَخَوَاتُكُمْ وَعَمَّاتُكُمْ وَخَالاَتُكُمْ وَبَنَاتُ الأَخِ وَبَنَاتُ الأُخْتِ وَأُمَّهَاتُكُمُ اللاَّتِي أَرْضَعْنَكُمْ وَأَخَوَاتُكُم مِّنَ الرَّضَاعَةِ وَأُمَّهَاتُ نِسَآئِكُمْ وَرَبَائِبُكُمُ اللاَّتِي فِي حُجُورِكُم مِّن نِّسَآئِكُمُ اللاَّتِي دَخَلْتُم بِهِنَّ فَإِن لَّمْ تَكُونُواْ دَخَلْتُم بِهِنَّ فَلاَ جُنَاحَ عَلَيْكُمْ وَحَلاَئِلُ أَبْنَائِكُمُ الَّذِينَ مِنْ أَصْلاَبِكُمْ وَأَن تَجْمَعُواْ بَيْنَ الأُخْتَيْنِ إَلاَّ مَا قَدْ سَلَفَ إِنَّ اللّهَ كَانَ غَفُورًا رَّحِيمًا ﴿23﴾ وَالْمُحْصَنَاتُ مِنَ النِّسَاء إِلاَّ مَا مَلَكَتْ أَيْمَانُكُمْ كِتَابَ اللّهِ عَلَيْكُمْ وَأُحِلَّ لَكُم مَّا وَرَاء ذَلِكُمْ أَن تَبْتَغُواْ بِأَمْوَالِكُم مُّحْصِنِينَ غَيْرَ مُسَافِحِينَ فَمَا اسْتَمْتَعْتُم بِهِ مِنْهُنَّ فَآتُوهُنَّ أُجُورَهُنَّ فَرِيضَةً وَلاَ جُنَاحَ عَلَيْكُمْ فِيمَا تَرَاضَيْتُم بِهِ مِن بَعْدِ الْفَرِيضَةِ إِنَّ اللّهَ كَانَ عَلِيمًا حَكِيمًا ﴿24﴾ وَمَن لَّمْ يَسْتَطِعْ مِنكُمْ طَوْلاً أَن يَنكِحَ الْمُحْصَنَاتِ الْمُؤْمِنَاتِ فَمِن مِّا مَلَكَتْ أَيْمَانُكُم مِّن فَتَيَاتِكُمُ الْمُؤْمِنَاتِ وَاللّهُ أَعْلَمُ بِإِيمَانِكُمْ بَعْضُكُم مِّن بَعْضٍ فَانكِحُوهُنَّ بِإِذْنِ أَهْلِهِنَّ وَآتُوهُنَّ أُجُورَهُنَّ بِالْمَعْرُوفِ مُحْصَنَاتٍ غَيْرَ مُسَافِحَاتٍ وَلاَ مُتَّخِذَاتِ أَخْدَانٍ فَإِذَا أُحْصِنَّ فَإِنْ أَتَيْنَ بِفَاحِشَةٍ فَعَلَيْهِنَّ نِصْفُ مَا عَلَى الْمُحْصَنَاتِ مِنَ الْعَذَابِ ذَلِكَ لِمَنْ خَشِيَ الْعَنَتَ مِنْكُمْ وَأَن تَصْبِرُواْ خَيْرٌ لَّكُمْ وَاللّهُ غَفُورٌ رَّحِيمٌ ﴿25﴾ يُرِيدُ اللّهُ لِيُبَيِّنَ لَكُمْ وَيَهْدِيَكُمْ سُنَنَ الَّذِينَ مِن قَبْلِكُمْ وَيَتُوبَ عَلَيْكُمْ وَاللّهُ عَلِيمٌ حَكِيمٌ ﴿26﴾ وَاللّهُ يُرِيدُ أَن يَتُوبَ عَلَيْكُمْ وَيُرِيدُ الَّذِينَ يَتَّبِعُونَ الشَّهَوَاتِ أَن تَمِيلُواْ مَيْلاً عَظِيمًا ﴿27﴾ يُرِيدُ اللّهُ أَن يُخَفِّفَ عَنكُمْ وَخُلِقَ الإِنسَانُ ضَعِيفًا ﴿28﴾ يَا أَيُّهَا الَّذِينَ آمَنُواْ لاَ تَأْكُلُواْ أَمْوَالَكُمْ بَيْنَكُمْ بِالْبَاطِلِ إِلاَّ أَن تَكُونَ تِجَارَةً عَن تَرَاضٍ مِّنكُمْ وَلاَ تَقْتُلُواْ أَنفُسَكُمْ إِنَّ اللّهَ كَانَ بِكُمْ رَحِيمًا ﴿29﴾ وَمَن يَفْعَلْ ذَلِكَ عُدْوَانًا وَظُلْمًا فَسَوْفَ نُصْلِيهِ نَارًا وَكَانَ ذَلِكَ عَلَى اللّهِ يَسِيرًا ﴿30﴾ إِن تَجْتَنِبُواْ كَبَآئِرَ مَا تُنْهَوْنَ عَنْهُ نُكَفِّرْ عَنكُمْ سَيِّئَاتِكُمْ وَنُدْخِلْكُم مُّدْخَلاً كَرِيمًا ﴿31﴾ وَلاَ تَتَمَنَّوْاْ مَا فَضَّلَ اللّهُ بِهِ بَعْضَكُمْ عَلَى بَعْضٍ لِّلرِّجَالِ نَصِيبٌ مِّمَّا اكْتَسَبُواْ وَلِلنِّسَاء نَصِيبٌ مِّمَّا اكْتَسَبْنَ وَاسْأَلُواْ اللّهَ مِن فَضْلِهِ إِنَّ اللّهَ كَانَ بِكُلِّ شَيْءٍ عَلِيمًا ﴿32﴾ وَلِكُلٍّ جَعَلْنَا مَوَالِيَ مِمَّا تَرَكَ الْوَالِدَانِ وَالأَقْرَبُونَ وَالَّذِينَ عَقَدَتْ أَيْمَانُكُمْ فَآتُوهُمْ نَصِيبَهُمْ إِنَّ اللّهَ كَانَ عَلَى كُلِّ شَيْءٍ شَهِيدًا ﴿33﴾ الرِّجَالُ قَوَّامُونَ عَلَى النِّسَاء بِمَا فَضَّلَ اللّهُ بَعْضَهُمْ عَلَى بَعْضٍ وَبِمَا أَنفَقُواْ مِنْ أَمْوَالِهِمْ فَالصَّالِحَاتُ قَانِتَاتٌ حَافِظَاتٌ لِّلْغَيْبِ بِمَا حَفِظَ اللّهُ وَاللاَّتِي تَخَافُونَ نُشُوزَهُنَّ فَعِظُوهُنَّ وَاهْجُرُوهُنَّ فِي الْمَضَاجِعِ وَاضْرِبُوهُنَّ فَإِنْ أَطَعْنَكُمْ فَلاَ تَبْغُواْ عَلَيْهِنَّ سَبِيلاً إِنَّ اللّهَ كَانَ عَلِيًّا كَبِيرًا ﴿34﴾ وَإِنْ خِفْتُمْ شِقَاقَ بَيْنِهِمَا فَابْعَثُواْ حَكَمًا مِّنْ أَهْلِهِ وَحَكَمًا مِّنْ أَهْلِهَا إِن يُرِيدَا إِصْلاَحًا يُوَفِّقِ اللّهُ بَيْنَهُمَا إِنَّ اللّهَ كَانَ عَلِيمًا خَبِيرًا ﴿35﴾ وَاعْبُدُواْ اللّهَ وَلاَ تُشْرِكُواْ بِهِ شَيْئًا وَبِالْوَالِدَيْنِ إِحْسَانًا وَبِذِي الْقُرْبَى وَالْيَتَامَى وَالْمَسَاكِينِ وَالْجَارِ ذِي الْقُرْبَى وَالْجَارِ الْجُنُبِ وَالصَّاحِبِ بِالجَنبِ وَابْنِ السَّبِيلِ وَمَا مَلَكَتْ أَيْمَانُكُمْ إِنَّ اللّهَ لاَ يُحِبُّ مَن كَانَ مُخْتَالاً فَخُورًا ﴿36﴾ الَّذِينَ يَبْخَلُونَ وَيَأْمُرُونَ النَّاسَ بِالْبُخْلِ وَيَكْتُمُونَ مَا آتَاهُمُ اللّهُ مِن فَضْلِهِ وَأَعْتَدْنَا لِلْكَافِرِينَ عَذَابًا مُّهِينًا ﴿37﴾ وَالَّذِينَ يُنفِقُونَ أَمْوَالَهُمْ رِئَاء النَّاسِ وَلاَ يُؤْمِنُونَ بِاللّهِ وَلاَ بِالْيَوْمِ الآخِرِ وَمَن يَكُنِ الشَّيْطَانُ لَهُ قَرِينًا فَسَاء قِرِينًا ﴿38﴾ وَمَاذَا عَلَيْهِمْ لَوْ آمَنُواْ بِاللّهِ وَالْيَوْمِ الآخِرِ وَأَنفَقُواْ مِمَّا رَزَقَهُمُ اللّهُ وَكَانَ اللّهُ بِهِم عَلِيمًا ﴿39﴾ إِنَّ اللّهَ لاَ يَظْلِمُ مِثْقَالَ ذَرَّةٍ وَإِن تَكُ حَسَنَةً يُضَاعِفْهَا وَيُؤْتِ مِن لَّدُنْهُ أَجْرًا عَظِيمًا ﴿40﴾ فَكَيْفَ إِذَا جِئْنَا مِن كُلِّ أمَّةٍ بِشَهِيدٍ وَجِئْنَا بِكَ عَلَى هَؤُلاء شَهِيدًا ﴿41﴾ يَوْمَئِذٍ يَوَدُّ الَّذِينَ كَفَرُواْ وَعَصَوُاْ الرَّسُولَ لَوْ تُسَوَّى بِهِمُ الأَرْضُ وَلاَ يَكْتُمُونَ اللّهَ حَدِيثًا ﴿42﴾ يَا أَيُّهَا الَّذِينَ آمَنُواْ لاَ تَقْرَبُواْ الصَّلاَةَ وَأَنتُمْ سُكَارَى حَتَّىَ تَعْلَمُواْ مَا تَقُولُونَ وَلاَ جُنُبًا إِلاَّ عَابِرِي سَبِيلٍ حَتَّىَ تَغْتَسِلُواْ وَإِن كُنتُم مَّرْضَى أَوْ عَلَى سَفَرٍ أَوْ جَاء أَحَدٌ مِّنكُم مِّن الْغَآئِطِ أَوْ لاَمَسْتُمُ النِّسَاء فَلَمْ تَجِدُواْ مَاء فَتَيَمَّمُواْ صَعِيدًا طَيِّبًا فَامْسَحُواْ بِوُجُوهِكُمْ وَأَيْدِيكُمْ إِنَّ اللّهَ كَانَ عَفُوًّا غَفُورًا ﴿43﴾ أَلَمْ تَرَ إِلَى الَّذِينَ أُوتُواْ نَصِيبًا مِّنَ الْكِتَابِ يَشْتَرُونَ الضَّلاَلَةَ وَيُرِيدُونَ أَن تَضِلُّواْ السَّبِيلَ ﴿44﴾ وَاللّهُ أَعْلَمُ بِأَعْدَائِكُمْ وَكَفَى بِاللّهِ وَلِيًّا وَكَفَى بِاللّهِ نَصِيرًا ﴿45﴾ مِّنَ الَّذِينَ هَادُواْ يُحَرِّفُونَ الْكَلِمَ عَن مَّوَاضِعِهِ وَيَقُولُونَ سَمِعْنَا وَعَصَيْنَا وَاسْمَعْ غَيْرَ مُسْمَعٍ وَرَاعِنَا لَيًّا بِأَلْسِنَتِهِمْ وَطَعْنًا فِي الدِّينِ وَلَوْ أَنَّهُمْ قَالُواْ سَمِعْنَا وَأَطَعْنَا وَاسْمَعْ وَانظُرْنَا لَكَانَ خَيْرًا لَّهُمْ وَأَقْوَمَ وَلَكِن لَّعَنَهُمُ اللّهُ بِكُفْرِهِمْ فَلاَ يُؤْمِنُونَ إِلاَّ قَلِيلاً ﴿46﴾ يَا أَيُّهَا الَّذِينَ أُوتُواْ الْكِتَابَ آمِنُواْ بِمَا نَزَّلْنَا مُصَدِّقًا لِّمَا مَعَكُم مِّن قَبْلِ أَن نَّطْمِسَ وُجُوهًا فَنَرُدَّهَا عَلَى أَدْبَارِهَا أَوْ نَلْعَنَهُمْ كَمَا لَعَنَّا أَصْحَابَ السَّبْتِ وَكَانَ أَمْرُ اللّهِ مَفْعُولاً ﴿47﴾ إِنَّ اللّهَ لاَ يَغْفِرُ أَن يُشْرَكَ بِهِ وَيَغْفِرُ مَا دُونَ ذَلِكَ لِمَن يَشَاء وَمَن يُشْرِكْ بِاللّهِ فَقَدِ افْتَرَى إِثْمًا عَظِيمًا ﴿48﴾ أَلَمْ تَرَ إِلَى الَّذِينَ يُزَكُّونَ أَنفُسَهُمْ بَلِ اللّهُ يُزَكِّي مَن يَشَاء وَلاَ يُظْلَمُونَ فَتِيلاً ﴿49﴾ انظُرْ كَيفَ يَفْتَرُونَ عَلَى اللّهِ الكَذِبَ وَكَفَى بِهِ إِثْمًا مُّبِينًا ﴿50﴾ أَلَمْ تَرَ إِلَى الَّذِينَ أُوتُواْ نَصِيبًا مِّنَ الْكِتَابِ يُؤْمِنُونَ بِالْجِبْتِ وَالطَّاغُوتِ وَيَقُولُونَ لِلَّذِينَ كَفَرُواْ هَؤُلاء أَهْدَى مِنَ الَّذِينَ آمَنُواْ سَبِيلاً ﴿51﴾ أُوْلَئِكَ الَّذِينَ لَعَنَهُمُ اللّهُ وَمَن يَلْعَنِ اللّهُ فَلَن تَجِدَ لَهُ نَصِيرًا ﴿52﴾ أَمْ لَهُمْ نَصِيبٌ مِّنَ الْمُلْكِ فَإِذًا لاَّ يُؤْتُونَ النَّاسَ نَقِيرًا ﴿53﴾ أَمْ يَحْسُدُونَ النَّاسَ عَلَى مَا آتَاهُمُ اللّهُ مِن فَضْلِهِ فَقَدْ آتَيْنَآ آلَ إِبْرَاهِيمَ الْكِتَابَ وَالْحِكْمَةَ وَآتَيْنَاهُم مُّلْكًا عَظِيمًا ﴿54﴾ فَمِنْهُم مَّنْ آمَنَ بِهِ وَمِنْهُم مَّن صَدَّ عَنْهُ وَكَفَى بِجَهَنَّمَ سَعِيرًا ﴿55﴾ إِنَّ الَّذِينَ كَفَرُواْ بِآيَاتِنَا سَوْفَ نُصْلِيهِمْ نَارًا كُلَّمَا نَضِجَتْ جُلُودُهُمْ بَدَّلْنَاهُمْ جُلُودًا غَيْرَهَا لِيَذُوقُواْ الْعَذَابَ إِنَّ اللّهَ كَانَ عَزِيزًا حَكِيمًا ﴿56﴾ وَالَّذِينَ آمَنُواْ وَعَمِلُواْ الصَّالِحَاتِ سَنُدْخِلُهُمْ جَنَّاتٍ تَجْرِي مِن تَحْتِهَا الأَنْهَارُ خَالِدِينَ فِيهَا أَبَدًا لَّهُمْ فِيهَا أَزْوَاجٌ مُّطَهَّرَةٌ وَنُدْخِلُهُمْ ظِلاًّ ظَلِيلاً ﴿57﴾ إِنَّ اللّهَ يَأْمُرُكُمْ أَن تُؤدُّواْ الأَمَانَاتِ إِلَى أَهْلِهَا وَإِذَا حَكَمْتُم بَيْنَ النَّاسِ أَن تَحْكُمُواْ بِالْعَدْلِ إِنَّ اللّهَ نِعِمَّا يَعِظُكُم بِهِ إِنَّ اللّهَ كَانَ سَمِيعًا بَصِيرًا ﴿58﴾ يَا أَيُّهَا الَّذِينَ آمَنُواْ أَطِيعُواْ اللّهَ وَأَطِيعُواْ الرَّسُولَ وَأُوْلِي الأَمْرِ مِنكُمْ فَإِن تَنَازَعْتُمْ فِي شَيْءٍ فَرُدُّوهُ إِلَى اللّهِ وَالرَّسُولِ إِن كُنتُمْ تُؤْمِنُونَ بِاللّهِ وَالْيَوْمِ الآخِرِ ذَلِكَ خَيْرٌ وَأَحْسَنُ تَأْوِيلاً ﴿59﴾ أَلَمْ تَرَ إِلَى الَّذِينَ يَزْعُمُونَ أَنَّهُمْ آمَنُواْ بِمَا أُنزِلَ إِلَيْكَ وَمَا أُنزِلَ مِن قَبْلِكَ يُرِيدُونَ أَن يَتَحَاكَمُواْ إِلَى الطَّاغُوتِ وَقَدْ أُمِرُواْ أَن يَكْفُرُواْ بِهِ وَيُرِيدُ الشَّيْطَانُ أَن يُضِلَّهُمْ ضَلاَلاً بَعِيدًا ﴿60﴾ وَإِذَا قِيلَ لَهُمْ تَعَالَوْاْ إِلَى مَا أَنزَلَ اللّهُ وَإِلَى الرَّسُولِ رَأَيْتَ الْمُنَافِقِينَ يَصُدُّونَ عَنكَ صُدُودًا ﴿61﴾ فَكَيْفَ إِذَا أَصَابَتْهُم مُّصِيبَةٌ بِمَا قَدَّمَتْ أَيْدِيهِمْ ثُمَّ جَآؤُوكَ يَحْلِفُونَ بِاللّهِ إِنْ أَرَدْنَا إِلاَّ إِحْسَانًا وَتَوْفِيقًا ﴿62﴾ أُولَئِكَ الَّذِينَ يَعْلَمُ اللّهُ مَا فِي قُلُوبِهِمْ فَأَعْرِضْ عَنْهُمْ وَعِظْهُمْ وَقُل لَّهُمْ فِي أَنفُسِهِمْ قَوْلاً بَلِيغًا ﴿63﴾ وَمَا أَرْسَلْنَا مِن رَّسُولٍ إِلاَّ لِيُطَاعَ بِإِذْنِ اللّهِ وَلَوْ أَنَّهُمْ إِذ ظَّلَمُواْ أَنفُسَهُمْ جَآؤُوكَ فَاسْتَغْفَرُواْ اللّهَ وَاسْتَغْفَرَ لَهُمُ الرَّسُولُ لَوَجَدُواْ اللّهَ تَوَّابًا رَّحِيمًا ﴿64﴾ فَلاَ وَرَبِّكَ لاَ يُؤْمِنُونَ حَتَّىَ يُحَكِّمُوكَ فِيمَا شَجَرَ بَيْنَهُمْ ثُمَّ لاَ يَجِدُواْ فِي أَنفُسِهِمْ حَرَجًا مِّمَّا قَضَيْتَ وَيُسَلِّمُواْ تَسْلِيمًا ﴿65﴾ وَلَوْ أَنَّا كَتَبْنَا عَلَيْهِمْ أَنِ اقْتُلُواْ أَنفُسَكُمْ أَوِ اخْرُجُواْ مِن دِيَارِكُم مَّا فَعَلُوهُ إِلاَّ قَلِيلٌ مِّنْهُمْ وَلَوْ أَنَّهُمْ فَعَلُواْ مَا يُوعَظُونَ بِهِ لَكَانَ خَيْرًا