سورہ حاقہ

ویکی شیعہ سے
یہاں جائیں: رہنمائی، تلاش کریں
قلم سورۂ حاقہ معارج
سوره حاقه.jpg
ترتیب کتابت: 69
پارہ : 29
نزول
ترتیب نزول: 78
مکی/ مدنی: مکی
اعداد و شمار
آیات: 52
الفاظ: 561
حروف: 1133

سورہ حاقہ [سُورَةُ الْحَاقَّةُ] اس سورت کو اس لئے حاقّہ (قیامت کا ایک نام) کہا جاتا ہے کہ یہ لفظ تین مرتبہ از اسی پہلی تین آیتوں میں مذکور ہے۔ یہ سورت حجم و کمیت کے لحاظ سے سور مفصلات کے زمرے میں آتی ہے؛ یعنی چھوٹی سورتوں میں سے ہے جو عاد، ثمود اور فرعون کی طرف اشارہ کرتی ہے۔

سوره حاقہ، نام اور کوائف

  • اس سورت کو حاقہ کہا جاتا ہے کیونکہ اس کی پہلی دو آیتوں میں لفظ "الحاقہ" تین مرتبہ آیا ہے:

الْحَاقَّةُ﴿1﴾ مَا الْحَاقَّةُ﴿2﴾ وَمَا أَدْرَاكَ مَا الْحَاقَّةُ﴿3﴾ (ترجمہ: ہوکے رہنے والی بات کیا ہے (1) وہ ہو کے رہنے والی بات ہے (2) اور تمہیں کیا خبر کہ وہ ہوکے رہنے والی بات کیا ہے (3)) [ سورہ حاقہ–1 تا 3]

یہ لفظ "حق" سے ماخوذ ہے اور ہر حتمی اور ہو کر رہنے والے حق اور رونما ہونے والے پر اس کا اطلاق ہوتا ہے؛ اسی معنی میں اور اسی مناسبت سے قیامت کو قیامت کہا جاتا ہے۔ اور حاقہ قیامت کے ناموں میں سے ایک ہے۔

  • اس سورت کی آیتوں کی تعداد 52، قراء بصرہ و شام کے نزدیک 51 اور دیگر قراء کے نزدیک 50 ہے اور اول الذکر عدد مشہور ہے۔
  • اس سورت کے الفاظ کی تعداد 261 اور اس کے حروف کی تعدد 1133 ہے۔
  • سورہ حاقہ، ترتیب مصحف کے لحاظ سے قرآن کی انہترویں اور ترتیب نزول کے لحاظ سےاٹھترویں نیز مکی سورت ہے۔
  • حجم و کمیت کے لحاظ سے مفصلات کے زمرے میں آتی ہے اور نسبتا چھوٹی سورتوں میں سے ہے جو انتیسویں سورت کے دوسرے حزب کے آغاز میں آئی ہے۔
  • یہ ان سورتوں میں سے ہے جو "آیاتِ قسم" پر مشتمل ہے (آیات 38 و 39)۔

مفاہیم

  • یہ سورت عاد، ثمود اور فرعون کی داستان بیان کرتی ہے۔
  • قیامت اور دوزخیوں کے حالات اور انہیں درپیش عذابوں کی طرف اشارہ کرتے ہوئے دو جماعتوں یعنی "اصحاب یمین" ـ جن کا نامۂ اعمال ان کے داہنے ہاتھ میں دیا جاتا ہے اور وہ کہتے ہیں کہ ہم اس دن کے منتظر تھے ـ اور "اصحاب شمال" ـ جن کا نامۂ اعمال ان کے بائیں ہاتھ میں دیا جائے گا اور وہ کہتے ہیں کہ "کاش ہمیں ہمارا نامۂ اعمال ہمیں نہ دیا جاتا" ـ کے حالات بیان کئے گئے ہیں۔[1]
سورہ حاقہ کے مضامین[2]
 
 
 
 
انسان کے انجام میں قیامت کے عقیدے کی تأثیر
 
 
 
 
 
 
 
 
 
 
 
 
 
 
 
 
 
 
 
 
 
 
 
 
تیسرا گفتار؛ آیہ ۳۸-۵۲
قیامت کے بارے میں قرآنی تعلیمات کی حقانیت
 
دوسرا گفتار؛ آیہ ۱۳-۳۷
انسان کی اخروی زندگی پر قیامت کے عقیدے کی تأثیر
 
پہلا گفتار؛ آیہ ۱-۱۲
دنیوی زندگی میں قیامت سے انکار کی تأثیر
 
 
 
