سورہ حشر

ویکی شیعہ سے
یہاں جائیں: رہنمائی، تلاش کریں
مجادلہ سورۂ حشر ممتحنہ
سوره حشر.jpg
ترتیب کتابت: 59
پارہ : 28
نزول
ترتیب نزول: 101
مکی/ مدنی: مدنی
اعداد و شمار
آیات: 24
الفاظ: 448
حروف: 971

سورہ حَشْر قرآن کی 59ویں اور مدنی سورتوں میں سے ہے اور قرآن کے 28ویں پارے میں واقع ہے۔ اس سورت کا نام اس کی دوسری آیت سے لیا گیا ہے۔ اس سورت میں مدینہ سے یہودیوں کو نکالے جانے کی طرف اشارہ کیا گیا ہے۔ سورہ حشر کا آغاز خدا کی تسبیح جبکہ اس کا اختتام خدا کی تقدیس سے ہوتا ہے۔ جنگ بنی‌ نضیر میں مسلمانوں کے ہاتھوں یہودیوں کی شکست، جنگ کے بغیر حال ہونے والے اموال اور غنائم کی تقسیم کا حکم، منافقین کی ملامت اور ان کی منافقت کا برملا ہونا نیز مہاجرین کی ایثار و فداکاری کی تعریف و تمجید اس سورت کے مضامین میں سے ہیں۔

احادیث میں آیا ہے کہ جو شخص سورہ حشر کی تلاوت کرے گا تو دوسری تمام موجودات اس شخص پر صلوات بھیجتے ہیں اور اس کی مغفرت کیلئے دعا کرتے ہیں اور اگر تلاوت کے دن یا رات کو اس شخص کی موت واقع ہو تو اسے شہیدوں میں شمار کیا جائے گا۔