عبد اللہ بن عقیل

ویکی شیعہ سے
یہاں جائیں: رہنمائی، تلاش کریں
بسم اللّه الرّحمن الرّحیم
آرامگاه شهدای کربلا2.jpg
کردار عقیل بن ابو طالب کا بیٹا
نام عبد اللہ بن عقیل
لقب اکبر
وفات 10 محرم الحرام سنہ 61 ہجری.
مدفن کربلا
شریک حیات میمونہ بنت علی بن ابی طالب
مشہور امام زادے
عباس بن علی، زینب کبری، فاطمہ معصومہ، علی اکبر، علی اصغر، عبد العظیم حسنی، احمد بن موسی، سید محمد، سیدہ نفیسہ


عبد اللہ بن عقیل بن ابی طالب بنو ہاشم کے ان شہدا میں سے ہیں جنہوں نے 61 ھ میں عاشورا کے روز حضرت امام حسین کی رکاب میں جام شہادت نوش کیا ۔اکبر انکا لقب ہے ۔زیارت ناحیہ میں عبد اللہ بن عقیل کا نام شہیدوں کی فہرست میں آیا ہے نیز انساب الاشراف بلاذری، تاریخ طبری، مقاتل الطالبیین، مروج الذہب، مقتل الحسین خوارزمی، مناقب آل ابی طالب و... میں بھی یہ نام مذکور ہے۔

نسب

عقیل کے دو بیٹے عبد اللہ اکبر اور عبد اللہ اصغر کے نام سے تھے .[1] بعض نے ان دونوں کو کربلا کے شہدا میں سے گنا ہے .[2] ان کی والدہ کا نام أم البنين كلابيہ اور بعض کے نزدیک ام انیس تھا[3] بعض نے اسکا نام خلیلہ لکھا ہے[4] ۔انساب کی کتب کے مطابق عبد اللہ کے علاوہ عقیل کا ایک بیٹا ابوسعید تھا ۔[5]

عبدالله نے حضرت علی کی بیٹی میمونہ سے شادی کی .[6]

عبد اللہ بن عقیل کے نام سے زیارت ناحیہ میں ایک شہید کا نام آیا ہے جس کا تذکرہ انساب الاشراف بلاذری، تاریخ طبری، مقاتل الطالبیین، مروج الذہب، مقتل الحسین خوارزمی، مناقب آل ابی طالب و... میں مذکور ہے.[7]

شہادت

اس کے قاتل کا نام عبداللہ بن خالد جہنی ہمدانی ہے .[8]ایک قول کی بنا پر اسکے قاتل کا نام عمرو بن صبیح صیداوی (صدائی) ہے[9]

زیارت ناحیہ مقدسہ

انصار الحسین میں محمدمہدی شمس‌الدین کی تحلیل کے مطابق ابوعبدالله بن مسلم بن عقیل کہ جو زیارت ناحیہ مقدسہ غیرمشہوره میں آیا وہی عبدالله بن عقیل ہے ۔[10]

حوالہ جات

  1. بلاذری، انساب الاشراف، ج۲، ص۶۹.
  2. پژوہشی پیرامون شہدای کربلا، جمعی از نویسندگان، ص۲۲۴-۲۲۵.
  3. بلاذری، انساب الاشراف، ج۲، ص۷۰.
  4. ن ک :بلاذری، انساب الاشراف، ج۲، ص69 کا تعلیقہ.
  5. بلاذری، انساب الاشراف، ج۲، ص۷۰.
  6. علی بن محمد علوی،المجدی فی انساب الطالبین، ج۱، ص۱۸.
  7. ابوالفرج اصفهانی، مقاتل الطالبیین، ج۱، ص۹۷؛ مسعودی، مروج الذہب، ج۳، ص۶۲؛ ابن شہرآشوب، مناقب آل ابی طالب، ج۳، ص۲۵۴؛ خوارزمی، مقتل الحسین، ج۲، ص۵۳؛ بلاذری، انساب الاشراف، ج۳، ص۲۲۴؛ طبری، تاریخ طبری، ج۵، ص۴۴۷.
  8. ابوالفرج اصفہانی، مقاتل الطالبیین، ج۱، ص۹۷.
  9. شمس الدین، محمدمہدی، انصارالحسین، ۱۴۰۶ق، ص۱۵۰؛ طبری، تاریخ طبری، ج۵، ص۴۴۷.
  10. شمس الدین، محمدمہدی، انصارالحسین، ۱۴۰۶ق، ص۱۵۰.


منابع

  • ابن شہرآشوب، مناقب آل ابى‌طالب عليہ السلام، تحقيق: يوسف بقاعى، بيروت، دار الاضواء دوم، ۱۴۱۲ق.
  • ابوالفرج اصفہانی، مقاتل الطالبیین، بیروت، مؤسسہ الأعلمی للمطبوعات، ۱۴۱۹ق.
  • پژوہشی پیرامون کربلا، جمعی از نویسندگان، پژوہشكده تحقيقات اسلامى‌، نمايندگى ولىّ فقيہ در سپاه‌، بی‌تا.
  • بلاذری، انساب الاشراف، بیروت، مؤسسہ الأعلمی للمطبوعات، ۱۳۹۷ق.
  • خوارزمی، موفق بن احمد، مقتل الحسین، قم، انوار الہدی، بی‌تا.
  • زبيرى، مصعب بن عبد الله، نسب قريش، تحقيق: ا. ليفى بروفنال، قاہره، دار المعارف، بی‌تا.
  • شريف كاشانى، ملّا حبيب اللّہ، تذكرةالشہداء، اہتمام: محمد شريف، استنساخ ۱۳۰۸ق.
  • شمس الدین، محمدمہدی، انصارالحسین، ترجمہ ہوشنگ اجاقی، تہران، نشر آفاق، ۱۴۰۶ق.
  • طبری، تاریخ طبری، بیروت، روائع التراث العربی، بی‌تا.
  • علوى عمرى، على بن محمد، المجدى فى انساب الطالبيين، تحقيق: احمد مہدوى، قم، كتابخانہ مرعشى نجفى، اوّل، ۱۴۰۹ق.
  • مسعودی، علی بن حسین، مروج الذہب، قم، دارالہجرة، ۱۴۰۹ق.