 
 
 
 
 
 
 
 
 
پہلا مطلب؛ آیہ ۳۸-۴۷
قرآنی تعلیمات اللہ کا کلام ہے نہ کہ پیغمبر کا
 
پہلا مطلب؛ آیہ ۱۳-۱۶
دینا کا وقتی نظام ختم ہوتے ہی قیامت برپا ہونا
 
پہلا مطلب؛ آیہ ۱-۳
قیامت کی عظمت اور حقانیت
 
 
 
 
 
 
 
 
 
 
 
 
دوسرا مطلب؛ آیہ ۴۸-۵۲
قرآنی تعلیمات کی تین خصوصیات
 
دوسرا مطلب؛ آیہ ۱۷-۱۸
انسانوں کا اللہ کے حضور حاضری
 
دوسرا مطلب؛ آیہ ۴-۱۰
قیامت کے منکروں کا آسمانی عذاب سے ہلاک ہونا
 
 
 
 
 
 
 
 
 
 
 
 
 
 
 
تیسرا مطلب؛ آیہ ۱۹-۲۴
قیامت کے ماننے والوں کے لیے آخروی اجر
 
تیسرا مطلب؛ آیہ ۱۱-۱۲
مومنین اور انبیاء کے پیروکاروں کی نجات
 
 
 
 
 
 
 
 
 
 
 
 
 
 
چوتھا مطلب؛ آیہ ۲۵-۳۷
قیامت کے منکروں پر اخروی سزا


متن سورہ

سورہ حاقہ مکیہ ـ نمبر 69 ـ آیات 52 - ترتیب نزول 78
بِسْمِ اللّهِ الرَّحْمَنِ الرَّحِيمِ

