تبدیلیاں

یہاں جائیں: رہنمائی، تلاش کریں

غرر الحکم و درر الکلم (کتاب)

25 bytes added, 20:56, 22 فروری 2018
کوئی ترمیمی خلاصہ نہیں
|data7 =
}}
 
'''غُرَرُ الحِکَم و دُرَرُ الکَلِم''' (=برترین نصیحتیں اور الفاظ کے موتی) ایک ایسی کتاب ہے جو [[حضرت علی(ع)]] کے 10760 [[حدیث|احادیث]] میں مشتمل ہے جسے [[پانجویں صدی]] ہجری کے مشہور [[شیعہ]] عالم دین [[ابوالفتح آمدی|ابوالفَتح آمدِی]] نے تألیف فرمایا ہے۔ یہ کتاب مشہور شیعہ حدیثی کتابوں میں سے ہے جس میں مصنف نے احادیث کو حروف تہجی کے ترتیب سے جمع کیا ہے۔ اب تک اس کتاب کے کئی ترجمے، خلاصے اور موضوعی فہرست منظر عام پر آچکی ہے۔
==مؤلف==
''غرر الحکم'' کی [[حدیث|احادیث]] موضوع کے اعتبار سے عام ہیں جن میں اعتقادی، اخلاقی، عبادی، اجتماعی اور سیاسی موضوعات پر احادیث شامل ہیں۔ یہ احادیث بغیر [[سند روایت|سند]] کے ذکر کیا گیا ہے اور مؤلف مقدمے میں اسناد کو حدف کرنے کی علت کی طرف اشارہ کیاہے۔ <ref>آمدی، ''غرر الحکم''، مقدمہ.</ref> آیت اللہ ناصر مکارم شیرازی فرماتے ہیں: اس کتاب کی حدیثیں سند نہ ہونے کی وجہ سے قابل استناد نہیں ہیں۔<ref>مکارم شیرازی، ''انوار الفقاهه''، کتاب البیع، ص۴۶۵.</ref>
 
== تألیف کا مقصد ==
اس کتاب کی تألیف پر جس چیز نے مؤلف کو وادار کیا اس بارے میں خود مؤلف نے اس کتاب کے مقدمے میں کھا ہے کہ: جب آپ [[جاحظ]] کی ''[[مائۃ کلمۃ]]'' (یعنی سو کلمات) نامی کتاب کا مطالعہ کرتے ہیں تو اسی وقت یہ ارادہ کرتے ہیں کہ [[امیرالمؤمنین]] حضرت علی(ع) کی کلمات پر مشتمل ایک کتاب لکھوں گا۔ مؤلف جاحظ کو مولا کے کلام میں سے صرف اس مقدار پر اکتفاء کرنے پر سرنزش کرتے ہوئے کہتے ہیں:
==اس کتاب کے خطی نسخے==
{{اہم کتب حدیث}}
#نسخہ نمبر ۱۱۶۸ [[کتابخانہ آستان قدس رضوی]] جوسنہ ۵۱۷ ق. میں نسخہ برداری ہوئی ہے (یہ نسخہ سب سے قدیمی‌ نسخہ ہے)
#نسخہ [[کتابخانہ حاج حسین ملک]] جس کی نسخہ برداری سنہ ۷۱۷ میں کامل ہوئی ہے۔
16,083
ترامیم

فہرست رہنمائی