مشعل برداری

ویکی شیعہ سے
یہاں جائیں: رہنمائی، تلاش کریں
مشعل برداری
مشعل‌گردانی در قم.jpg
معلومات
زمان‌: عشرہ محرم
جغرافیائی حدود: ایرانعراق
انواع و اقسام: یہ رسم دو طریقوں یعنی نجفی اور کربلائی طرز پر انجام دی جاتی ہے۔
اہم مذہبی تہواریں
سینہ‌زنی، زنجیرزنی، اعتکاف، شب بیداری، تشییع جنازہ، متفرقات

مشعل برداری ایران اور عراق میں محرم کی عزاداری میں انجام دی جانے والی ایک رسم ہے۔ یہ رسم زیادہ تر محرم کے عشرے میں عراق و ایران کے مرکزی اور جنوبی علاقوں میں انجام پاتی ہے۔ اس آیین میں آتش دانوں کو سڑکوں، میدانوں اور مقدس جگہوں پر لے جایا (گھومایا) جاتا ہے۔

تاریخی پس منظر

تاریخی لحاظ سے مشعل برداری کی رسم کی دقیق تاریخ کا علم نہیں ہے۔ [1] کچھ لوگ اسے تقریبا ۵۰۰ سال پرانی رسم مانتے ہیں۔ [2] تاریخ کے بعض ادوار جیسے رضا شاہ پہلوی کے دور میں اس رسم پر پابندی تھی۔ [3] بعض علاقوں میں اس رسم کے دوسرے نام بھی ہیں جیسے اردکان یزد میں اسے تکلیف کہا جاتا ہے۔ [4]

انعقاد کا طریقہ

مشعل برداری کی رسم مختلف علاقوں میں مختلف طریقے سے انجام دی جاتی ہے۔ نجفی طریقے کے مطابق لکڑی یا دھات کے آتش دان سے ایک فریم بنایا جاتا ہے جسے ’’مشاعل‘‘ کہا جاتا ہے۔ عزاداری کے وقت آتش دانوں کو روشن کیا جاتا ہے اور مشاعل کو عمومی جگہوں، شہر کے چوراہوں اور مقدس کے باہر لے جایا جاتا ہے۔ مشاعل کے بالائی حصے کے زیادہ وزن کی وجہ سے اسے اٹھانے کے لئے بہت زیادہ جسمانی طاقت اور توانائی کی ضرورت ہوتی ہے۔ مشاعل مختلف سائز اور شکل کی ہوتی ہیں۔

جغرافیائی حدود

یہ رسم ایران اور عراق کے بعض شہروں میں انجام دی جاتی ہے۔ عراق میں مشعل برداری اکثر نجف، کاظمین اور کربلا میں کی جاتی ہے۔ [5] ایران میں اکثر مرکزی و جنوبی علاقوں اور مختلف شہروں جیسے قم، شہر رے اور اردکان میں مشعل برداری کی میزبانی انجام دی جاتی ہے اور یہ رسم اکثر عربی لوگ انجام دیتے ہیں۔ [6]

رسم کے ایام

مشعل برداری مختلف علاقوں میں محرم کے عشرے کے مختلف دنوں میں انجام دی جاتی ہے۔ یہ رسم اکثر شب عاشور کو انجام دی جاتی ہے۔ [7]اہل نجف آٹھویں، نویں اور دسویں کی شب کو مشعل برداری کرتے ہیں۔ بعض علاقوں جیسے یزد کے شہر اردکان میں محرم کی پہلی شب کو مشعل برداری کی رسم ہوتی ہے تاکہ محرم کے آغاز کا اعلان کیا جائے اور لوگوں کو عزاداری کی دعوت دی جائے۔ ان علاقوں میں نو محرم کی شب سے صبح عاشور تک مشعل برداری ہوتی ہے۔ [8] بعض جگہوں پر شام غریباں میں بھی مشعل برداری کی رسم ہوتی ہے۔ [9]

حوالہ جات

  1. مظاہری، فرہنگ سوگ شیعی، ۱۳۹۵ش، ص۴۵۰۔
  2. ۱۰ سنت عاشورایی از ۱۰ گوشه جهان، وبگاه مشرق‌نیوز۔
  3. ۱۰ سنت عاشورایی از ۱۰ گوشه جهان، مشرق‌نیوز سائٹ۔
  4. مظاہری، فرہنگ سوگ شیعی، ۱۳۹۵ش، ص۴۵۰۔
  5. مظاہری، فرہنگ سوگ شیعی، ۱۳۹۵ش، ص۴۵۱۔
  6. ۱۰ سنت عاشورایی از ۱۰ گوشه جهان، وبگاه مشرق‌نیوز۔
  7. ۱۰ سنت عاشورایی از ۱۰ گوشه جهان، وبگاه مشرق‌نیوز۔
  8. رضائی، عزاداری امام حسین در جہان، ۱۳۸۸ش، ص۶۹۔
  9. مظاہری، فرہنگ سوگ شیعی، ۱۳۹۵ش، ص۴۵۰۔


مآخذ