الْحَاقَّةُ ﴿1﴾ مَا الْحَاقَّةُ ﴿2﴾ وَمَا أَدْرَاكَ مَا الْحَاقَّةُ ﴿3﴾ كَذَّبَتْ ثَمُودُ وَعَادٌ بِالْقَارِعَةِ ﴿4﴾ فَأَمَّا ثَمُودُ فَأُهْلِكُوا بِالطَّاغِيَةِ ﴿5﴾ وَأَمَّا عَادٌ فَأُهْلِكُوا بِرِيحٍ صَرْصَرٍ عَاتِيَةٍ ﴿6﴾ سَخَّرَهَا عَلَيْهِمْ سَبْعَ لَيَالٍ وَثَمَانِيَةَ أَيَّامٍ حُسُومًا فَتَرَى الْقَوْمَ فِيهَا صَرْعَى كَأَنَّهُمْ أَعْجَازُ نَخْلٍ خَاوِيَةٍ ﴿7﴾ فَهَلْ تَرَى لَهُم مِّن بَاقِيَةٍ ﴿8﴾ وَجَاء فِرْعَوْنُ وَمَن قَبْلَهُ وَالْمُؤْتَفِكَاتُ بِالْخَاطِئَةِ ﴿9﴾ فَعَصَوْا رَسُولَ رَبِّهِمْ فَأَخَذَهُمْ أَخْذَةً رَّابِيَةً ﴿10﴾ إِنَّا لَمَّا طَغَى الْمَاء حَمَلْنَاكُمْ فِي الْجَارِيَةِ ﴿11﴾ لِنَجْعَلَهَا لَكُمْ تَذْكِرَةً وَتَعِيَهَا أُذُنٌ وَاعِيَةٌ ﴿12﴾ فَإِذَا نُفِخَ فِي الصُّورِ نَفْخَةٌ وَاحِدَةٌ ﴿13﴾ وَحُمِلَتِ الْأَرْضُ وَالْجِبَالُ فَدُكَّتَا دَكَّةً وَاحِدَةً ﴿14﴾ فَيَوْمَئِذٍ وَقَعَتِ الْوَاقِعَةُ ﴿15﴾ وَانشَقَّتِ السَّمَاء فَهِيَ يَوْمَئِذٍ وَاهِيَةٌ ﴿16﴾ وَالْمَلَكُ عَلَى أَرْجَائِهَا وَيَحْمِلُ عَرْشَ رَبِّكَ فَوْقَهُمْ يَوْمَئِذٍ ثَمَانِيَةٌ ﴿17﴾ يَوْمَئِذٍ تُعْرَضُونَ لَا تَخْفَى مِنكُمْ خَافِيَةٌ ﴿18﴾ فَأَمَّا مَنْ أُوتِيَ كِتَابَهُ بِيَمِينِهِ فَيَقُولُ هَاؤُمُ اقْرَؤُوا كِتَابِيهْ ﴿19﴾ إِنِّي ظَنَنتُ أَنِّي مُلَاقٍ حِسَابِيهْ ﴿20﴾ فَهُوَ فِي عِيشَةٍ رَّاضِيَةٍ ﴿21﴾ فِي جَنَّةٍ عَالِيَةٍ ﴿22﴾ قُطُوفُهَا دَانِيَةٌ ﴿23﴾ كُلُوا وَاشْرَبُوا هَنِيئًا بِمَا أَسْلَفْتُمْ فِي الْأَيَّامِ الْخَالِيَةِ ﴿24﴾ وَأَمَّا مَنْ أُوتِيَ كِتَابَهُ بِشِمَالِهِ فَيَقُولُ يَا لَيْتَنِي لَمْ أُوتَ كِتَابِيهْ ﴿25﴾ وَلَمْ أَدْرِ مَا حِسَابِيهْ ﴿26﴾ يَا لَيْتَهَا كَانَتِ الْقَاضِيَةَ ﴿27﴾ مَا أَغْنَى عَنِّي مَالِيهْ ﴿28﴾ هَلَكَ عَنِّي سُلْطَانِيهْ ﴿29﴾ خُذُوهُ فَغُلُّوهُ ﴿30﴾ ثُمَّ الْجَحِيمَ صَلُّوهُ ﴿31﴾ ثُمَّ فِي سِلْسِلَةٍ ذَرْعُهَا سَبْعُونَ ذِرَاعًا فَاسْلُكُوهُ ﴿32﴾ إِنَّهُ كَانَ لَا يُؤْمِنُ بِاللَّهِ الْعَظِيمِ ﴿33﴾ وَلَا يَحُضُّ عَلَى طَعَامِ الْمِسْكِينِ ﴿34﴾ فَلَيْسَ لَهُ الْيَوْمَ هَاهُنَا حَمِيمٌ ﴿35﴾ وَلَا طَعَامٌ إِلَّا مِنْ غِسْلِينٍ ﴿36﴾ لَا يَأْكُلُهُ إِلَّا الْخَاطِؤُونَ ﴿37﴾ فَلَا أُقْسِمُ بِمَا تُبْصِرُونَ ﴿38﴾ وَمَا لَا تُبْصِرُونَ ﴿39﴾ إِنَّهُ لَقَوْلُ رَسُولٍ كَرِيمٍ ﴿40﴾ وَمَا هُوَ بِقَوْلِ شَاعِرٍ قَلِيلًا مَا تُؤْمِنُونَ ﴿41﴾ وَلَا بِقَوْلِ كَاهِنٍ قَلِيلًا مَا تَذَكَّرُونَ ﴿42﴾ تَنزِيلٌ مِّن رَّبِّ الْعَالَمِينَ ﴿43﴾ وَلَوْ تَقَوَّلَ عَلَيْنَا بَعْضَ الْأَقَاوِيلِ ﴿44﴾ لَأَخَذْنَا مِنْهُ بِالْيَمِينِ ﴿45﴾ ثُمَّ لَقَطَعْنَا مِنْهُ الْوَتِينَ ﴿46﴾ فَمَا مِنكُم مِّنْ أَحَدٍ عَنْهُ حَاجِزِينَ ﴿47﴾ وَإِنَّهُ لَتَذْكِرَةٌ لِّلْمُتَّقِينَ ﴿48﴾ وَإِنَّا لَنَعْلَمُ أَنَّ مِنكُم مُّكَذِّبِينَ ﴿49﴾ وَإِنَّهُ لَحَسْرَةٌ عَلَى الْكَافِرِينَ ﴿50﴾ وَإِنَّهُ لَحَقُّ الْيَقِينِ ﴿51﴾ فَسَبِّحْ بِاسْمِ رَبِّكَ الْعَظِيمِ ﴿52﴾