لَّهُمْ وَأَشَدَّ تَثْبِيتًا ﴿66﴾ وَإِذاً لَّآتَيْنَاهُم مِّن لَّدُنَّا أَجْراً عَظِيمًا ﴿67﴾ وَلَهَدَيْنَاهُمْ صِرَاطًا مُّسْتَقِيمًا ﴿68﴾ وَمَن يُطِعِ اللّهَ وَالرَّسُولَ فَأُوْلَئِكَ مَعَ الَّذِينَ أَنْعَمَ اللّهُ عَلَيْهِم مِّنَ النَّبِيِّينَ وَالصِّدِّيقِينَ وَالشُّهَدَاء وَالصَّالِحِينَ وَحَسُنَ أُولَئِكَ رَفِيقًا ﴿69﴾ ذَلِكَ الْفَضْلُ مِنَ اللّهِ وَكَفَى بِاللّهِ عَلِيمًا ﴿70﴾ يَا أَيُّهَا الَّذِينَ آمَنُواْ خُذُواْ حِذْرَكُمْ فَانفِرُواْ ثُبَاتٍ أَوِ انفِرُواْ جَمِيعًا ﴿71﴾ وَإِنَّ مِنكُمْ لَمَن لَّيُبَطِّئَنَّ فَإِنْ أَصَابَتْكُم مُّصِيبَةٌ قَالَ قَدْ أَنْعَمَ اللّهُ عَلَيَّ إِذْ لَمْ أَكُن مَّعَهُمْ شَهِيدًا ﴿72﴾ وَلَئِنْ أَصَابَكُمْ فَضْلٌ مِّنَ الله لَيَقُولَنَّ كَأَن لَّمْ تَكُن بَيْنَكُمْ وَبَيْنَهُ مَوَدَّةٌ يَا لَيتَنِي كُنتُ مَعَهُمْ فَأَفُوزَ فَوْزًا عَظِيمًا ﴿73﴾ فَلْيُقَاتِلْ فِي سَبِيلِ اللّهِ الَّذِينَ يَشْرُونَ الْحَيَاةَ الدُّنْيَا بِالآخِرَةِ وَمَن يُقَاتِلْ فِي سَبِيلِ اللّهِ فَيُقْتَلْ أَو يَغْلِبْ فَسَوْفَ نُؤْتِيهِ أَجْرًا عَظِيمًا ﴿74﴾ وَمَا لَكُمْ لاَ تُقَاتِلُونَ فِي سَبِيلِ اللّهِ وَالْمُسْتَضْعَفِينَ مِنَ الرِّجَالِ وَالنِّسَاء وَالْوِلْدَانِ الَّذِينَ يَقُولُونَ رَبَّنَا أَخْرِجْنَا مِنْ هَذِهِ الْقَرْيَةِ الظَّالِمِ أَهْلُهَا وَاجْعَل لَّنَا مِن لَّدُنكَ وَلِيًّا وَاجْعَل لَّنَا مِن لَّدُنكَ نَصِيرًا ﴿75﴾ الَّذِينَ آمَنُواْ يُقَاتِلُونَ فِي سَبِيلِ اللّهِ وَالَّذِينَ كَفَرُواْ يُقَاتِلُونَ فِي سَبِيلِ الطَّاغُوتِ فَقَاتِلُواْ أَوْلِيَاء الشَّيْطَانِ إِنَّ كَيْدَ الشَّيْطَانِ كَانَ ضَعِيفًا ﴿76﴾ أَلَمْ تَرَ إِلَى الَّذِينَ قِيلَ لَهُمْ كُفُّواْ أَيْدِيَكُمْ وَأَقِيمُواْ الصَّلاَةَ وَآتُواْ الزَّكَاةَ فَلَمَّا كُتِبَ عَلَيْهِمُ الْقِتَالُ إِذَا فَرِيقٌ مِّنْهُمْ يَخْشَوْنَ النَّاسَ كَخَشْيَةِ اللّهِ أَوْ أَشَدَّ خَشْيَةً وَقَالُواْ رَبَّنَا لِمَ كَتَبْتَ عَلَيْنَا الْقِتَالَ لَوْلا أَخَّرْتَنَا إِلَى أَجَلٍ قَرِيبٍ قُلْ مَتَاعُ الدَّنْيَا قَلِيلٌ وَالآخِرَةُ خَيْرٌ لِّمَنِ اتَّقَى وَلاَ تُظْلَمُونَ فَتِيلاً ﴿77﴾ أَيْنَمَا تَكُونُواْ يُدْرِككُّمُ الْمَوْتُ وَلَوْ كُنتُمْ فِي بُرُوجٍ مُّشَيَّدَةٍ وَإِن تُصِبْهُمْ حَسَنَةٌ يَقُولُواْ هَذِهِ مِنْ عِندِ اللّهِ وَإِن تُصِبْهُمْ سَيِّئَةٌ يَقُولُواْ هَذِهِ مِنْ عِندِكَ قُلْ كُلًّ مِّنْ عِندِ اللّهِ فَمَا لِهَؤُلاء الْقَوْمِ لاَ يَكَادُونَ يَفْقَهُونَ حَدِيثًا ﴿78﴾ مَّا أَصَابَكَ مِنْ حَسَنَةٍ فَمِنَ اللّهِ وَمَا أَصَابَكَ مِن سَيِّئَةٍ فَمِن نَّفْسِكَ وَأَرْسَلْنَاكَ لِلنَّاسِ رَسُولاً وَكَفَى بِاللّهِ شَهِيدًا ﴿79﴾ مَّنْ يُطِعِ الرَّسُولَ فَقَدْ أَطَاعَ اللّهَ وَمَن تَوَلَّى فَمَا أَرْسَلْنَاكَ عَلَيْهِمْ حَفِيظًا ﴿80﴾ وَيَقُولُونَ طَاعَةٌ فَإِذَا بَرَزُواْ مِنْ عِندِكَ بَيَّتَ طَآئِفَةٌ مِّنْهُمْ غَيْرَ الَّذِي تَقُولُ وَاللّهُ يَكْتُبُ مَا يُبَيِّتُونَ فَأَعْرِضْ عَنْهُمْ وَتَوَكَّلْ عَلَى اللّهِ وَكَفَى بِاللّهِ وَكِيلاً ﴿81﴾ أَفَلاَ يَتَدَبَّرُونَ الْقُرْآنَ وَلَوْ كَانَ مِنْ عِندِ غَيْرِ اللّهِ لَوَجَدُواْ فِيهِ اخْتِلاَفًا كَثِيرًا ﴿82﴾ وَإِذَا جَاءهُمْ أَمْرٌ مِّنَ الأَمْنِ أَوِ الْخَوْفِ أَذَاعُواْ بِهِ وَلَوْ رَدُّوهُ إِلَى الرَّسُولِ وَإِلَى أُوْلِي الأَمْرِ مِنْهُمْ لَعَلِمَهُ الَّذِينَ يَسْتَنبِطُونَهُ مِنْهُمْ وَلَوْلاَ فَضْلُ اللّهِ عَلَيْكُمْ وَرَحْمَتُهُ لاَتَّبَعْتُمُ الشَّيْطَانَ إِلاَّ قَلِيلاً ﴿83﴾ فَقَاتِلْ فِي سَبِيلِ اللّهِ لاَ تُكَلَّفُ إِلاَّ نَفْسَكَ وَحَرِّضِ الْمُؤْمِنِينَ عَسَى اللّهُ أَن يَكُفَّ بَأْسَ الَّذِينَ كَفَرُواْ وَاللّهُ أَشَدُّ بَأْسًا وَأَشَدُّ تَنكِيلاً ﴿84﴾ مَّن يَشْفَعْ شَفَاعَةً حَسَنَةً يَكُن لَّهُ نَصِيبٌ مِّنْهَا وَمَن يَشْفَعْ شَفَاعَةً سَيِّئَةً يَكُن لَّهُ كِفْلٌ مِّنْهَا وَكَانَ اللّهُ عَلَى كُلِّ شَيْءٍ مُّقِيتًا ﴿85﴾ وَإِذَا حُيِّيْتُم بِتَحِيَّةٍ فَحَيُّواْ بِأَحْسَنَ مِنْهَا أَوْ رُدُّوهَا إِنَّ اللّهَ كَانَ عَلَى كُلِّ شَيْءٍ حَسِيبًا ﴿86﴾ اللّهُ لا إِلَهَ إِلاَّ هُوَ لَيَجْمَعَنَّكُمْ إِلَى يَوْمِ الْقِيَامَةِ لاَ رَيْبَ فِيهِ وَمَنْ أَصْدَقُ مِنَ اللّهِ حَدِيثًا ﴿87﴾ فَمَا لَكُمْ فِي الْمُنَافِقِينَ فِئَتَيْنِ وَاللّهُ أَرْكَسَهُم بِمَا كَسَبُواْ أَتُرِيدُونَ أَن تَهْدُواْ مَنْ أَضَلَّ اللّهُ وَمَن يُضْلِلِ اللّهُ فَلَن تَجِدَ لَهُ سَبِيلاً ﴿88﴾ وَدُّواْ لَوْ تَكْفُرُونَ كَمَا كَفَرُواْ فَتَكُونُونَ سَوَاء فَلاَ تَتَّخِذُواْ مِنْهُمْ أَوْلِيَاء حَتَّىَ يُهَاجِرُواْ فِي سَبِيلِ اللّهِ فَإِن تَوَلَّوْاْ فَخُذُوهُمْ وَاقْتُلُوهُمْ حَيْثُ وَجَدتَّمُوهُمْ وَلاَ تَتَّخِذُواْ مِنْهُمْ وَلِيًّا وَلاَ نَصِيرًا ﴿89﴾ إِلاَّ الَّذِينَ يَصِلُونَ إِلَىَ قَوْمٍ بَيْنَكُمْ وَبَيْنَهُم مِّيثَاقٌ أَوْ جَآؤُوكُمْ حَصِرَتْ صُدُورُهُمْ أَن يُقَاتِلُوكُمْ أَوْ يُقَاتِلُواْ قَوْمَهُمْ وَلَوْ شَاء اللّهُ لَسَلَّطَهُمْ عَلَيْكُمْ فَلَقَاتَلُوكُمْ فَإِنِ اعْتَزَلُوكُمْ فَلَمْ يُقَاتِلُوكُمْ وَأَلْقَوْاْ إِلَيْكُمُ السَّلَمَ فَمَا جَعَلَ اللّهُ لَكُمْ عَلَيْهِمْ سَبِيلاً ﴿90﴾ سَتَجِدُونَ آخَرِينَ يُرِيدُونَ أَن يَأْمَنُوكُمْ وَيَأْمَنُواْ قَوْمَهُمْ كُلَّ مَا رُدُّوَاْ إِلَى الْفِتْنِةِ أُرْكِسُواْ فِيِهَا فَإِن لَّمْ يَعْتَزِلُوكُمْ وَيُلْقُواْ إِلَيْكُمُ السَّلَمَ وَيَكُفُّوَاْ أَيْدِيَهُمْ فَخُذُوهُمْ وَاقْتُلُوهُمْ حَيْثُ ثِقِفْتُمُوهُمْ وَأُوْلَئِكُمْ جَعَلْنَا لَكُمْ عَلَيْهِمْ سُلْطَانًا مُّبِينًا ﴿91﴾ وَمَا كَانَ لِمُؤْمِنٍ أَن يَقْتُلَ مُؤْمِنًا إِلاَّ خَطَئًا وَمَن قَتَلَ مُؤْمِنًا خَطَئًا فَتَحْرِيرُ رَقَبَةٍ مُّؤْمِنَةٍ وَدِيَةٌ مُّسَلَّمَةٌ إِلَى أَهْلِهِ إِلاَّ أَن يَصَّدَّقُواْ فَإِن كَانَ مِن قَوْمٍ عَدُوٍّ لَّكُمْ وَهُوَ مْؤْمِنٌ فَتَحْرِيرُ رَقَبَةٍ مُّؤْمِنَةٍ وَإِن كَانَ مِن قَوْمٍ بَيْنَكُمْ وَبَيْنَهُمْ مِّيثَاقٌ فَدِيَةٌ مُّسَلَّمَةٌ إِلَى أَهْلِهِ وَتَحْرِيرُ رَقَبَةٍ مُّؤْمِنَةً فَمَن لَّمْ يَجِدْ فَصِيَامُ شَهْرَيْنِ مُتَتَابِعَيْنِ تَوْبَةً مِّنَ اللّهِ وَكَانَ اللّهُ عَلِيمًا حَكِيمًا ﴿92﴾ وَمَن يَقْتُلْ مُؤْمِنًا مُّتَعَمِّدًا فَجَزَآؤُهُ جَهَنَّمُ خَالِدًا فِيهَا وَغَضِبَ اللّهُ عَلَيْهِ وَلَعَنَهُ وَأَعَدَّ لَهُ عَذَابًا عَظِيمًا ﴿93﴾ يَا أَيُّهَا الَّذِينَ آمَنُواْ إِذَا ضَرَبْتُمْ فِي سَبِيلِ اللّهِ فَتَبَيَّنُواْ وَلاَ تَقُولُواْ لِمَنْ أَلْقَى إِلَيْكُمُ السَّلاَمَ لَسْتَ مُؤْمِنًا تَبْتَغُونَ عَرَضَ الْحَيَاةِ الدُّنْيَا فَعِندَ اللّهِ مَغَانِمُ كَثِيرَةٌ كَذَلِكَ كُنتُم مِّن قَبْلُ فَمَنَّ اللّهُ عَلَيْكُمْ فَتَبَيَّنُواْ إِنَّ اللّهَ كَانَ بِمَا تَعْمَلُونَ خَبِيرًا ﴿94﴾ لاَّ يَسْتَوِي الْقَاعِدُونَ مِنَ الْمُؤْمِنِينَ غَيْرُ أُوْلِي الضَّرَرِ وَالْمُجَاهِدُونَ فِي سَبِيلِ اللّهِ بِأَمْوَالِهِمْ وَأَنفُسِهِمْ فَضَّلَ اللّهُ الْمُجَاهِدِينَ بِأَمْوَالِهِمْ وَأَنفُسِهِمْ عَلَى الْقَاعِدِينَ دَرَجَةً وَكُلاًّ وَعَدَ اللّهُ الْحُسْنَى وَفَضَّلَ اللّهُ الْمُجَاهِدِينَ عَلَى الْقَاعِدِينَ أَجْرًا عَظِيمًا ﴿95﴾ دَرَجَاتٍ مِّنْهُ وَمَغْفِرَةً وَرَحْمَةً وَكَانَ اللّهُ غَفُورًا رَّحِيمًا ﴿96﴾ إِنَّ الَّذِينَ تَوَفَّاهُمُ الْمَلآئِكَةُ ظَالِمِي أَنْفُسِهِمْ قَالُواْ فِيمَ كُنتُمْ قَالُواْ كُنَّا مُسْتَضْعَفِينَ فِي الأَرْضِ قَالْوَاْ أَلَمْ تَكُنْ أَرْضُ اللّهِ وَاسِعَةً فَتُهَاجِرُواْ فِيهَا فَأُوْلَئِكَ مَأْوَاهُمْ جَهَنَّمُ وَسَاءتْ مَصِيرًا ﴿97﴾ إِلاَّ الْمُسْتَضْعَفِينَ مِنَ الرِّجَالِ وَالنِّسَاء وَالْوِلْدَانِ لاَ يَسْتَطِيعُونَ حِيلَةً وَلاَ يَهْتَدُونَ سَبِيلاً ﴿98﴾ فَأُوْلَئِكَ عَسَى اللّهُ أَن يَعْفُوَ عَنْهُمْ وَكَانَ اللّهُ عَفُوًّا غَفُورًا ﴿99﴾ وَمَن يُهَاجِرْ فِي سَبِيلِ اللّهِ يَجِدْ فِي الأَرْضِ مُرَاغَمًا كَثِيرًا وَسَعَةً وَمَن يَخْرُجْ مِن بَيْتِهِ مُهَاجِرًا إِلَى اللّهِ وَرَسُولِهِ ثُمَّ يُدْرِكْهُ الْمَوْتُ فَقَدْ وَقَعَ أَجْرُهُ عَلى اللّهِ وَكَانَ اللّهُ غَفُورًا رَّحِيمًا ﴿100﴾ وَإِذَا ضَرَبْتُمْ فِي الأَرْضِ فَلَيْسَ عَلَيْكُمْ جُنَاحٌ أَن تَقْصُرُواْ مِنَ الصَّلاَةِ إِنْ خِفْتُمْ أَن يَفْتِنَكُمُ الَّذِينَ كَفَرُواْ إِنَّ الْكَافِرِينَ كَانُواْ لَكُمْ عَدُوًّا مُّبِينًا ﴿101﴾ وَإِذَا كُنتَ فِيهِمْ فَأَقَمْتَ لَهُمُ الصَّلاَةَ فَلْتَقُمْ طَآئِفَةٌ مِّنْهُم مَّعَكَ وَلْيَأْخُذُواْ أَسْلِحَتَهُمْ فَإِذَا سَجَدُواْ فَلْيَكُونُواْ مِن وَرَآئِكُمْ وَلْتَأْتِ طَآئِفَةٌ أُخْرَى لَمْ يُصَلُّواْ فَلْيُصَلُّواْ مَعَكَ وَلْيَأْخُذُواْ حِذْرَهُمْ وَأَسْلِحَتَهُمْ وَدَّ الَّذِينَ كَفَرُواْ لَوْ تَغْفُلُونَ عَنْ أَسْلِحَتِكُمْ وَأَمْتِعَتِكُمْ فَيَمِيلُونَ عَلَيْكُم مَّيْلَةً وَاحِدَةً وَلاَ جُنَاحَ عَلَيْكُمْ إِن كَانَ بِكُمْ أَذًى مِّن مَّطَرٍ أَوْ كُنتُم مَّرْضَى أَن تَضَعُواْ أَسْلِحَتَكُمْ وَخُذُواْ حِذْرَكُمْ إِنَّ اللّهَ أَعَدَّ لِلْكَافِرِينَ عَذَابًا مُّهِينًا ﴿102﴾ فَإِذَا قَضَيْتُمُ الصَّلاَةَ فَاذْكُرُواْ اللّهَ قِيَامًا وَقُعُودًا وَعَلَى جُنُوبِكُمْ فَإِذَا اطْمَأْنَنتُمْ فَأَقِيمُواْ الصَّلاَةَ إِنَّ الصَّلاَةَ كَانَتْ عَلَى الْمُؤْمِنِينَ كِتَابًا مَّوْقُوتًا ﴿103﴾ وَلاَ تَهِنُواْ فِي ابْتِغَاء الْقَوْمِ إِن تَكُونُواْ تَأْلَمُونَ فَإِنَّهُمْ يَأْلَمُونَ كَمَا تَأْلَمونَ وَتَرْجُونَ مِنَ اللّهِ مَا لاَ يَرْجُونَ وَكَانَ اللّهُ عَلِيمًا حَكِيمًا ﴿104﴾ إِنَّا أَنزَلْنَا إِلَيْكَ الْكِتَابَ بِالْحَقِّ لِتَحْكُمَ بَيْنَ النَّاسِ بِمَا أَرَاكَ اللّهُ وَلاَ تَكُن لِّلْخَآئِنِينَ خَصِيمًا ﴿105﴾ وَاسْتَغْفِرِ اللّهِ إِنَّ اللّهَ كَانَ غَفُورًا رَّحِيمًا ﴿106﴾ وَلاَ تُجَادِلْ عَنِ الَّذِينَ يَخْتَانُونَ أَنفُسَهُمْ إِنَّ اللّهَ لاَ يُحِبُّ مَن كَانَ خَوَّانًا أَثِيمًا ﴿107﴾ يَسْتَخْفُونَ مِنَ النَّاسِ وَلاَ يَسْتَخْفُونَ مِنَ اللّهِ وَهُوَ مَعَهُمْ إِذْ يُبَيِّتُونَ مَا لاَ يَرْضَى مِنَ الْقَوْلِ وَكَانَ اللّهُ بِمَا يَعْمَلُونَ مُحِيطًا ﴿108﴾ هَاأَنتُمْ هَؤُلاء جَادَلْتُمْ عَنْهُمْ فِي الْحَيَاةِ الدُّنْيَا فَمَن يُجَادِلُ اللّهَ عَنْهُمْ يَوْمَ الْقِيَامَةِ أَم مَّن يَكُونُ عَلَيْهِمْ وَكِيلاً ﴿109﴾ وَمَن يَعْمَلْ سُوءًا أَوْ يَظْلِمْ نَفْسَهُ ثُمَّ يَسْتَغْفِرِ اللّهَ يَجِدِ اللّهَ غَفُورًا رَّحِيمًا ﴿110﴾ وَمَن يَكْسِبْ إِثْمًا فَإِنَّمَا يَكْسِبُهُ عَلَى نَفْسِهِ وَكَانَ اللّهُ عَلِيمًا حَكِيمًا ﴿111﴾ وَمَن يَكْسِبْ خَطِيئَةً أَوْ إِثْمًا ثُمَّ يَرْمِ بِهِ بَرِيئًا فَقَدِ احْتَمَلَ بُهْتَانًا وَإِثْمًا مُّبِينًا ﴿112﴾ وَلَوْلاَ فَضْلُ اللّهِ عَلَيْكَ وَرَحْمَتُهُ لَهَمَّت طَّآئِفَةٌ مُّنْهُمْ أَن يُضِلُّوكَ وَمَا يُضِلُّونَ إِلاُّ أَنفُسَهُمْ وَمَا يَضُرُّونَكَ مِن شَيْءٍ وَأَنزَلَ اللّهُ عَلَيْكَ الْكِتَابَ وَالْحِكْمَةَ وَعَلَّمَكَ مَا لَمْ تَكُنْ تَعْلَمُ وَكَانَ فَضْلُ اللّهِ عَلَيْكَ عَظِيمًا ﴿113﴾ لاَّ خَيْرَ فِي كَثِيرٍ مِّن نَّجْوَاهُمْ إِلاَّ مَنْ أَمَرَ بِصَدَقَةٍ أَوْ مَعْرُوفٍ أَوْ إِصْلاَحٍ بَيْنَ النَّاسِ وَمَن يَفْعَلْ ذَلِكَ ابْتَغَاء مَرْضَاتِ اللّهِ فَسَوْفَ نُؤْتِيهِ أَجْرًا عَظِيمًا ﴿114﴾ وَمَن يُشَاقِقِ الرَّسُولَ مِن بَعْدِ مَا تَبَيَّنَ لَهُ الْهُدَى وَيَتَّبِعْ غَيْرَ سَبِيلِ الْمُؤْمِنِينَ نُوَلِّهِ مَا تَوَلَّى وَنُصْلِهِ جَهَنَّمَ وَسَاءتْ مَصِيرًا ﴿115﴾ إِنَّ اللّهَ لاَ يَغْفِرُ أَن يُشْرَكَ بِهِ وَيَغْفِرُ مَا دُونَ ذَلِكَ لِمَن يَشَاء وَمَن يُشْرِكْ بِاللّهِ فَقَدْ ضَلَّ ضَلاَلاً بَعِيدًا ﴿116﴾ إِن يَدْعُونَ مِن دُونِهِ إِلاَّ إِنَاثًا وَإِن يَدْعُونَ إِلاَّ شَيْطَانًا مَّرِيدًا ﴿117﴾ لَّعَنَهُ اللّهُ وَقَالَ لَأَتَّخِذَنَّ مِنْ عِبَادِكَ نَصِيبًا مَّفْرُوضًا ﴿118﴾ وَلأُضِلَّنَّهُمْ وَلأُمَنِّيَنَّهُمْ وَلآمُرَنَّهُمْ فَلَيُبَتِّكُنَّ آذَانَ الأَنْعَامِ وَلآمُرَنَّهُمْ فَلَيُغَيِّرُنَّ خَلْقَ اللّهِ وَمَن يَتَّخِذِ الشَّيْطَانَ وَلِيًّا مِّن دُونِ اللّهِ فَقَدْ خَسِرَ خُسْرَانًا مُّبِينًا ﴿119﴾ يَعِدُهُمْ وَيُمَنِّيهِمْ وَمَا يَعِدُهُمُ الشَّيْطَانُ إِلاَّ غُرُورًا ﴿120﴾ أُوْلَئِكَ مَأْوَاهُمْ جَهَنَّمُ وَلاَ يَجِدُونَ عَنْهَا مَحِيصًا ﴿121﴾ وَالَّذِينَ آمَنُواْ وَعَمِلُواْ الصَّالِحَاتِ سَنُدْخِلُهُمْ جَنَّاتٍ تَجْرِي مِن تَحْتِهَا الأَنْهَارُ خَالِدِينَ فِيهَا أَبَدًا وَعْدَ اللّهِ حَقًّا وَمَنْ أَصْدَقُ مِنَ اللّهِ قِيلاً ﴿122﴾ لَّيْسَ بِأَمَانِيِّكُمْ وَلا أَمَانِيِّ أَهْلِ الْكِتَابِ مَن يَعْمَلْ سُوءًا يُجْزَ بِهِ وَلاَ يَجِدْ لَهُ مِن دُونِ اللّهِ وَلِيًّا وَلاَ نَصِيرًا ﴿123﴾ وَمَن يَعْمَلْ مِنَ الصَّالِحَاتَ مِن ذَكَرٍ أَوْ أُنثَى وَهُوَ مُؤْمِنٌ فَأُوْلَئِكَ يَدْخُلُونَ الْجَنَّةَ وَلاَ يُظْلَمُونَ نَقِيرًا ﴿124﴾ وَمَنْ أَحْسَنُ دِينًا مِّمَّنْ أَسْلَمَ وَجْهَهُ لله وَهُوَ مُحْسِنٌ واتَّبَعَ مِلَّةَ إِبْرَاهِيمَ حَنِيفًا وَاتَّخَذَ اللّهُ إِبْرَاهِيمَ خَلِيلاً ﴿125﴾ وَللّهِ مَا فِي السَّمَاوَاتِ وَمَا فِي الأَرْضِ وَكَانَ اللّهُ بِكُلِّ شَيْءٍ مُّحِيطًا ﴿126﴾ وَيَسْتَفْتُونَكَ فِي النِّسَاء قُلِ اللّهُ يُفْتِيكُمْ فِيهِنَّ وَمَا يُتْلَى عَلَيْكُمْ فِي الْكِتَابِ فِي يَتَامَى النِّسَاء الَّلاتِي لاَ تُؤْتُونَهُنَّ مَا كُتِبَ لَهُنَّ وَتَرْغَبُونَ أَن تَنكِحُوهُنَّ وَالْمُسْتَضْعَفِينَ مِنَ الْوِلْدَانِ وَأَن تَقُومُواْ لِلْيَتَامَى بِالْقِسْطِ وَمَا تَفْعَلُواْ مِنْ خَيْرٍ فَإِنَّ اللّهَ كَانَ بِهِ عَلِيمًا ﴿127﴾ وَإِنِ امْرَأَةٌ خَافَتْ مِن بَعْلِهَا نُشُوزًا أَوْ إِعْرَاضًا فَلاَ جُنَاْحَ عَلَيْهِمَا أَن يُصْلِحَا بَيْنَهُمَا صُلْحًا وَالصُّلْحُ خَيْرٌ وَأُحْضِرَتِ الأَنفُسُ الشُّحَّ وَإِن تُحْسِنُواْ وَتَتَّقُواْ فَإِنَّ اللّهَ كَانَ بِمَا تَعْمَلُونَ خَبِيرًا ﴿128﴾ وَلَن تَسْتَطِيعُواْ أَن تَعْدِلُواْ بَيْنَ النِّسَاء وَلَوْ حَرَصْتُمْ فَلاَ تَمِيلُواْ كُلَّ الْمَيْلِ فَتَذَرُوهَا كَالْمُعَلَّقَةِ وَإِن تُصْلِحُواْ وَتَتَّقُواْ فَإِنَّ اللّهَ كَانَ غَفُورًا رَّحِيمًا ﴿129﴾ وَإِن يَتَفَرَّقَا يُغْنِ اللّهُ كُلاًّ مِّن سَعَتِهِ وَكَانَ اللّهُ وَاسِعًا حَكِيمًا ﴿130﴾ وَللّهِ مَا فِي السَّمَاوَاتِ وَمَا فِي الأَرْضِ وَلَقَدْ وَصَّيْنَا الَّذِينَ أُوتُواْ الْكِتَابَ مِن قَبْلِكُمْ وَإِيَّاكُمْ أَنِ اتَّقُواْ اللّهَ وَإِن تَكْفُرُواْ فَإِنَّ لِلّهِ مَا فِي السَّمَاوَاتِ وَمَا فِي الأَرْضِ وَكَانَ اللّهُ غَنِيًّا حَمِيدًا ﴿131﴾ وَلِلّهِ مَا فِي السَّمَاوَاتِ وَمَا فِي الأَرْضِ وَكَفَى بِاللّهِ وَكِيلاً ﴿132﴾ إِن يَشَأْ يُذْهِبْكُمْ أَيُّهَا النَّاسُ وَيَأْتِ بِآخَرِينَ وَكَانَ اللّهُ عَلَى ذَلِكَ قَدِيرًا ﴿133﴾ مَّن كَانَ يُرِيدُ ثَوَابَ الدُّنْيَا فَعِندَ اللّهِ ثَوَابُ الدُّنْيَا وَالآخِرَةِ وَكَانَ اللّهُ سَمِيعًا بَصِيرًا ﴿134﴾ يَا أَيُّهَا الَّذِينَ آمَنُواْ كُونُواْ قَوَّامِينَ بِالْقِسْطِ شُهَدَاء لِلّهِ وَلَوْ عَلَى أَنفُسِكُمْ أَوِ الْوَالِدَيْنِ وَالأَقْرَبِينَ إِن يَكُنْ غَنِيًّا أَوْ فَقَيرًا فَاللّهُ أَوْلَى بِهِمَا فَلاَ تَتَّبِعُواْ الْهَوَى أَن تَعْدِلُواْ وَإِن تَلْوُواْ أَوْ تُعْرِضُواْ فَإِنَّ اللّهَ كَانَ بِمَا تَعْمَلُونَ خَبِيرًا ﴿135﴾ يَا أَيُّهَا الَّذِينَ آمَنُواْ آمِنُواْ بِاللّهِ وَرَسُولِهِ وَالْكِتَابِ الَّذِي نَزَّلَ عَلَى رَسُولِهِ وَالْكِتَابِ الَّذِيَ أَنزَلَ مِن قَبْلُ وَمَن يَكْفُرْ بِاللّهِ وَمَلاَئِكَتِهِ وَكُتُبِهِ وَرُسُلِهِ وَالْيَوْمِ الآخِرِ فَقَدْ ضَلَّ ضَلاَلاً بَعِيدًا ﴿136﴾ إِنَّ الَّذِينَ آمَنُواْ ثُمَّ كَفَرُواْ ثُمَّ آمَنُواْ ثُمَّ كَفَرُواْ ثُمَّ ازْدَادُواْ كُفْرًا لَّمْ يَكُنِ اللّهُ لِيَغْفِرَ لَهُمْ وَلاَ لِيَهْدِيَهُمْ سَبِيلاً ﴿137﴾ بَشِّرِ الْمُنَافِقِينَ بِأَنَّ لَهُمْ عَذَابًا أَلِيمًا ﴿138﴾ الَّذِينَ يَتَّخِذُونَ الْكَافِرِينَ أَوْلِيَاء مِن دُونِ الْمُؤْمِنِينَ أَيَبْتَغُونَ عِندَهُمُ الْعِزَّةَ فَإِنَّ العِزَّةَ لِلّهِ جَمِيعًا ﴿139﴾ وَقَدْ نَزَّلَ عَلَيْكُمْ فِي الْكِتَابِ أَنْ إِذَا سَمِعْتُمْ آيَاتِ اللّهِ يُكَفَرُ بِهَا وَيُسْتَهْزَأُ بِهَا فَلاَ تَقْعُدُواْ مَعَهُمْ حَتَّى يَخُوضُواْ فِي حَدِيثٍ غَيْرِهِ إِنَّكُمْ إِذًا مِّثْلُهُمْ إِنَّ اللّهَ جَامِعُ الْمُنَافِقِينَ وَالْكَافِرِينَ فِي جَهَنَّمَ جَمِيعًا ﴿140﴾ الَّذِينَ يَتَرَبَّصُونَ بِكُمْ فَإِن كَانَ لَكُمْ فَتْحٌ مِّنَ اللّهِ قَالُواْ أَلَمْ نَكُن مَّعَكُمْ وَإِن كَانَ لِلْكَافِرِينَ نَصِيبٌ قَالُواْ أَلَمْ نَسْتَحْوِذْ عَلَيْكُمْ وَنَمْنَعْكُم مِّنَ الْمُؤْمِنِينَ فَاللّهُ يَحْكُمُ بَيْنَكُمْ يَوْمَ الْقِيَامَةِ وَلَن يَجْعَلَ اللّهُ لِلْكَافِرِينَ عَلَى الْمُؤْمِنِينَ سَبِيلاً ﴿141﴾ إِنَّ الْمُنَافِقِينَ يُخَادِعُونَ اللّهَ وَهُوَ خَادِعُهُمْ وَإِذَا قَامُواْ إِلَى الصَّلاَةِ قَامُواْ كُسَالَى يُرَآؤُونَ النَّاسَ وَلاَ يَذْكُرُونَ اللّهَ إِلاَّ قَلِيلاً ﴿142﴾ مُّذَبْذَبِينَ بَيْنَ ذَلِكَ لاَ إِلَى هَؤُلاء وَلاَ إِلَى هَؤُلاء وَمَن يُضْلِلِ اللّهُ فَلَن تَجِدَ لَهُ سَبِيلاً ﴿143﴾ يَا أَيُّهَا الَّذِينَ آمَنُواْ لاَ تَتَّخِذُواْ الْكَافِرِينَ أَوْلِيَاء مِن دُونِ الْمُؤْمِنِينَ أَتُرِيدُونَ أَن تَجْعَلُواْ لِلّهِ عَلَيْكُمْ سُلْطَانًا مُّبِينًا ﴿144﴾ إِنَّ الْمُنَافِقِينَ فِي الدَّرْكِ الأَسْفَلِ مِنَ النَّارِ وَلَن تَجِدَ لَهُمْ نَصِيرًا ﴿145﴾ إِلاَّ الَّذِينَ تَابُواْ وَأَصْلَحُواْ وَاعْتَصَمُواْ بِاللّهِ وَأَخْلَصُواْ دِينَهُمْ لِلّهِ فَأُوْلَئِكَ مَعَ الْمُؤْمِنِينَ وَسَوْفَ يُؤْتِ اللّهُ الْمُؤْمِنِينَ أَجْرًا عَظِيمًا ﴿146﴾ مَّا يَفْعَلُ اللّهُ بِعَذَابِكُمْ إِن شَكَرْتُمْ وَآمَنتُمْ وَكَانَ اللّهُ شَاكِرًا عَلِيمًا ﴿147﴾ لاَّ يُحِبُّ اللّهُ الْجَهْرَ بِالسُّوَءِ مِنَ الْقَوْلِ إِلاَّ مَن ظُلِمَ وَكَانَ اللّهُ سَمِيعًا عَلِيمًا ﴿148﴾ إِن تُبْدُواْ خَيْرًا أَوْ تُخْفُوهُ أَوْ تَعْفُواْ عَن سُوَءٍ فَإِنَّ اللّهَ كَانَ عَفُوًّا قَدِيرًا ﴿149﴾ إِنَّ الَّذِينَ يَكْفُرُونَ بِاللّهِ وَرُسُلِهِ وَيُرِيدُونَ أَن يُفَرِّقُواْ بَيْنَ اللّهِ وَرُسُلِهِ وَيقُولُونَ نُؤْمِنُ بِبَعْضٍ وَنَكْفُرُ بِبَعْضٍ وَيُرِيدُونَ أَن يَتَّخِذُواْ بَيْنَ ذَلِكَ سَبِيلاً ﴿150﴾ أُوْلَئِكَ هُمُ الْكَافِرُونَ حَقًّا وَأَعْتَدْنَا لِلْكَافِرِينَ عَذَابًا مُّهِينًا ﴿151﴾ وَالَّذِينَ آمَنُواْ بِاللّهِ وَرُسُلِهِ وَلَمْ يُفَرِّقُواْ بَيْنَ أَحَدٍ مِّنْهُمْ أُوْلَئِكَ سَوْفَ يُؤْتِيهِمْ أُجُورَهُمْ وَكَانَ اللّهُ غَفُورًا رَّحِيمًا ﴿152﴾ يَسْأَلُكَ أَهْلُ الْكِتَابِ أَن تُنَزِّلَ عَلَيْهِمْ كِتَابًا مِّنَ السَّمَاء فَقَدْ سَأَلُواْ مُوسَى أَكْبَرَ مِن ذَلِكَ فَقَالُواْ أَرِنَا اللّهِ جَهْرَةً فَأَخَذَتْهُمُ الصَّاعِقَةُ بِظُلْمِهِمْ ثُمَّ اتَّخَذُواْ الْعِجْلَ مِن بَعْدِ مَا جَاءتْهُمُ الْبَيِّنَاتُ فَعَفَوْنَا عَن ذَلِكَ وَآتَيْنَا مُوسَى سُلْطَانًا مُّبِينًا ﴿153﴾ وَرَفَعْنَا فَوْقَهُمُ الطُّورَ بِمِيثَاقِهِمْ وَقُلْنَا لَهُمُ ادْخُلُواْ الْبَابَ سُجَّدًا وَقُلْنَا لَهُمْ لاَ تَعْدُواْ فِي السَّبْتِ وَأَخَذْنَا مِنْهُم مِّيثَاقًا غَلِيظًا ﴿154﴾ فَبِمَا نَقْضِهِم مِّيثَاقَهُمْ وَكُفْرِهِم بَآيَاتِ اللّهِ وَقَتْلِهِمُ الأَنْبِيَاء بِغَيْرِ حَقًّ وَقَوْلِهِمْ قُلُوبُنَا غُلْفٌ بَلْ طَبَعَ اللّهُ عَلَيْهَا بِكُفْرِهِمْ فَلاَ يُؤْمِنُونَ إِلاَّ قَلِيلاً ﴿155﴾ وَبِكُفْرِهِمْ وَقَوْلِهِمْ عَلَى مَرْيَمَ بُهْتَانًا عَظِيمًا ﴿156﴾ وَقَوْلِهِمْ إِنَّا قَتَلْنَا الْمَسِيحَ عِيسَى ابْنَ مَرْيَمَ رَسُولَ اللّهِ وَمَا قَتَلُوهُ وَمَا صَلَبُوهُ وَلَكِن شُبِّهَ لَهُمْ وَإِنَّ الَّذِينَ اخْتَلَفُواْ فِيهِ لَفِي شَكٍّ مِّنْهُ مَا لَهُم بِهِ مِنْ عِلْمٍ إِلاَّ اتِّبَاعَ الظَّنِّ وَمَا قَتَلُوهُ يَقِينًا ﴿157﴾ بَل رَّفَعَهُ اللّهُ إِلَيْهِ وَكَانَ اللّهُ عَزِيزًا حَكِيمًا ﴿158﴾ وَإِن مِّنْ أَهْلِ الْكِتَابِ إِلاَّ لَيُؤْمِنَنَّ بِهِ قَبْلَ مَوْتِهِ وَيَوْمَ الْقِيَامَةِ يَكُونُ عَلَيْهِمْ شَهِيدًا ﴿159﴾ فَبِظُلْمٍ مِّنَ الَّذِينَ هَادُواْ حَرَّمْنَا عَلَيْهِمْ طَيِّبَاتٍ أُحِلَّتْ لَهُمْ وَبِصَدِّهِمْ عَن سَبِيلِ اللّهِ كَثِيرًا ﴿160﴾ وَأَخْذِهِمُ الرِّبَا وَقَدْ نُهُواْ عَنْهُ وَأَكْلِهِمْ أَمْوَالَ النَّاسِ بِالْبَاطِلِ وَأَعْتَدْنَا لِلْكَافِرِينَ مِنْهُمْ عَذَابًا أَلِيمًا ﴿161﴾ لَّكِنِ الرَّاسِخُونَ فِي الْعِلْمِ مِنْهُمْ وَالْمُؤْمِنُونَ يُؤْمِنُونَ بِمَا أُنزِلَ إِلَيكَ وَمَا أُنزِلَ مِن قَبْلِكَ وَالْمُقِيمِينَ الصَّلاَةَ وَالْمُؤْتُونَ الزَّكَاةَ وَالْمُؤْمِنُونَ بِاللّهِ وَالْيَوْمِ الآخِرِ أُوْلَئِكَ سَنُؤْتِيهِمْ أَجْرًا عَظِيمًا ﴿162﴾ إِنَّا أَوْحَيْنَا إِلَيْكَ كَمَا أَوْحَيْنَا إِلَى نُوحٍ وَالنَّبِيِّينَ مِن بَعْدِهِ وَأَوْحَيْنَا إِلَى إِبْرَاهِيمَ وَإِسْمَاعِيلَ وَإْسْحَقَ وَيَعْقُوبَ وَالأَسْبَاطِ وَعِيسَى وَأَيُّوبَ وَيُونُسَ وَهَارُونَ وَسُلَيْمَانَ وَآتَيْنَا دَاوُودَ زَبُورًا ﴿163﴾ وَرُسُلاً قَدْ قَصَصْنَاهُمْ عَلَيْكَ مِن قَبْلُ وَرُسُلاً لَّمْ نَقْصُصْهُمْ عَلَيْكَ وَكَلَّمَ اللّهُ مُوسَى تَكْلِيمًا ﴿164﴾ رُّسُلاً مُّبَشِّرِينَ وَمُنذِرِينَ لِئَلاَّ يَكُونَ لِلنَّاسِ عَلَى اللّهِ حُجَّةٌ بَعْدَ الرُّسُلِ وَكَانَ اللّهُ عَزِيزًا حَكِيمًا ﴿165﴾ لَّكِنِ اللّهُ يَشْهَدُ بِمَا أَنزَلَ إِلَيْكَ أَنزَلَهُ بِعِلْمِهِ وَالْمَلآئِكَةُ يَشْهَدُونَ وَكَفَى بِاللّهِ شَهِيدًا ﴿166﴾ إِنَّ الَّذِينَ كَفَرُواْ وَصَدُّواْ عَن سَبِيلِ اللّهِ قَدْ ضَلُّواْ ضَلاَلاً بَعِيدًا ﴿167﴾ إِنَّ الَّذِينَ كَفَرُواْ وَظَلَمُواْ لَمْ يَكُنِ اللّهُ لِيَغْفِرَ لَهُمْ وَلاَ لِيَهْدِيَهُمْ طَرِيقاً ﴿168﴾ إِلاَّ طَرِيقَ جَهَنَّمَ خَالِدِينَ فِيهَا أَبَدًا وَكَانَ ذَلِكَ عَلَى اللّهِ يَسِيرًا ﴿169﴾ يَا أَيُّهَا النَّاسُ قَدْ جَاءكُمُ الرَّسُولُ بِالْحَقِّ مِن رَّبِّكُمْ فَآمِنُواْ خَيْرًا لَّكُمْ وَإِن تَكْفُرُواْ فَإِنَّ لِلَّهِ مَا فِي السَّمَاوَاتِ وَالأَرْضِ وَكَانَ اللّهُ عَلِيمًا حَكِيمًا ﴿170﴾ يَا أَهْلَ الْكِتَابِ لاَ تَغْلُواْ فِي دِينِكُمْ وَلاَ تَقُولُواْ عَلَى اللّهِ إِلاَّ الْحَقِّ إِنَّمَا الْمَسِيحُ عِيسَى ابْنُ مَرْيَمَ رَسُولُ اللّهِ وَكَلِمَتُهُ أَلْقَاهَا إِلَى مَرْيَمَ وَرُوحٌ مِّنْهُ فَآمِنُواْ بِاللّهِ وَرُسُلِهِ وَلاَ تَقُولُواْ ثَلاَثَةٌ انتَهُواْ خَيْرًا لَّكُمْ إِنَّمَا اللّهُ إِلَهٌ وَاحِدٌ سُبْحَانَهُ أَن يَكُونَ لَهُ وَلَدٌ لَّهُ مَا فِي السَّمَاوَات وَمَا فِي الأَرْضِ وَكَفَى بِاللّهِ وَكِيلاً ﴿171﴾ لَّن يَسْتَنكِفَ الْمَسِيحُ أَن يَكُونَ عَبْداً لِّلّهِ وَلاَ الْمَلآئِكَةُ الْمُقَرَّبُونَ وَمَن يَسْتَنكِفْ عَنْ عِبَادَتِهِ وَيَسْتَكْبِرْ فَسَيَحْشُرُهُمْ إِلَيهِ جَمِيعًا ﴿172﴾ فَأَمَّا الَّذِينَ آمَنُواْ وَعَمِلُواْ الصَّالِحَاتِ فَيُوَفِّيهِمْ أُجُورَهُمْ وَيَزيدُهُم مِّن فَضْلِهِ وَأَمَّا الَّذِينَ اسْتَنكَفُواْ وَاسْتَكْبَرُواْ فَيُعَذِّبُهُمْ عَذَابًا أَلُيمًا وَلاَ يَجِدُونَ لَهُم مِّن دُونِ اللّهِ وَلِيًّا وَلاَ نَصِيرًا ﴿173﴾ يَا أَيُّهَا النَّاسُ قَدْ جَاءكُم بُرْهَانٌ مِّن رَّبِّكُمْ وَأَنزَلْنَا إِلَيْكُمْ نُورًا مُّبِينًا ﴿174﴾ فَأَمَّا الَّذِينَ آمَنُواْ بِاللّهِ وَاعْتَصَمُواْ بِهِ فَسَيُدْخِلُهُمْ فِي رَحْمَةٍ مِّنْهُ وَفَضْلٍ وَيَهْدِيهِمْ إِلَيْهِ صِرَاطًا مُّسْتَقِيمًا ﴿175﴾ يَسْتَفْتُونَكَ قُلِ اللّهُ يُفْتِيكُمْ فِي الْكَلاَلَةِ إِنِ امْرُؤٌ هَلَكَ لَيْسَ لَهُ وَلَدٌ وَلَهُ أُخْتٌ فَلَهَا نِصْفُ مَا تَرَكَ وَهُوَ يَرِثُهَآ إِن لَّمْ يَكُن لَّهَا وَلَدٌ فَإِن كَانَتَا اثْنَتَيْنِ فَلَهُمَا الثُّلُثَانِ مِمَّا تَرَكَ وَإِن كَانُواْ إِخْوَةً رِّجَالاً وَنِسَاء فَلِلذَّكَرِ مِثْلُ حَظِّ الأُنثَيَيْنِ يُبَيِّنُ اللّهُ لَكُمْ أَن تَضِلُّواْ وَاللّهُ بِكُلِّ شَيْءٍ عَلِيمٌ ﴿176﴾۔

قرآن کریم


ترجمہ
اللہ کے نام سے جو بہت رحم والا نہایت مہربان ہے

اے انسانو!لحاظ کرو اپنے اس پروردگار کا جس نے تمہیں پیدا کیا ایک متنفس سے اور اسی سے اس کی رفیقہ حیات کو پیدا کیا اور انہی دونوں سے بہت مردوں اور بہت سی عورتوں کو پھیلادیا اور پاس و لحاظ کرو اللہ کا جس کا واسطہ دے کر تم ایک دوسرے سے سوال کرتے ہو اور رشتوں کا یقینا اللہ تم پر حاضر و ناظر ہے (1) اور یتیموں کو ان کے مال سپرد کرو اور پاک کے بدلے میں ناپاک حاصل نہ کرو اور ان کے مال اپنے مال سے ملا کرنہ کھاؤ۔ یہ بلاشبہ بہت بڑا گناہ ہے (2) اور اگر تمہیں اندیشہ ہو کہ یتیموں کے بارے میں یوں انصاف نہ کرو گے تو نکاح کرلو، ان عورتوں سے جو تمہیں پسند ہوں، دو، تین چار سے اور اگر تمہیں اندیشہ ہو کہ انصاف نہ کرو گے تو ایک سے یا جو تمہاری ملکیت میں ہوں، اس میں زیادہ امکان ہے اس کا کہ کج روی نہ کرو (3) اور عورتوں کو ان کا مہر فراخ حوصلگی سے ادا کرو اب اگر وہ خوشی سے اس میں سے کچھ تمہیں بخش دیں تو اسے مزے سے نوش جان کرو (4) اور بد عقلوں کو اپنے پاس کے مال جنہیں اللہ نے تمہارے حالات کی درستی کا ذریعہ قرار دیا ہے نہ دو انہیں آزوقہ پہنچاؤ اور کپڑے بنوا دو اور ان سے اچھی گفتگو کرو (5) اور یتیموں کی جانچ کرو یہاں تک کہ جب وہ تعلقات ازدواجی کے قابل ہو جائیں تو اگر ان میں سمجھ داری بھی پاؤ توانہیں ان کے مال سپرد کر دو اور فضول خرچی سے کام لے کر اور اس جلدی میں کہ کہیں یہ بڑے نہ ہو جائیں، ان کے مال خوردبرد نہ کرو اور جو مال دار ہو اسے تو پرہیز ہی کرنا چاہیے اورجو محتاج ہو، وہ مناسب حد تک اپنی خوراک حاصل کر لے تو جب ان کے مال ان کے سپرد کرو تو ان پر گواہی حاصل کر لو اور یوں تو اللہ ہی حساب کے لیے کافی ہے (6) مردوں کا بھی حصہ ہے اس میں سے جو ماں باپ اور دوسرے عزیز ترکہ چھوڑ جائیں اور عورتوں کا بھی حصہ ہے اس میں سے جو ماں باپ اور دوسرے عزیز ترکہ چھوڑ جائیں، چاہے وہ کم ہو یا زیادہ لازمی طور پر مقرر کیا ہوا حصہ (7) اور جب تقسیم کے موقع پر اعزا اور یتیم اور غریب موجود ہوں تو انہیں بھی اس میں سے کچھ دے دو اور مناسب طریقہ پر ان سے بات کرو (8) اور ڈرنا چاہیے انہیں کہ جو اگراپنے بعد بے ہاتھ پیر کے بچے چھوڑ جائیں تو انہیں ان کی فکر ہو گی لہٰذاوہ اللہ سے ڈریں اور صحیح طریقہ پر گفتگو کریں (9) یقینا وہ جو یتیموں کے مال نا حق کھاتے ہیں، وہ اپنے شکموں میں صرف آگ ہے کہ جو بھرتے ہیں اور بہت جلد ایک بڑی آگ کی گرمی کا مزہ چکھیں گے (10) ہدایت کرتا ہے تمہیں اللہ تمہاری اولاد کے بارے میں کہ لڑکے کا حصہ دو لڑکیوں کے برابر ہو گا۔ اب اگر لڑکیاں ہی ہوں دو سے اوپر تو ان کے لیے دو تہائی ترکہ ہو گا اور اگر ایک ہو تو اس کے لیے آدھا ہو گا اور اس میت کے ماں باپ کے لیے ہر ایک کے لیے ان میں سے چھٹا حصہ ہو گا متروکہ کا اگر اس کے اولاد ہو۔ اب اگر اس کے اولاد نہیں ہے اور ماں باپ اس کے وارث ہیں تو ماں کو تہائی ملے گا لیکن اگر اس کے بھائی ہوں تو اس کی ماں کو چھٹا حصہ ملے گا، بعد اس وصیت کے جو اس نے کی ہو یا قرضہ کے۔ تمہارے باپ ماں اور تمہاری اولاد، تم نہیں سمجھ سکتے کہ ان میں کون تمہارے لیے زیادہ فائدہ رساں ہے۔ یہ اللہ کی طرف کا مقررہ فریضہ ہے۔ یقینا اللہ بڑا جاننے والا ہے، بڑا سوجھ بوجھ والا (11) اور تمہارے لیے آدھا ہو گا اس متروکہ کا جو تمہاری بیویاں چھوڑ جائیں اگر ان کی اولاد نہ ہو لیکن اگر ان کے اولاد ہو تو تمہارے لیے ان کے متروکہ کا چوتھائی ہو گا، بعد اس وصیت کے جو انہوں نے کی ہو یا قرضہ کے اور ان کے لیے چوتھائی ہو گا تمہارے متروکہ سے اگر تمہارے اولاد نہ ہو اور اگر تمہارے اولاد ہو تو ان کے لیے تمہارے متروکہ کا آٹھواں حصہ ہو گا، اس وصیت کے بعد جو تم نے کی ہو یا قرضہ کے اور اگر کسی مرد یا عورت کے وارث مادری بھائی بہن ہوں تو ان میں جو کوئی ایک ہو، اسے چھٹا حصہ ملے گا اور اگر ایک سے زیادہ ہوں تو وہ تہائی متروکہ میں برابر کے حصہ دار ہوں گے، بعد اس وصیت کے جو کی گئی ہو یا قرضہ کے درانحا لیکہ نقصان پہنچانے کے درپے نہ ہو۔ یہ اللہ کی طرف کی لازمی ہدایت ہے اور اللہ بڑا جاننے والا ہے، برداشت سے کام لینے والا (12) یہ اللہ کی طرف کی حدیں ہیں اور جو اللہ اور اس کے رسول کی اطاعت کرے تو وہ اسے ان بہشتوں میں داخل کرے گا جن کے نیچے سے نہریں جاری ہیں، جن میں وہ ہمیشہ رہیں گے اوریہ بڑی کامیابی ہے (13) اور جو اللہ اور اس کے رسول کی نافرمانی کرے گا اور اس کی مقرر کردہ حدوں سے قدم آگے بڑھائے گا، اسے وہ بڑی ہولناک آگ میں داخل کرے گا جس میں وہ ہمیشہ رہے گا اور اس کے لیے ذلیل کرنے والا عذاب ہو گا (14) اور تمہاری عورتوں میں سے جو بدکاری کریں تو ان پر اپنوں میں سے چار کی گواہی حاصل کرو، اگر وہ گواہی دیں دے تو انہیں گھروں میں روک رکھو اس وقت تک کہ موت ان کی عمر کو پورا کرے یا ان کے لیے اللہ کوئی صورت پیدا کر دے (15) اور وہ دو شخص تم میں سے جو ایسا کریں تو انہیں تکلیف پہنچاؤ۔ اب اگر وہ توبہ کریں اور اپنے عمل کو ٹھیک کر لیں تو انہیں چھوڑ دو۔ یقینا اللہ توبہ قبول کرنے والا ہے، بڑا مہربان (16) توبہ کا قبول کرنا اللہ کے ذمہ بس ان کے لیے ہے جو برائی کرتے ہیں نادانی سے پھر جلدی ہی توبہ کرلیتے ہیں یہ ہوتے ہیں جن کی توبہ اللہ قبول کرتا ہے اور اللہ بڑا جاننے والا ہے، صحیح کام کرنے والا (17) اور ان کے لیے توبہ نہیں ہے جو برائیاں کرتے رہتے ہیں، یہاں تک کہ جب ان میں سے کسی ایک کے سرپر موت آکے کھڑی ہوتی ہے تووہ کہتا ہے کہ اس وقت میں توبہ کرتا ہوں اور نہ ان کے لیے جو مرتے ہیں اس حالت میں کہ وہ کافر ہیں۔ یہ وہ ہیں جن کے لیے دردناک عذاب مہیا کر رکھا ہے (18) اے ایمان لانے والو!تمہارے لیے یہ جائز نہیں ہے کہ تم زبردستی عورتوں کے وارث بنو اور نہ ان پر سختی کرو تاکہ تم کچھ حصہ اس کا جو تم نے انہیں دیا ہے، لے اڑو سوا اس صورت کے کہ جب وہ کھلی ہوئی غلطکاری کریں اور ان کے ساتھ زندگی گزاروبھلائی کے ساتھ۔ اگر تم انہیں ناپسند بھی کرتے ہو تو بہت ممکن ہے کہ تم کسی چیز کو ناپسند کرتے ہو اور اللہ اس میں بہت بھلائی قراردے (19) اور اگر تم ایک بیوی کو بدل کر اس کی جگہ دوسری بیوی کرنا چاہو اورتم نے ان میں سے ایک کو بڑی رقم بھی دے دی ہو تو اس میں سے کچھ لو نہیں کیا تم اسے لوگے جھوٹا الزام لگا کراور کھلے ہوئے گناہ کے طورپر؟ (20) اور کیونکر تم اسے لوگے جب کہ تم میں سے ایک دوسرے کی مقاربت سے لطف اندوز بھی ہو چکا ہے اور وہ تم سے پورا پورا عہدوپیمان لے چکی ہیں (21) اور عورتوں میں سے ان سے شادی نہ کرو جن میں تمہارے باپ داداتصرف ازدواجی کرچکے ہوں، سوا اس کے جو پہلے ہوچکا۔ یہ بڑا ہی سخت گناہ ہے اور ناراضگی کی بات اور بہت بُرا طریقہ ہے (22) تم پر حرام کی گئی ہیں تمہاری مائیں اور تمہاری بیٹیاں اور تمہاری بہنیں اور تمہاری پھوپھیاں اور تمہاری خالائیں اور بھتیجیاں اور بھانجیاں اور وہ تمہاری مائیں جنہوں نے تمہیں دودھ پلایا ہے اور تمہاری دودھ شریک بہنیں اور تمہاری خوش دامنیں اور تمہاری پرورش میں آنے والی تمہاری ان بیویوں کی لڑکیاں جن سے تم نے مقاربت کی ہے لیکن اگر ان کے ساتھ تم نے مقاربت نہیں کی ہے تو تم پر کوئی گناہ نہیں ہے اور بیویاں تمہاری صلبی اولاد کی اور یہ کہ تم دو بہنوں کو اکٹھا کرو مگر جو ہو چکا۔ یقینا اللہ بخشنے والا ہے، بڑا مہربان (23) اور عورتوں میں جو شوہردار ہوں، سوا اس کے جو تمہاری ملکیت میں آئی ہوں۔ یہ اللہ کی طرف سے تم پر لازمی پابندی ہے اور اس کے علاوہ تم پر حلال ہے کہ تم اپنے اموال سے ان کے ساتھ شادی کرلو پاک دامنی قائم رکھتے اور بدکاری سے بچتے ہوئے تو ان میں سے جس کے ساتھ تم متعہ کرو تو ان کی اجرتیں جو مقرر ہوں اداکردو اور کوئی حرج نہیں کہ اس مقررہ مقدار کے بعد پھر تم آپس میں کوئی سمجھوتہ کرو، یقینا اللہ جاننے والا ہے، صحیح کام کرنے والا (24) اور جس کی حیثیت تم میں سے اس قابل نہ ہو کہ وہ مسلمان بیویوں سے نکاح کر سکے تو پھر اپنی مسلمان لونڈیوں سے جو تم لوگوں کی ملکیت میں ہوں اور اللہ ہی تمہارے ایمان کو خوب جانتا ہے۔ تم میں سے ایک دوسرے کا جز ہے لہذا ان سے ان کے مالکوں کی اجازت سے شادی کرو اور انہیں بھلائی کے ساتھ ان کے مہر دے دو، اس صورت سے کہ وہ پاک دامن رہیں، نہ بدکاری کرنے والی اور نہ اپنے لیے آشنا بنانے والی تو جب کہ وہ مسلمان ہو چکی ہیں اب اگر وہ بدکاری کریں تو ان کے لیے آزاد عورتوں کی آدھی سزا ہوگی۔ یہ اس کے لیے ہے جو تم میں سے حرام کاری کا اندیشہ محسوس کرے اور اگر ضبط کرو تو تمہارے لیے بہتر ہے اور اللہ بخشنے والا ہے، بڑا مہربان (25) اللہ تو چاہتا ہے کہ تمہارے لیے صاف صاف بیان کر دے اور تمہیں تمہارے پہلے والے لوگوں کے طریقہ پر لگا دے اور تم پر نظر رحمت مبذول رکھے اور اللہ بڑا جاننے والا ہے، صحیح کام کرنے والا (26) اور اللہ یہ چاہتا ہے کہ تمہاری توبہ قبول کرے اور جو نفسانی خواہشوں کے پیرو ہیں، وہ چاہتے ہیں کہ تم بہت زیادہ کجی اختیار کرلو (27) اللہ چاہتا ہے کہ تمہارا بوجھ ہلکا کرے اور پیدا کیا گیا ہے آدمی کمزور (28) اے ایمان لانے والو!اپنے آپس کے مال ناحق نہ کھاؤ، ہاں مگر یہ کہ تم لوگوں کی باہمی رضامندی سے کوئی تجارتی معاملت ہو اور اپنی جانوں کو تلف نہ کرو، بلاشبہ اللہ تم پر مہربان ہے (29) اور جو ظلم وتعدی سے ایسا کرے گا تو اسے ہم آتش جہنم کی گرمی کا مزہ چکھائیں گے اور یہ اللہ کے لیے بالکل آسان بات ہے (30) اگر تم ان چیزوں میں سے کہ جن سے تمہیں منع کیا جاتا ہے، کبیرہ گناہوں سے پرہیز کرو تو تمہارے اور برے کاموں کی ہم تلافی کر دیں گے اور تمہیں معزز مقام میں پہنچا دیں گے (31) اور جو اللہ نے تم میں کے ایک کو دوسرے پر زیادتی عطاکی ہے، اس کی آرزو نہ کرو مردوں کو حصہ ملتا ہے اس کا جو وہ حاصل کریں اور عورتوں کو حصہ ملتا ہے اس کا جو وہ حاصل کریں اور اللہ سے سوال کرو اس کے فضل وکرم سے۔ یقینا اللہ ہر چیز کا جاننے والا ہے (32) اور ہر ایک کے ہم نے وارث قرار دئیے ہیں اس میں جو چھوڑا ہے ماں باپ اور دوسرے قریب ترین اعزا نے اور جنہیں تمہاری قسموں نے وابستہ کیا ہے تو اس میں ان کا حصہ دے دو، یقینا اللہ ہر بات پر حاضر و ناظر ہے (33) مرد عورتوں کے انتظامات و اصلاحات کے ذمہ دار ہیں اس بنا پر کہ ان میں سے ایک کو دوسرے پر اللہ نے فضیلت دی ہے اور اس کی وجہ سے جو یہ اپنے مال سے خرچ کرتے ہیں تو نیک عورتیں اطاعت گزار ہوتی ہیں اور پیٹھ پیچھے بھی جس طرح خدا نے ان کی حفاظت و کفالت کا انتظام کیا ہے وہ حفاظت کرتی ہیں اور جن عورتوں سے سرکشی کے آثار تم کو محسوس ہوں انہیں سمجھاؤ اور چھوڑ دو انہیں ان کی خواب گاہوں میں اور مارو بھی اس کے بعد اگر وہ تمہاری اطاعت کرنے لگیں تو پھر ان کے خلاف کسی اقدام کے راستے نہ ڈھونڈو یقینا اللہ برتر ہے، بہت بڑا (34) اور اگر تم لوگوں کو ان دونوں میں پھوٹ کے آثار نظر آئیں تو ایک ثالث اس کے والوں میں سے اور ایک ثالث اس کے والوں میں سے مقرر کرو اگر وہ دونوں میل کرانا چاہیں گے تو اللہ ان دونوں میں موافقت کی صورت پیدا کر دے گا۔ یقینا اللہ جاننے والا ہے، بڑا باخبر (35) اور اللہ کی عبادت کرو، کسی چیز کو اس کا شریک نہ کرو اور ماں باپ کے ساتھ نیکی کرو اور قرابت داروں، یتیموں، وہ پڑوسی جو عزیز ہو اور وہ پڑوسی بھی جو غیر ہو اور پہلو بہ پہلو رہنے والے ساتھی اور مسافر اور ان کے ساتھ جو تمہاری ملکیت میں ہیں۔ یقینا اللہ تعالی اسے دوست نہیں رکھتا کہ جو گھمنڈ رکھنے والا۔ شیخی بگھارنے والا ہو (36) جو کنجوسی سے کام لیتے ہیں اور لوگوں کو بھی کنجوسی کی ہدایت کرتے ہیں اور جواللہ نے انہیں اپنے فضل وکرم سے دیا ہے، اسے چھپاتے ہیں اور ہم نے ناشکروں کے لیے ذلت دینے والا عذاب مہیا کررکھا ہے (37) اور جو اپنے مال خیرات میں صرف کرتے ہیں لوگوں کو دکھانے کے لیے اور اللہ پر ایمان نہیں رکھتے اور نہ روز آخرت پر اور جس کا ہمدم شیطان ہو، اس کا بہت برا ہمدم ہے (38) اور ان کا کیا نقصان تھا اگر یہ ایمان لاتے اللہ اور روز آخرت پر اور جو اللہ نے انہیں روزی عطاکی، اس میں سے خیرات کرتے اور اللہ ان سے خوب واقف ہے (39) یقینا اللہ ذرہ برابر بھی ظلم نہیں کرتا اور اگر وہ نیکی ہو تو اسے بدر جہا بڑھا دیتا ہے اور اپنی جانب سے بہت بڑا اجر عطا فرماتا ہے (40) تو کیا ہو گا اس وقت جب ہم ہر امت میں سے ایک گواہ لائیں گے اور آپ کو ان پر گواہ بنا کر لائیں گے (41) اس دن ان لوگوں کا جنہوں نے کفر اختیار کیا تھا اور پیغمبرکی بات نہیں مانی تھی، دل چاہے گا کہ کاش وہ زمین کے برابر کر دئیے جاتے اور وہاباللہ سے کوئی بات چھپا نہ سکیں گے (42) اے ایمان لانے والو!نماز کے پاس نہ جاؤ اس حالت میں کہ تم نشہ میں ہو جب تک تمہیں اتنا ہوش نہ ہو کہ تم کیا کہہ رہے ہو اور نہ جنابت کی حالت میں جب تک کہ غسل نہ کرلو، سوا اس صورت کے کہ تم سفر میں ہو اور اگر تم بیمار ہو یا سفر میں ہو یا پاخانہ سے ہو کے آئے ہو یا عورتوں سے مقاربت کی ہے اور پانی دستیاب نہ ہو تو پاک مٹی سے تیمم کرلو، اس طرح کہ اس سے اپنے منہ اور ہاتھوں کا مسح کرو۔ یقینا اللہ انصاف کرنے والا ہے، بہت بخشنے والا (43) کیا تم نے نہیں دیکھا ان کو جنہیں کتاب کا کچھ حصہ ملا ہے کہ یہ گمراہی مول لیتے ہیں اور چاہتے ہیں کہ تم بھی سیدھے راستے سے بہک جاؤ (44) اور اللہ تمہارے دشمنوں کو خوب جانتا ہے اور اللہ سے بڑھ کر کوئی سرپرست اور اللہ سے بڑھ کر کوئی مدد گار نہیں ہو سکتا (45) یہودیوں میں سے ایسے ہیں جو جملوں کو ان کے محل سے تحریف کر کے ہٹا دیتے ہیں اور کہتے ہیں کہ ہم نے سنا اور مانا نہیں اور سنو، تمہاری بات نہ سنی جائے اور ر اعنا اپنی زبان میں دوسرے معنی لے کر اور دین پر اعتراض کرتے ہوئے اور اگر وہ یوں کہتے کہ ہم نے سنا اور مانا اور سنئیے اور ہماری طرف دیکھئے تو ان کے لیے بہتر اور زیادہ صحیح ہوتا مگر اللہ نے ان کے کفر کی بدولت ان پر لعنت کی ہے تو یہ ایمان لائیں گے نہیں مگر بہت کم (46) اے اہل کتاب!ایمان لاؤ اس پر جو ہم نے اتارا ہے تصدیق کرتا ہوا اس کی جو تمہارے پاس ہے، اس سے پہلے کہ ہم بگاڑ دیں کچھ چہروں کو اور انہیں پیٹھ کی طرف پھیر دیں، یا ان پر اس طرح لعنت برسائیں جس طرح ہم نے ہفتہ کے دن والوں پر لعنت برسائی تھی اور اللہ کی بات ہو کر رہتی ہے (47) یقینا اللہ اسے نہیں بخشتا کہ اس کے ساتھ شریک کیا جائے اور اس کے سوا ہر بات کو بخش دیتاہے جس کے لیے چاہتا ہے اور جو اللہ کے ساتھ شریک کرے، اس نے بہت بڑے گناہ کے ساتھ بہتان باندھا (48) کیا تم نے نہیں دیکھا انہیں جو خود اپنی تعریفیں کرتے ہیں بلکہ اللہ جس کی چاہے تعریف کرے اور ان پر ایک سوت برابر بھی ظلم نہیں ہو گا (49) دیکھو یہ کس طرح اللہ پر جھوٹی تہمت لگاتے ہیں اور اس سے بڑھ کر کھلا ہوا گناہ کیا ہو گا (50) کیا تم نے نہیں دیکھا انہیں کہ جن کو کتاب کا کچھ حصہ دیا گیا کہ وہ جبت اور طاغوت کے معتقد ہوتے ہیں اور کافروں کو کہتے ہیں کہ یہ اہل ایمان سے زیادہ ٹھیک راستے پر ہیں (51) یہ وہ ہیں جن پر اللہ نے لعنت کی ہے اور جس پر اللہ لعنت کرے، اس کا ہرگز کوئی مدد گار تم نہ پاؤ گے (52) کیا اقتدار سلطنت میں ان کا کوئی موروثی حصہ ہے؟پھر تو یہ لوگوں کو ذرا سا بھی نہ دیں گے (53) یا وہ لوگوں پر رشک و حسد کرتے ہیں اس پر جو اللہ نے انہیں اپنے فضل و کرم سے دیا تو اچھا، پھر سن لیں کہہم نے نسل ابراہیمی کو کتاب اور حکمت عطا کی ہے اور انہیں بہت بڑا شاہانہ اقتدار عطا کیا ہے (54) تو ان میں سے کوئی اس پر ایمان لایا اور ان میں سے کوئی اس سے روگردان ہو گیا اور دوزخ سے بڑھ کر کون آگ ہوگی (55) بلاشبہ وہ جنہوں نے ہماری آیتوں کا انکار کر دیا، انہیں ہم جلد ہی آگ کا مزہ چکھائیں گے جب ان کی پہلی کھالیں گل جائیں گی تو ان پر ہم دوسری کھالیں بدل کر چڑھا دیں گے تاکہ وہ عذاب کا مزہ چکھتے رہیں۔ یقینا اللہ زبردست ہے، ٹھیک ٹھیک کام کرنے والا (56) اور وہ جنہوں نے ایمان اختیار کیا اور نیک اعمال کئے، انہیں ہم بہت جلد ان بہشتوں میں پہنچا دیں گے جن کے نیچے سے نہریں جاری ہوں گی، وہ ان میں ہمیشہ ہمیشہ رہیں گے ان کے لیے وہاں پاک و پاکیزہ بیویاں ہوں گی اور انہیں ہم محفوظ سایہ میں جگہ دیں گے (57) بلاشبہ اللہ کا حکم تمہیں ہے کہ امانتیں ان کے حق داروں کو ادا کرو اور جب لوگوں کے درمیان فیصلہ کرو تو انصاف کے ساتھ فیصلہ کرو۔ یقینا اللہ تمہیں بہت اچھی ہدایتیں کرتا ہے۔ یقینا اللہ خوب سننے والا ہے، دیکھنے والا (58) اے ایمان لانے والو!فرماں برداری کرو اللہ کی اور فرماں برداری کرو رسول کی اور ان کی جو تم میں فرماں روائی کے حق دار ہیں لہذا اگر کسی بات میں تم میں جھگڑا ہو تو اسے اللہ اور رسول کی طرف پلٹاؤ اگر تم اللہ اور روزآخرت پر ایمان رکھتے ہو۔ یہی اچھا ہے اور انجام کے لحاظ سے بہتر ہے (59) کیا آپ نے نہیں دیکھا انہیں جن کا دعوی یہ ہے کہ وہ ایمان لائے ہیں اس پر بھی جو آپ پر اتارا گیا ہے اور اس پر بھی جو آپ سے پہلے اتارا گیا تھا۔ پھر بھی وہ چاہتے ہیں کہ حکومت باطل کے پاس وہ مقدمے لے جائیں۔ حالانکہ انہیں حکم یہ ہے کہ وہ اس کا انکار کریں اور شیطان چاہتا ہے کہ انہیں گمراہی میں مبتلا کرے (60) اور جب ان سے کہا جائے کہ آؤ اس کی طرف جو اللہ نے اتارا ہے اور پیغمبر کی طرف تو منافقین کو دیکھئے گا کہ وہ آپ سے شدت کے ساتھ روگردانی کریں گے (61) تو کیسا ہو گا اس وقت جب انہیں ان گزشتہ اعمال کی وجہ سے کوئی مصیبت درپیش ہو گی اور پھر وہ آپ کے پاس آئیں گے خدا کی قسمیں کھاتے ہوئے کہ ہمیں تو بھلائی و موافقت کے سوا کچھ مدنظر نہ تھا (62) یہ وہ ہیں کہ اللہ خوب جانتا ہے جو ان کے دلوں میں ہے لہذا آپ ان باتوں کا خیال نہ کیجئے اور انہیں نصیحت کرتے رہئیے اور ایسی باتیں ان سے کہتے رہئے جو زیادہ سے زیادہ ان کے دلوں میں اثر پیدا کر سکیں (63) اور کوئی پیغمبر ہم نے نہیں بھیجا مگر اس کے لیے کہ اللہ کے حکم سے اس کی اطاعت کی جائے اور اگر جب انہوں نے اپنے اوپر زیادتی کی تھی تو آپ کے پاس آتے اور پھر اللہ سے بخشش کے طلبگار ہوتے اور پیغمبر ان کے لیے دعائے مغفرت کرتے تو اللہ کو پاتے بڑا توبہ قبول کرنے والا بڑا مہربان (64) تو نہیں، قسم آپ کے پروردگار کی، وہ مؤمن نہیں ہو سکتے جب تک ان جھگڑوں میں جو ان کے درمیان ہوں، آپ کو حاکم نہ مانیں، پھر جو کچھ آپ فیصلہ کریں، اس سے اپنے دل میں تنگی محسوس نہ کریں اور پوری پوری طرح تسلیم کریں (65) اور اگر کہیں ہم ان پر یہ فرض عائد کر دیتے کہ خود اپنوں کو قتل کرو یا اپنے گھروں سے نکل جاؤ تو سوا کم لوگوں کے یہ سب اسے عمل میں نہ لاتے اور اگر یہ کرتے وہی جو انہیں ہدایت کی جاتی ہے تو یہ ان کے لیے بہتر ہوتا اور ثابت قدمی کا زیادہ سبب ہوتا (66) اس وقت میں ہم انہیں اپنے پاس سے بڑا اجر دیتے (67) اور انہیں سیدھے راستے پر چلنے کی خصوصی توفیق کرامت فرماتے (68) اور جو اللہ اور رسول کی اطاعت کرے گا تو یہ لوگ ان کے ساتھ ہوں گے جنہیں اللہ نے اپنی نعمتوں سے نوازا ہے، انبیاء، صدیقین، شہیدان راہ خدا اور صالحین اور یہ بہت ہی اچھے رفیق ہیں (69) یہ ہے اللہ کی طرف کا فضل و کرم اور اللہ سے بڑھ کر کون باخبر ہو گا (70) اے ایمان لانے والو!اپنی حفاظت کا سامان مکمل رکھو اور پھرجب وقت آئے تونکل کھڑے ہو خواہ دستہ دستہ ہو کر الگ الگ اور خواہ نکلو اکٹھا (71) اور بلاشبہ تم میں ایسے بھی ہیں جو ضروربالضرور دیر کرتے ہیں تو اگر تم پر کوئی مصیبت آئے تو کہتے ہیں مجھ پر اللہ کا بڑا احسان تھا کہ میں ان کے ساتھ موجود نہ تھا (72) اور اگر اللہ کا فضل و کرم تمہارے شامل حال ہو تو وہ ضرور یہ کہیں گے جیسے کہ تم میں اور ان میں کوئی محبت و الفت تھی ہی نہیں کہ کاش میں ان کے ساتھ ہوتا تو بہت بڑی کامیابی حاصل کرتا (73) تو جو لوگ دنیا کی اس پست زندگی کو آخرت کے عوض فروخت کرنے پر تیار ہوں، انہیں اللہ کی راہ میں جنگ کرنا چاہیے اور جو اللہ کی راہ میں جنگ کر کے مارا جائے یا فتح پائے، اسے ہم بڑا اجر عطا کریں گے (74) اور تم آخر کیوں نہیں جنگ کرتے اللہ کی راہ میں اور ان کمزور مردوں، عورتوں اور بچوں کی خاطر جو کہتے ہیں کہ پروردگار!ہمیں اس بستی سے کہ جس کے باشندے ظالم ہیں، باہر نکال دے اور ہمارے لیے اپنی طرف سے کوئی سرپرست قرار دے اور اپنی جانب سے کسی کو مدد گار بنا دے (75) جنہوں نے ایمان قبول کیا، وہ اللہ کی راہ میں جنگ کرتے ہیں اور جنہوں نے کفر اختیار کیا وہ اقتدار باطل کی راہ میں جنگ کرتے ہیں تو شیطان کے حوالی موالی سے جنگ کرو۔ یقینا شیطان کا منصوبہ کمزور ہوا ہی کرتا ہے (76) کیا تم نے نہیں دیکھا ان لوگوں کو جن سے کہا گیا تھا کہ اپنے ہاتھ روکے رہو اور نماز پڑھتے رہو، زکوة ادا کرتے رہو۔ پھر جب ان پر جنگ کرنے کا فرض عائد کیا گیا تو ایک دم ان کا یہ عالم سامنے آیا کہ ان میں کی ایک جماعت آدمیوں سے ڈرتی ہے ایسا جیسے اللہ کا ڈر ہو یا اس سے بھی زیادہ اور انہوں نے کہا پروردگار!تو نے ہم پر جنگ کرنے کا فریضہ کیوں عائد کردیا تو نے ہم کو کچھ تھوڑے زمانہ تک اور مہلت کیوں نہ دی؟کہئے کہ دنیا کی پونجی بہت تھوڑی ہے، اور جو پرہیز گار ہو، اس کے لیے آخرت بہت بہتر ہے، اور تم پر ذرا بھی ظلم نہیں ہو گا (77) جہاں بھی تم ہو، تم تک موت پہنچے گی، چاہے تم مضبوط قلعوں میں کیوں نہ ہو اور اگر ان کے لیے کچھ بھلائی ہوتی ہے تو کہتے ہیں یہ اللہ کی طرف سے ہے اور اگر ان کے لیے کچھ برائی پیش آئی تو کہتے ہیں یہ آپ کے ہاتھوں ہوا، کہئے کہ سب اللہ کی طرف سے ہے تو آخر ان لوگوں کو کیا ہوگیا ہے کہ جیسے ان کی سمجھ میں کوئی بات آتی ہی نہیں (78) جو تمہارے لیے بھلائی ہو، وہ تو اللہ کی طرف سے ہے اور جو تمہیں برائی پیش آئے، وہ خود تمہارے ہاتھوں ہے اور ہم نے آپ کو لوگوں کے لیے رسول بنا کربھیجا ہے اور اللہ سے بڑھ کر کون حاضر و ناظر ہوگا (79) جس نے پیغمبر کی اطاعت کی، اس نے اللہ کی اطاعت اور جس نے منہ پھرایا تو ہم نے آپ کو ان پر پہریدار بنا کر نہیں بھیجا ہے (80) اور وہ زبان سیفرماں برداری۔ کی لفظ کہتے ہیں اور جب آپ کے پاس سے باہر نکلتے ہیں تو ایک گروہ ان میں کا دل میں اپنے کہے کے خلاف باتیں چھپائے ہوتا ہے اور اللہ لکھتا ہے اسے جو وہ چھپاتے ہیں لہذا آپ ان کی طرف توجہ نہ کیجئے اور اللہ پر بھروسہ کیجئے اور اللہ سے بڑھ کر کون مدد گار ہوگا (81) تو آخر یہ لوگ قرآن پر غور کیوں نہیں کرتے اور اگر وہ اللہ کے علاوہ کسی کی طرف سے ہوتا تو وہ اس میں بہت زیادہ اختلاف پاتے (82) اور جب ان کے سامنے کوئی بات امن و امان یا خوف و اندیشہ کی آتی ہے تو اور اسے مشہور کر دیتے ہیں، حالاں کہ اگر اس میں رجوع کریں پیغمبر کی طرف اور فرمان روائی کا حق رکھنے والوں کی طرف جو ان میں سے ہوں تو اسے جان لیں وہ لوگ جو ان میں سے اس کی تہہ تک پہنچ سکتے ہیں اور اگراللہ کا فضل و کرم تم پر نہ ہوتا اور اس کی رحمت تو سوا تھوڑے سے آدمیوں کے تم سب شیطان کی پیروی کرتے (83) تو اللہ کی راہ میں جنگ کیجئے آپ پر ذمہ داری نہیں ہے مگر آپ کی ذات کی اور ایمان لانے والوں کو بھی آمادہ کرتے رہئے، بہت ممکن ہے کہ اللہ کافروں کے زور کو توڑدے اور اللہ کا زوروطاقت زیادہ اور اس کی طرف کی سزا سخت ہے (84) جو اچھی سفارش کرے گا اسے، اس میں سے حصہ ملے گا اور جو بری سفارش کرے گا، اس کا اس میں حصہ ہو گا اور اللہ ہر چیز پر قادر ہے (85) اور جب تمہیں سلام کیا جائے تو اس سے بہتر طریقہ پر تم سلام کرو یا اسی کو پلٹا دو، یقینا اللہ ہر شے کا محاسبہ کرنے والا ہے (86) اللہ کوئی خدانہیں سوا اس کے۔ بلاشبہ ضروروہ تم سب کو اکٹھا کر کے قیامت کے دن تک پہنچائے گا جس میں کوئی شک نہیں ہے اور اللہ سے زیادہ بات میں سچا کون ہوگا (87) تو یہ کیا ہے کہ تم لوگ منافقوں کے بارے میں دوگروہوں میں بٹ گئے ہو حالانکہ اللہ نے انہیں ان کے کردار کی وجہ سے پلٹا دیا ہے کیا تم چاہتے ہو کہ جسے اللہ نے گمراہ چھوڑ دیا ہے، تم اسے راہ راست پر قرار دو اور جسے اللہ گمراہ چھوڑ دے، اس کے لیے تم ہرگز کوئی راستہ نہیں پا سکتے (88) ان کی تو خواہش ہے کہ کاش تم بھی کافر ہو جاؤ، اسی طرح جیسے انہوں نے کفر اختیارکیا کہ تم سب برابر ہو جاؤ لہذا ان میں سے اپنے حامی و سرپرست نہ بناؤ، جب تک کہ یہ اللہ کی راہ میں اپنے موجودہ مرکز سے جدائی اختیار نہ کریں، اب اگر وہ روگردانی کریں تو انہیں پکڑو اور جہاں انہیں پاؤ، انہیں مار ڈالو اور ان میں سے اپنا کوئی سرپرست نہ بناؤ اور نہ مددگار (89) سوا ان کے جو تعلق رکھتے ہیں ایک ایسی قوم سے کہ تمہارے اور ان کے درمیان معاہدہ ہے یا تمہارے سامنے آتے ہیں اس حالت میں کہ ان کے دل الجھتے ہیں اس سے کو وہ تم سے جنگ کریں یا اپنی قوم سے جنگ کریں اور اگر اللہ چاہتا تو انہیں تم پر قابو دیدیتا اور وہ تم سے جنگ کرتے۔ اب جب وہ تم سے کنارہ کشی کرکے جنگ نہیں کرتے اور انہوں نے تمہاری طرف صلح کا ہاتھ بڑھا رکھا ہے تو اللہ نے تمہیں ان کے خلاف کوئی قدم اٹھانے کا جواز عطا نہیں کیا ہے (90) کچھ اور لوگ ایسے پاؤ گے جو چاہتے ہیں کہ تم سے بھی محفوظ رہیں اور اپنی جماعت سے بھی محفوظ رہیں اور جب فتنہ پردازی کا دوبارہ موقع ملے تو وہ اس میں بالکل جٹ جائیں گے یہ لوگ اگر تم سے کنارہ کشی نہیں کرتے اور تمہاری طرف صلح کا ہاتھ نہیں بڑھاتے اور اپنے ہاتھ نہیں روکتے تو انہیں پکڑو اور جہاں بھی انہیں پاؤ قتل کرو۔ یہ وہ ہیں جن کے خلاف ہم نے تمہیں کھلا ہوا دسترس عطا کیا ہے (91) اور کسی مسلمان کا کام نہیں ہے کہ وہ کسی مسلمان کو قتل کرے سوا نادانستہ صورت کے اور جو نادانستہ مسلمان کو قتل کرے تو ایک مسلمان بندہ کو آزاد کرنا ہوگا اور ایک خون بہا اس کے وارثوں کے حوالے کرنا ہوگا، سوااس کے کہ وہ لوگ معاف کردیں۔ اب اگر وہ کسی ایسی جماعت میں سے ہے جو تمہاری دشمن ہے اور وہ خود مسلمان ہے تو بس ایک مسلمان بندہ کو آزاد کرنا ہے اور اگر ایسی جماعت میں سے ہے کہ تم میں اور ان میں معاہدہ ہے تو پھر وہی ایک خون بہا اسکے وارثوں کے سپرد کرنا ہے اور ایک بندہ کا آزاد کرنا۔ اب جس کے پاس یہ نہ ہو تو دو مہینے متواتر روزے رکھنا ہوں گے اللہ کی طرف سے عنایت کے طور پر اور اللہ جاننے والا ہے، ٹھیک ٹھیک کام کرنے والا (92) اور جو کسی مسلمان کو جان بوجھ کرقتل کرے تو اس کی سزا دوزخ ہے جس میں وہ ہمیشہ ہمیشہ رہے گا اور اللہ اس پر غضب ناک ہو گا اور اس پر لعنت کرے گا اور اس کے لیے بہت بڑا عذاب مہیا کرے گا (93) اے ایمان لانے والو!جب اللہ کی راہ میں جہاد کے لئے نکلو تو جانچ پڑتال کر لیا کرو اور اس سے جو تمہیں سلام کرے یہ نہ کہو کہ تو مسلمان نہیں ہے تم دنیوی زندگی کی دولت چاہتے ہو!تو اللہ کے یہاں بڑے فائدے ہیں۔ ایسے ہی تو تم خود پہلے تھے، اس کے بعد اللہ نے تم پر احسان کیا لہذا جانچ پڑتال کر لیا کرو۔ یقینا اللہ اس سے جو تم کرتے ہو باخبرہے (94) برابر نہیں ہیں مسلمانوں میں سے بغیر معذوری کے گھر میں بیٹھنے والے اور اپنے مالوں اور جانوں کے ساتھ اللہ کی راہ میں جہاد کرنے والے۔ اللہ نے اپنے مالوں اور جانوں سے جہاد کرنے والوں کو بیٹھے رہنے والوں پر بہت فوقیت دی ہے اور یوں تو ہر ایک سے اس نے بھلائی کا وعدہ کیا ہے اور جہاد کرنے والوں کو پیچھے رہنے والوں پر بہت بڑے اجر کے ساتھ فضیلت عطا کی ہے (95) بڑے مرتبوں اور بخشش اور رحمت کے اعتبار سے اور اللہ بخشنے والا ہے، بڑا مہربان (96) بلاشبہ وہ جنہیں فرشتوں نے دنیا سے اٹھایا اس عالم میں کہ وہ اپنے اوپر ظلم کے مرتکب تھے انہوں نے ان سے کہا کہ ارے!یہ تم کس عالم میں تھے، انہوں نے کہا ہم دنیا میں دبے پسے ہوئیتھے، انہوں نے کہا کیا اللہ کی زمیں وسیع نہ تھی کہ تم اس میں ہجرت کر جاتے!یہ ایسے لوگ ہیں کہ ان کا ٹھکانا دوزخ ہے اور وہ بڑی بری منزل ہے (97) مگر مردوں، عورتوں اور بچوں میں سے وہ دبے پسے ہوئے ہیں جنہیں کوئی تدبیر ہی ممکن نہ ہو اور نہ کوئی راستہ انہیں ملتا ہو (98) یہ وہ ہوں گے۔ جنہیں بہت ممکن ہے کہ اللہ معاف کرے اور اللہ بڑا معاف کرنے والا ہے، بخشنے والا (99) اور جو اللہ کی راہ میں ترک وطن کرے، وہ زمین خدا میں بہت گھومنے پھرنے کی جگہ اور بڑی کشائش پائے گا اور جو اپنے گھر سے اللہ اور رسول کی طرف ہجرت کرکے نکلے، پھر اسے موت آ جائے تو اس کا ثواب اللہ کے ذمہ ہو گا اور اللہ بخشنے والا ہے، بڑا مہربان (100) اور جب تم سفر کرو تو تمہارا اس میں کوئی حرج نہیں کہ نماز میں قصر کردو، جب کہ تمہیں ڈر ہے کہ کافر لوگ تمہیں کوئی کوئی گزند پہنچا دیں گے یقینا کافر لوگ تمہارے کھلے ہوئے دشمن ہیں (101) اور جب آپ ان میں ہوں اور انہیں نماز پڑھانے لگیں تو ان میں سے ایک گروہ آپ کے ساتھ کھڑا ہو اور اپنے ہتھیار لیے رہیں، جب یہ نماز پڑھ چکیں تو یہ آپ لوگوں کی پشت پناہی کے لیے چلے جائیں اور دوسرا گروہ ان کا جس نے نماز نہیں پڑھی ہے، آ جائے آپ کے ساتھ نماز پڑھے اور یہ بھی اپنا سامان حفاظت اور ہتھیار لیے رہیں۔ کفار کی تو آرزو یہ ہے کہ تم لوگ اپنے ہتھیاروں اور سامانوں سے غافل ہو جاؤ تو وہ تم پر ایک دم ٹوٹ پڑیں اور اگر بارش سے اذیت ہو یا تم بیمار ہو تو تمہارا کوئی حرج نہیں ہے کہ تم اپنے ہتھیاروں کو رکھ دو۔ ہاں حفاظت کا خیال رکھو۔ یقینا اللہ نے کافروں کے لیے ذلت آمیز عذاب مہیا کر رکھا ہے (102) پھر جب نماز بجا لے آؤ تو اللہ کو کھڑے بیٹھے اور کروٹ میں یاد کرتے رہو اور جب تمہیں اطمینان نصیب ہو تو نماز کو پورے طور پر ادا کرو۔ بلاشبہ نماز اہل ایمان پر ایک فریضہ ہے جو اوقات کے تعین کے ساتھ عائد کیا گیا ہے (103) اور اس جماعت سے مڈبھیڑ کے لیے نکلنے میں سستی نہ دکھاؤ۔ اگر تمہیں تکلیف پہنچی ہو تو انہیں بھی ویسی ہی تکلیفیں پہنچتی ہیں جیسی تمہیں ہوتی ہیں اور تمہیں اللہ کے یہاں وہ اُمید ہے جو انہیں نہیں ہے اور اللہ بڑاجاننے والا ہے، ٹھیک ٹھیک کام کرنے والا (104) بلاشبہ ہم نے آپ پر کتاب سچائی کے ساتھ اتاری ہے تاکہ جو اللہ نے آپ پر نمایاں کردیا ہے، اس کے مطابق آپ لوگوں میں فیصلہ کریں اور آپ بددیانتوں کی وکالت نہ کیجئے (105) اور اللہ سے معافی کی سفارش کیجئے۔ یقینا اللہ بخشنے والا ہے، بڑا مہربان (106) اور ان کی طرف سے جو خود اپنے ساتھ غداری کرتے ہیں، آپ بحث ومباحثہ نہ کیجئے، یقینا اللہ اسے جو گنہگار، غدار ہے دوست نہیں رکھتا (107) وہ آدمیوں سے تو چھپ لیں گے، اللہ سے نہیں چھپ سکتے، وہ تو ان کے ساتھ ہوتا ہے جب وہ راتوں کو اس کی ناپسند گفتگوئیں کرتے ہوتے ہیں اور اللہ اس پر کہ جو یہ کرتے رہتے ہیں حاوی ہے (108) اچھا!اس وقت تم لوگ اس کی طرف سے جو اس دنیاوی زندگی میں بحث ومباحثہ کر بھی لو تو قیامت کے دن اللہ سے ان کی جانب سے بحث کون کرے گا یا کون ان کا نمائندہ ہو سکے گا (109) اور جو برائی کرے یا خوداپنے اوپر ظلم کرے، پھراللہ سے بخشش کا طالب ہو تو وہ اللہ کو بڑا بخشنے والا پائے گا، مہربان (110) اور جو کوئی گناہ کرتا ہے تو وہ بس اپنے ہی نقصان کا باعث ہوتا ہے اور اللہ بڑا جاننے والا ہے، ٹھیک ٹھیک کام کرنے والا (111) اور جو کوئی غلطی یا گناہ کرے، پھر اسے کسی بے قصور کے سرمنڈھ دے، اس نے افترا اور کھلے ہوئے گناہ کا بوجھ اٹھایا (112) اور اگر اللہ کا فضل و کرم آپ کے شامل حال نہ ہوتا اور اس کی مہربانی تو ان میں کا ایک گروہ یہ چاہتا کہ وہ آپ کو گمراہ کر دے۔ حالاں کہاب صورت یہ ہے کہوہ خود اپنے ہی کو گمراہ کرتے ہیں اور آپ کو کچھ نقصان نہیں پہنچا سکتے اور اللہ نے آپ پر اپنے قانون کے احکام اور حکیمانہ راز اتار دئیے ہیں اور آپ کو وہ علم دیا ہے جو آپ کو خود حاصل نہ ہوتا اور اللہ کا فضل وکرم آپ پر بہت بڑا ہے (113) زیادہ تر ا ن کی سرگوشیوں میں کوئی بھلائی نہیں ہوتی، سوا اس کے جو کسی خیر خیرات یا نیکی یا لوگوں کے درمیان صلح صفائی کرانے کی بات چیت کرے اور جو ایسا کرے اللہ کی خوشنودی حاصل کرنے کے لیے اسے ہم بڑا ثواب عطا کریں گے (114) اور جو صحیح راستہ نمایاں ہو جانے کے بعد پیغمبر سے اختلاف کرے اور ایمان والوں کے راستے کے خلاف راستہ چلے، اسے جدھر وہ گیا ہے، اسی طرف ہم جانے دیں گے اور اسے دوزخ کی آگ کا مزہ چکھائیں گے اور وہ بہت بری باز گشت ہے (115) بے شک اللہ اسے نہیں بخشے گا کہ اس کے ساتھ شرک کیا جائے اور اس سے کم جو بھی ہو، اسے جس کے لیے چاہتا ہے، بخش دیتا ہے اور جو اللہ کے ساتھ شرک کرے، وہ راہ راست سے بہت دور جا پڑا (116) وہ اسے چھوڑ کر نہیں پکارتے مگر کچھ زنانے قسم کے نام اور انہیں پکارتے مگر اس سرکش شیطان کو (117) جس پر اللہ نے لعنت کی تھی اور جس نے کہا تھا کہ میں تیرے بندوں میں اپنا مقررہ حصہ ضرور رکھوں گا (118) اور ضرور انہیں گمراہ کروں گا اور انہیں سبز باغ دکھاؤں گا اور ضرور انہیں مامور کروں گا تو وہ چوپایوں کے کانوں کوشگافتہ کریں گے اور انہیں کہوں گا تو وہ اللہ کی طرف کی پیدائشی صورت کو بدلیں گے اور جو شیطان کو اپنا سرپرست بنائے گا اللہ کو چھوڑ کے، وہ کھلا ہوا گھاٹا اٹھائے گا (119) وہ انہیں طرح طرح کی امیدیں دلاتا ہے اور سبز باغ دکھاتا ہے اور نہیں انہیں امیدیں دلاتا ہے شیطان مگر دھوکے فریب کے طور پر (120) یہ وہ ہیں جن کا ٹھکانادوزخ ہے اوروہ اس سے چھٹکارے کی کوئی صورت نہ پائیں گے (121) اور وہ جنہوں نے ایمان اختیار کیا اور نیک اعمال کئے، انہیں ہم ان بہشتوں میں داخل کریں گے جن کے نیچے سے نہریں بہتی ہوں گی، وہ ان میں ہمیشہ ہمیشہ رہیں گے۔ یہ اللہ کا سچا وعدہ ہے اور اللہ سے بڑھ کر کون بات میں زیادہ سچا ہو گا؟ (122) نہ تمہارے خیالات خیام سے کچھ ہوتا ہے اور نہ اہل کتاب کے خیالات خام سے۔ جو کوئی برائی کرے گا، اس کی اسے سزا دی جائے گی اور وہ اپنے لیے اللہ کو چھوڑ کر کوئی سرپرست نہیں پائے گا اور نہ کوئی مددگار (123) اور جو کوئی نیک کام انجام دے گا، خواہ مرد ہو یا عورت، درانحالیکہ وہ باایمان ہو تو یہ لوگ بہشت میں داخل ہوں گے اور ان پر ذرا بھی ظلم نہ ہو گا (124) اور اس سے بڑھ کر کس کا دین اچھا ہو گا کہ جو اپنے کو اللہ کے سپرد کردے درانحالیکہ وہ اعمال اچھے کرتا رہے اور ابرہیم ٌ حنیف کی ملت کا پیرو ہو اور اللہ نے ابراہیم ٌ کو اپنا خلیل بنایا تھا (125) اور اللہ کا ہے جو کچھ آسمانوں میں ہے اور جو زمین میں ہے اور اللہ ہر چیز پر حاوی ہے (126) اور آپ سے عورتوں کے بارے میں دریافت کرتے ہیں۔ کہہ دیجئے کہ اللہ ان کے بارے میں تمہیں احکام بتلاتا ہے اور جو تم لوگوں کو پڑھ کر سنایا جاتا ہے قانون الٰہی میں ان یتیم عورتوں کے بارے میں ہے جنہیں تم جو ان کا حق مقرر ہے، وہ تو دیتے نہیں اور یہ چاہتے ہو کہ ان سے نکاح کرلو اور بے بس و بے کس لڑکوں کے بارے میں اور یہ کہ تم یتیموں کے بارے میں انصاف برقرار رکھو اور جو بھلائی تم کرو گے تو اللہ اس سے یقینا واقف ہوگا (127) اور اگر کوئی عورت اپنے شوہر کی طرف سے حق تلفی یا بے رخی محسوس کرے تو ان دونوں کے لیے اس میں کوئی مضائقہ نہیں کہ وہ آپس میں کسی صورت سے صلح کرلیں اور صلح تو بڑی اچھی چیز ہے اور نفوس عموما تنگ دلی پر آمادہ رہتے ہیں اور اگر بھلائی کرو اورپرہیز گاری سے کام لو تو یقینا اللہ تمہارے اعمال سے خوب باخبر ہے (128) اور تم ہرگز عورتوں کے درمیان پوری برابری قائم نہیں رکھ سکو گے، چاہے اس کے خواہش مند بھی ہو مگر پورا پورا انحراف تو نہ کرو کہ اسے گویا بیچوں بیچ میں لٹکا ہوا چھوڑ دو اور اگر صلح پسندی اورپرہیز گاری سے کام لو تو بلاشبہ اللہ بخشنے والا ہے، بڑا مہربان (129) اور اگر دونوں ایک دوسرے سے الگ ہو جائیں تو اللہ ہر ایک کو اپنے خزانہ سے عطا کرے گا اور اللہ بڑی سمائی رکھنے والا ہے، ہر کام بالکل درست کرنے والا (130) اور اللہ کا ہے جو کچھ آسمانوں میں ہے اور جو زمین میں ہے، اور ہم نے ہدایت کی ہے انہیں کہ جن کو تمہارے پہلے کتاب دی گئی تھی اور تمہیں کہ اللہ کے غضب سے بچو اور اگر تم کفر احتیار کرو گے تو اللہ کا ہے جو کچھ آسمانوں میں ہے اور جو زمین میں ہے اور اللہ بے نیاز ہے، تعریفوں کا حق دار (131) اور اللہ کا ہے جو آسمانوں میں ہے اور جو زمین میں ہے اور اللہ سے بڑھ کر کون کارساز ہے (132) اگر وہ چاہے تو تمہیں اے آدمیو!ختم کر دے اور دوسروں کو لے آئے اور اللہ اس پر بالکل قادر ہے (133) جو دنیاوی صلہ کا طلبگار ہو گا تو اللہ کے پاس دنیا اور آخرت دونوں ہی کا صلہ ہے اور اللہ سننے والا ہے، دیکھنے والا (134) اے ایمان والو!تمہیں انصاف پر استقلال کے ساتھ قائم رہنا چاہیے اللہ کا گواہ ہوتے ہوئے خواہ خود اپنے خلاف ہو یا ماں باپ اورعزیز و اقارب کے۔ وہ چاہے مالدار ہو اور چاہے تنگدست، بہر حال اللہ ان دونوں کا زیادہ بہی خواہ ہے لہذا انصاف کے موقع پر نفساتی خواہش کی پیروی نہ کرو اور اگر تم نے حقیقت کو بدلہ یا چشم پوشی کی تو یقینا اللہ جو کچھ تم کرو گے، اس سے باخبر ہے (135) اے ایمان لانے والو!ایمان لاؤ اللہ اور اس کے پیغمبر اور اس کتاب پر جو اس نے اپنے پیغمبر پر اتاری ہے اور اس کتاب پر جو پہلے اس نے اتاری تھی اور جو انکار کرے اللہ اور اس کے فرشتوں اور اس کی کتابوں اور اس کے پیغمبروں اور روز آخرت کا وہ سخت گمراہی میں مبتلا ہوا (136) بلاشبہ وہ جو ایمان لائے، پھر کفر اختیار کیا، پھر ایمان لائے پھر کفر اختیار کیا، پھر کفر میں اپنے اور اضافہ کردیا، اللہ ان کو بخشنے کا نہیں ہے اور نہ انہیں منزل تک پہنچانے کا ہے (137) مژدہ سنائیے منافقوں کو کہ ان کے لیے دردناک عذاب ہے (138) وہ جو اہل ایمان کو چھوڑ کر کافروں کو اپنا حوالی موالی بناتے ہیں، کیا یہ ان کے پاس عزت کے طلبگار ہیں؟عزت تو تمام و کمال اللہ کے اختیار میں ہے (139) اور اس نے تم پر قرآن میں یہ اتار دیا ہے کہ جب سنو آیات الٰہی کو کہ ان کا انکار ہو رہا ہے اور ان کا مذاق اڑایا جا رہا ہے تو ان لوگوں کے پاس مت بیٹھو، جب تک کہ وہ کسی اور گفتگو میں مصروف نہ ہو جائیں۔ ورنہ تم انہی کے ایسے قرار پاؤ گے۔ بلاشبہ اللہ تمام منافقوں اور کافروں کو دوزخ میں اکٹھا کر دے گا (140) وہ جو تمہارے ساتھ موقع پر نظر رکھتے ہیں تو اگر تمہیں اللہ کی طرف سے فتح ہو گئی تو کہتے ہیں کیا ہم تمہارے ساتھ نہ تھے اور اگر کافروں کو کچھ کامیابی ہو گئی تو کہتے ہیں کہ کیا ہم تم پر قابو نہ رکھتے تھے پھر بھی ہم نے مسلمانوں سے تمہاری حفاظت نہیں کی۔ اب اللہ ہی تمہارے درمیان روز قیامت فیصلہ کرے گا اور اللہ ہرگز کافروں کا مسلمانوں پر دسترس قرار نہیں دے گا (141) بلاشبہ منافق لوگ اللہ کو دھوکہ دینا چاہتے ہیں حالانکہ کہ وہ خود انہیں دھوکہ میں رکھ رہا ہے اور جب وہ نماز کے لیے کھڑے ہوتے ہیں تو الکساتے ہوئے کھڑے ہوتے ہیں وہ لوگوں کو دکھاتے ہیں اور اللہ کو یاد نہیں کرتے مگر تھوڑا سا (142) وہ بیچوں بیچ میں ڈانواڈول ہیں نہ ان کی طرف اور نہ ان کی طرف جسے اللہ بھٹکنے دے، اس کے لیے تم کوئی راستہ نکال نہیں سکتے (143) اے ایمان لانے والو!اہل ایمان کو چھوڑ کر کافروں کو حوالی موالی نہ بناؤ۔ کیا تم چاہتے ہو کہ اللہ کی طرف سے تم اپنے خلاف کھلا ہوا الزام عائد کرلو (144) بلاشبہ منافق لوگ آتش جہنم کے سب سے نیچے والے طبقہ میں ہوں گے اور ہرگز تم ان کا کوئی مددگار نہ پاؤ گے (145) سوا ان کے جنہوں نے توبہ کرلی اور اعمال درست کرلیے اور اللہ سے وابستہ ہو گئے اور اللہ کی اطاعت خلوص کے ساتھ کرنے لگے تو یہ لوگ ایمان والوں کے ساتھ ہوں گے اور اہل ایمان کواللہ بہت بڑا اجر و ثواب عطا فرمائے گا (146) اللہ تمہیں عذاب کرکے کیا کرے گا!اگر تم شکر گزار رہو اور ایمان اختیار کرو اور اللہ قدردان ہے، بڑا جاننے والا (147) اللہ برملابدگوئی کو پسند نہیں کرتا، سوا اس کے جس پر ظلم ہوا ہو۔ اور اللہ سننے والا ہے، بڑا جاننے والا (148) اگر کسی نیکی کو ظاہر کرو یا اسے چھپاؤ یا کسی برائی سے درگزر کرو تو بلاشبہ اللہ معاف کرنے والا ہے، بڑا قدرت رکھنے والا (149) بلاشبہ وہ جو اللہ اور اس کے پیغمبر کا انکار کرتے ہیں اور اللہ اور اس کے پیغمبروں میں تفریق کرناچاہتے ہیں کہ ہم کچھ پر ایمان لاتے ہیں اور کچھ کا انکار کرتے ہیں اور اس کے بیچ میں ایک راستہ اختیار کرنا چاہتے ہیں (150) یہ ہیں حقیقت میں کافر لوگ، اور ہم نے کافروں کے لیے توہین آمیز سزا مہیا کررکھی ہے (151) اور وہ جو اللہ اور اس کے پیغمبروں پر ایمان لائے اور ان میں سے کسی کے درمیان تفریق نہیں کی، یہ وہ ہوں گے جنہیں وہ ان کے اجر و ثواب عطا کرے گا اور اللہ بڑا بخشنے والا ہے، بہت مہربان (152) آپ سے اہل کتاب یہ فرمائش کرتے ہیں کہ آپ ان پر آسمان سے لکھی لکھائی کتاب اتاریں۔ انہوں نے موسیٰ سے تو اس سے بھی بڑی چیز کی فرمائش کی تھی اور کہا تھا ہمیں اللہ کو کھلم کھلا دکھلا دیجئے تو ان پر ان کی اس زیادتی کی وجہ سے بجلی گری، پھر انہوں نے بعد اس کے کہ کھلی ہوئی نشانیاں ان کے پاس آئیں، گو سالہ تیار کیا تو ہم نے اس سے درگزر کیا اور موسیٰ کو ہم نے نمایاں غلبہ عطا کیا (153) اور ہم نے کوہ طور کو اونچا کیا ان سے عہد لینے کے لیے اور ہم نے ان سے کہا کہ دروازہ میں سے سجدہ کرتے ہوئے داخل ہو اور ان سے ہم نے کہا کہ ہفتہ کے دن کے بارے میں قانون الٰہی سے تجاوز نہ کرو اور ان سے ہم نے مضبوط عہد لیا (154) تو ان کے اپنے عہد کو توڑنے اور آیات الٰہی کے ساتھ ان کے کفر اختیار کرنے اور پیغمبروں کو ناحق ان کے قتل کرنے اور ان کے اس قول کی وجہ سے کہ ہمارے دلوں پر تو غلاف چڑھے ہوئے ہیں بلکہ اللہ نے ان پر ان کے کفر کے سبب سے مہر کردی ہے تو وہ ایمان نہیں رکھتے مگر بہت کم (155) اور ان کے کفر کی وجہ سے اور مریم پر بڑا اتہام لگانے کی وجہ سے (156) اور ان کے اس کہنے سے کہ ہم نے خدا کے پیغمبر مسیح عیسیٰ فرزند مریم کو قتل کردیا حالاں کہ انہوں نے ان کو نہ قتل کیا اور نہ سولی پر چڑھایا بلکہ انہیں شباہت محسوس کرائی گئی اور جنہوں نے اس بارے میں اختلاف کیا، یقینا وہ اس کے متعلق شک میں ہیں۔ انہیں سوا گمان کی پیروی کے کوئی علم نہیں ہے اور وہ انہیں یقینا قتل نہیں کرپائے (157) بلکہ انہیں اللہ نے اپنی طرف اٹھا لیا اور اللہ زبردست ہے، بالکل صحیح کام کرنے والا (158) اور اہل کتاب میں کوئی نہیں ہے مگر یہ کہ وہ ضرور ان پر ان کے مرنے سے پہلے ایمان لے آئیگا، اور روز قیامت وہ ان سب کے خلاف گواہ ہوں گے (159) تو یہودیوں کے بڑے ظالمانہ رویہ کے سبب سے ہم نے ان پر وہ اچھی اچھی نعمتیں جو ان کے لیے حلال تھیں، حرام کردیں اور ان کے روکنے کی وجہ سے بہت سوں کو اللہ کے راستے سے (160) اور ان کے سود لینے کی وجہ سے حالانکہ انہیں اس کی ممانعت تھی اور لوگوں کے مال کو ان کے ناحق کھانے کی وجہ سے اور ہم نے ان میں سے جو کفر پر قائم رہیں ان کے لیے دردناک عذاب مہیا کررکھا ہے (161) اور ان میں سے جو علم میں مضبوط ہیں اور مسلمان کہ ایمان رکھتے ہیں اس پر جو آپ پر اتارا گیا اور جو آپ کے پہلے اتارا گیا تھا اور نماز کے پابندی سے ادا کرنے والے اور زکوٰة دینے والے اور اللہ اور روز آخرت پر یقین رکھنے والے، یہ وہ ہیں کہ ان کو ہم عطا کریں گے بہت بڑا اجر وثواب (162) بلاشبہ ہم نے آپ کی طرف اسی طرح وحی بھیجی ہے جس طرح وحی بھیجی تھی نوح اور ان کے بعد والے پیغمبروں کی طرف اور وحی بھیجی تھی ابراہیم ، اسمعیل ، اسحاق ، یعقوب اور اولاد یعقوب اور عیسیٰ ، ایوب، یونس، ہارون اور سلیمان پر اور ہم نے داؤد کو زبور عطا کی تھی (163) اور کچھ پیغمبر وہ جن کے واقعات ہم نے آپ سے اس کے پہلے بیان کر دیے ہیں اور کچھ وہ پیغمبر جن کے حالات ہم نے آپ سے بیان نہیں کیے ہیں اور اللہ نے موسیٰ سے کلام کیا جیسا کلام کرنے کا حق تھا (164) اس شان کے پیغمبر جو مژدہ سنانے والے اور ڈرانے والے تھے تاکہ ان پیغمبروں کے بعد لوگوں کے پاس اللہ کے مقابلہ میں کوئی دلیل نہ رہے اور اللہ زبردست ہے، صحیح صحیح کام کرنے والا (165) مگر اللہ گواہی دے رہا ہے اسکی جو اس نے آپ پر اتارا ہے۔ اس نے اسے اتارا ہے اپنے خاص علم کے ساتھ اور فرشتے گواہی دیتے ہیں اور اللہ سے بڑھ کر کون گواہ ہو گا (166) یقینا جنہوں نے کفر اختیار کیا اور اللہ کی راہ سے روکا، وہ سخت گمراہی میں مبتلا ہوئے (167) یقینا جنہوں نے کفر اختیار کیا اور ظلم کیا، اللہ انہیں بخشنے کا نہیں ہے اور نہ انہیں کوئی راستہ دکھانے کا ہے (168) سوا دوزخ کے راستے کے جس میں وہ ہمیشہ ہمیشہ رہیں گے اور یہ اللہ کے لیے بہت آسان ہے (169) اے انسانو!وہ پیغمبر تمہارے پروردگار کی طرف سے پیغام حق کو لیے ہوئے آگیا ہے تو ایمان لے آؤ، تمہارے لیے بہتر ہے اور اگر انکار کرو گے تو بلاشبہ اللہ کے قبضہ میں وہ سب کچھ ہے جو آسمانوں اور زمین میں ہے اور اللہ جاننے والا ہے، بالکل صحیح کام کرنے والا (170) اے اہل کتاب!اپنے مذہب میں غلو سے کام نہ لو اور اللہ کی طرف سوا سچ بات کے کچھ منسوب نہ کرو۔ مریم کے بیٹے عیسیٰ مسیح تو بس اللہ کے پیغمبر اور اس کا کلمہ ہیں جسے اس نے مریم کی طرف بھیجا، اور اس کی طرف کی ایک روح ہیں لہٰذا اللہ اور اس کے پیغمبروں پر ایمان لاؤ اور تثلیث کے قائل نہ ہو۔ باز آجاؤ، تمہارے لیے بہتر ہے۔ اللہ تو بس ایک اکیلا خدا ہے۔ پاک ہے اس کی ذات اس سے کہ اس کے کوئی اولاد ہو۔ جو آسمانوں میں ہے اور جو زمین میں ہے، سب اسی کا ہے اور اللہ کارسازی کے لیے کافی ہے (171) مسیح ہرگزاس کواپنے لیے عارنہ سمجھیں گے کہ وہ اللہ کہ بندے ہوں اورنہ مقرب فرشتے اور جو اس کی بندگی سے ننگ محسوس کرے گا اور غرور کرے گاتو اللہ ان سب کوجلدہی اپنی جانب محشورفرمائے گا (172) تو جس نے ایمان اختیارکیاہوگااورنیک اعمال کیے ہوں گے، انہیں ان کا پوراپورا صلہ دے گااور انہیں اپنے فضل و کرم سے اور زیادہ عطا کرے گااور جنہوں نے ننگ محسوس کیااور غرور کیاہو گا، انہیں وہ دردناک عذاب کی سزا دے گا اور وہ اپنے لیے اللہ کوچھوڑ کر کوئی سرپرست نہیں پائیں گے اور نہ کوئی مدد گار (173) اے انسانو!تمہاری طرف کا کھلا ہواثبوت آگیاہے اور ہم نے تمہاری طرف ایک نمایاں روشنی بھیجی ہے (174) تو جنہوں نے ایمان اختیارکیا اللہ کے ساتھ اور مضبوطی سے اس کا دامن تھام لیا تو وہ انہیں اپنی رحمت اورفضل و کرم میں داخل کرے گا اور اپنی طرف پہنچانے والے سیدھے راستے پر لگا دے گا (175) آپ سے حکم شرعی دریافت کرتے ہیں کہیے کہ اللہ تمہیں کلالہ کے بارے میں حکم شرع بتاتا ہے۔ اگر کوئی شخص ایسامر جائے جس کی اولاد موجودنہ ہو اور اس کی ایک بہن ہو تواس کا آدھا متروکہ ہو گا اور وہ اس کا پورا وارث ہو گااگر اس کی اولاد نہ ہو۔ اب اگر دو بہنیں ہوں تو انہیں دو تہائی متروکہ ملے گااور اگر بھائیوں کی صنف میں مردعورت دونوں ہوں تو مرد کو دو عورتوں کے برابر ملے گا۔ اللہ تمہارے لئے صاف صاف بیان کرتا ہے کہ تم گمراہ نہ ہواور اللہ ہر چیز کا جاننے والاہے (176)
پچھلی سورت:
سورہ آل عمران
سورہ 4 اگلی سورت:
سورہ مائدہ
قرآن کریم

(1) سورہ فاتحہ (2) سورہ بقرہ (3) سورہ آل عمران (4) سورہ نساء (5) سورہ مائدہ (6) سورہ انعام (7) سورہ اعراف (8) سورہ انفال (9) سورہ توبہ (10) سورہ یونس (11) سورہ ہود (12) سورہ یوسف (13) سورہ رعد (14) سورہ ابراہیم (15) سورہ حجر (16) سورہ نحل (17) سورہ اسراء (18) سورہ کہف (19) سورہ مریم (20) سورہ طہ (21) سورہ انبیاء (22) سورہ حج (23) سورہ مؤمنون (24) سورہ نور (25) سورہ فرقان (26) سورہ شعراء (27) سورہ نمل (28) سورہ قصص (29) سورہ عنکبوت (30) سورہ روم (31) سورہ لقمان (32) سورہ سجدہ (33) سورہ احزاب (34) سورہ سباء (35) سورہ فاطر (36) سورہ یس (37) سورہ صافات (38) سورہ ص (39) سورہ زمر (40) سورہ غافر (41) سورہ فصلت (42) سورہ شوری (43) سورہ زخرف (44) سورہ دخان (45) سورہ جاثیہ (46) سورہ احقاف (47) سورہ محمد (48) سورہ فتح (49) سورہ حجرات (50) سورہ ق (51) سورہ ذاریات (52) سورہ طور (53) سورہ نجم (54) سورہ قمر (55) سورہ رحمن (56) سورہ واقعہ (57) سورہ حدید (58) سورہ مجادلہ (59) سورہ حشر (60) سورہ ممتحنہ (61) سورہ صف (62) سورہ جمعہ (63) سورہ منافقون (64) سورہ تغابن (65) سورہ طلاق (66) سورہ تحریم (67) سورہ ملک (68) سورہ قلم (69) سورہ حاقہ (70) سورہ معارج (71) سورہ نوح (72) سورہ جن (73) سورہ مزمل (74) سورہ مدثر (75) سورہ قیامہ (76) سورہ انسان (77) سورہ مرسلات (78) سورہ نباء (79) سورہ نازعات (80) سورہ عبس (81) سورہ تکویر (82) سورہ انفطار (83) سورہ مطففین (84) سورہ انشقاق (85) سورہ بروج (86) سورہ طارق (87) سورہ اعلی (88) سورہ غاشیہ (89) سورہ فجر (90) سورہ بلد (91) سورہ شمس (92) سورہ لیل (93) سورہ ضحی (94) سورہ شرح (95) سورہ تین (96) سورہ علق (97) سورہ قدر (98) سورہ بینہ (99) سورہ زلزال (100) سورہ عادیات (101) سورہ قارعہ (102) سورہ تکاثر (103) سورہ عصر (104) سورہ ہمزہ (105) سورہ فیل (106) سورہ قریش (107) سورہ ماعون (108) سورہ کوثر (109) سورہ کافرون (110) سورہ نصر (111) سورہ مسد (112) سورہ اخلاص (113) سورہ فلق (114) سورہ ناس


متعلقہ مآخذ

پاورقی حاشیے

  1. دانشنامه قرآن و قرآن پژوهی، ج2، ص1237


مآخذ