قرآن کریم


ترجمہ
اللہ کے نام سے جو بہت رحم والا نہایت مہربان ہے

ہوکے رہنے والی بات کیا ہے (1) وہ ہو کے رہنے والی بات ہے (2) اور تمہیں کیا خبر کہ وہ ہوکے رہنے والی بات کیا ہے (3) قبیلہ ثمود اور عاد نے اس تباہ کن ساعت (قیامت) کو جھٹلایا تو (4) ثمود جو تھے وہ بڑی زبردست آفت سے ہلاک کئے گئے (5) اور عاد کے لوگ ہلاک کئے گئے ایک بہت تیز وتند سرد آندھی سے (6) جسے اس نے ان پر قائم رکھا لگاتار سات رات اور آٹھ دن، تو تم (ہوتے) تو دیکھتے ان لوگوں کو زمین پر گرا ہوا اس طرح جیسے کھجور کے درخت کے اندر سے کھوکھلے تنے ہوں (7) تو کیا تمہیں ان میں سے باقی رہنے والا کوئی بھی نظر آئے گا؟(8) فرعون اور اس کے پہلے والوں اور (قوم لوط کی) تہہ وبالا ہو جانے والی بستیوں (کے لوگوں نے) یہی غلطی کی (9) اور اس طرح اپنے پروردگار کے پیغمبر کی نافرمانی کی تو اس (خدا) نے انہیں حد سے زیادہ سخت گرفت میں لے لیا (10) جب پانی کا زور ہوا تو ہم نے تم لوگوں کو کشتی پر سوار کیا تا کہ اسے تمہارے لئے یادگار واقعہ بنائیں (11) اور اسے محفوظ رکھیں محفوظ رکھنے والے کان (12) تو جب ایک دفعہ صور پھونکا جائے گا (13) اور زمین اور پہاڑوں کو اٹھا کر ایک ہی ضرب میں ریزہ ریزہ کر دیا جائے گا (14) تو اس وقت وہ ہو جانے والی بات ہو جائے گی (15) اور آسمان شق ہو جائے گا، اس کا نظام اس وقت بالکل سست ہو جائے گا (16) اور فرشتے اس کے اطراف میں ہوں گے اور تمہارے پروردگار کے عرش کو اس دن ان کے اوپر آٹھ فرشتے اٹھائے ہوں گے (17) اس دِن تم سب کی پیشی ہو گی اس طرح کہ تمہاری کوئی بات چھپی نہ رہے گی (18) تو جسے اس کا نامہ عمل دائیں ہاتھ میں دیا جائے گا، وہ کہے گا آؤ پڑھو میرا نامہ عمل (19) میں خوب جانتا رہا کہ مجھے حساب دینا ہے (20) تو یہ شخص اپنی پسند کے عیش و آرام کی زندگی میں ہو گا (21) بلند منزل بہشت میں (22) جس کے بالکل تیار پھل لٹکے ہوئے ان کے نزدیک ہوں گے (23) خوشگواری کے ساتھ کھاؤ پیو ان نیک کاموں کی بدولت جو تم گزرے ہوئے دنوں میں کرتے رہے (24) اور جسے اس کانامہ اعمال بائیں ہاتھ میں دیا جائے گا وہ کہے گا کاش میرا نامہ اعمال مجھے نہ دیا جاتا (25) اور مجھے خبر نہ ہوتی کہ میرا حساب کتاب کیاہے؟(26) کاش پہلے مجھے جو موت آئی تھی وہی بس فیصلہ کن ہوتی (27) (ہائے) میرے مال نے مجھے کچھ فائدہ نہ دیا (28) میرا اثر اور اقتدار بھی سب برباد ہو گیا (29) پکڑو اسے اور ہاتھوں کو گردن سے ملا کر جکڑ دو (30) پھر دوزخ کی آگ میں ہمیشہ کے لئے ڈال دو (31) پھر ایک ایسی زنجیر میں جس کی لمبائی ستر ہاتھ ہے، اسے باندھ دو (32) یہ اللہ پر جو بزرگ وبرتر ہے ایمان نہ رکھتا تھا (33) اور کسی غریب کو کھانا دینے کی تحریک نہیں کرتا تھا (34) تو آج اس کا کوئی مددگار نہیں ہے (35) اور نہ زخموں سے بہتے ہوئے مواد کے سوا اس کی کوئی غذا ہے (36) جسے نہیں کھانا پڑتا سوا خطاکاروں کے کسی کو (37) تو نہیں میں قسم کھاتا ہوں اس کی جو تمہیں دکھائی دیتا ہے (38) اور جو تمہیں دکھائی نہیں دیتا (39) یہ یقینا ایک معزز پیغام رساں کا قول ہے (40) کسی شاعر کا کلام نہیں ہے، تم لوگ بہت کم ایمان لاتے ہو (41) نہ وہ کسی کاہن کی گفتگو ہے بہت کم نصیحت قبول کرتے ہو (42) وہ اتارا ہوا ہے تمام جہانوں کے پروردگار کی طرف سے (43) اور اگر وہ ہم پر کوئی قول خود بنا کر منڈھتا تو (44) ہم اس کا دہنا ہاتھ پکڑتے (45) پھر اس کی رگ حیات کو کاٹ دیتے (46) تو تم میں سے کوئی اس کے آگے سدراہ نہیں ہو سکتا تھا (47) اور بلاشبہ یہ نصیحت ہے پرہیزگاروں کے لئے (48) اور ہم خوب جانتے ہیں کہ تم میں سے بہت سے جھٹلانے والے ہیں (49) اور یقینا یہ غم وغصّہ کا باعث ہے کافروں کے لئے (50) اور بلاشبہ وہ بالکل یقینی حقیقت ہے تو آپ (ان کی پرواہ نہ کیجئے) (51) اپنے پروردگار بزرگ کی تسبیح کرتے رہئے (52)


پچھلی سورت:
سورہ قلم
سورہ 69 اگلی سورت:
سورہ معارج
قرآن کریم

(1) سورہ فاتحہ (2) سورہ بقرہ (3) سورہ آل عمران (4) سورہ نساء (5) سورہ مائدہ (6) سورہ انعام (7) سورہ اعراف (8) سورہ انفال (9) سورہ توبہ (10) سورہ یونس (11) سورہ ہود (12) سورہ یوسف (13) سورہ رعد (14) سورہ ابراہیم (15) سورہ حجر (16) سورہ نحل (17) سورہ اسراء (18) سورہ کہف (19) سورہ مریم (20) سورہ طہ (21) سورہ انبیاء (22) سورہ حج (23) سورہ مؤمنون (24) سورہ نور (25) سورہ فرقان (26) سورہ شعراء (27) سورہ نمل (28) سورہ قصص (29) سورہ عنکبوت (30) سورہ روم (31) سورہ لقمان (32) سورہ سجدہ (33) سورہ احزاب (34) سورہ سباء (35) سورہ فاطر (36) سورہ یس (37) سورہ صافات (38) سورہ ص (39) سورہ زمر (40) سورہ غافر (41) سورہ فصلت (42) سورہ شوری (43) سورہ زخرف (44) سورہ دخان (45) سورہ جاثیہ (46) سورہ احقاف (47) سورہ محمد (48) سورہ فتح (49) سورہ حجرات (50) سورہ ق (51) سورہ ذاریات (52) سورہ طور (53) سورہ نجم (54) سورہ قمر (55) سورہ رحمن (56) سورہ واقعہ (57) سورہ حدید (58) سورہ مجادلہ (59) سورہ حشر (60) سورہ ممتحنہ (61) سورہ صف (62) سورہ جمعہ (63) سورہ منافقون (64) سورہ تغابن (65) سورہ طلاق (66) سورہ تحریم (67) سورہ ملک (68) سورہ قلم (69) سورہ حاقہ (70) سورہ معارج (71) سورہ نوح (72) سورہ جن (73) سورہ مزمل (74) سورہ مدثر (75) سورہ قیامہ (76) سورہ انسان (77) سورہ مرسلات (78) سورہ نباء (79) سورہ نازعات (80) سورہ عبس (81) سورہ تکویر (82) سورہ انفطار (83) سورہ مطففین (84) سورہ انشقاق (85) سورہ بروج (86) سورہ طارق (87) سورہ اعلی (88) سورہ غاشیہ (89) سورہ فجر (90) سورہ بلد (91) سورہ شمس (92) سورہ لیل (93) سورہ ضحی (94) سورہ شرح (95) سورہ تین (96) سورہ علق (97) سورہ قدر (98) سورہ بینہ (99) سورہ زلزال (100) سورہ عادیات (101) سورہ قارعہ (102) سورہ تکاثر (103) سورہ عصر (104) سورہ ہمزہ (105) سورہ فیل (106) سورہ قریش (107) سورہ ماعون (108) سورہ کوثر (109) سورہ کافرون (110) سورہ نصر (111) سورہ مسد (112) سورہ اخلاص (113) سورہ فلق (114) سورہ ناس


پاورقی حاشیے

  1. دانشنامه قرآن و قرآن پژوهی، ج2، صص1258۔
  2. خامہ‌گر، محمد، ساختار سورہ‌ہای قرآن کریم، تہیہ مؤسسہ فرہنگی قرآن و عترت نورالثقلین، قم، نشر نشرا، چ۱، ۱۳۹۲ش.


مآخذ

  • قرآن کریم، ترجمہ سید علی نقی نقوی (لکھنوی)۔
  • دانشنامه قرآن و قرآن پژوهی، ج2، به کوشش بهاء الدین خرمشاهی، تهران: دوستان-ناهید، 1377هجری شمسی۔