"قصاص" کے نسخوں کے درمیان فرق

ویکی شیعہ سے
یہاں جائیں: رہنمائی، تلاش کریں
(«{{زیر تعمیر}} {{احکام}} '''قِصاص''' اسلامی فقہ کی ایک اصطلاح ہے جس کے معنی عمدی ج...» مواد پر مشتمل نیا صفحہ بنایا)
 
م
سطر 3: سطر 3:
 
'''قِصاص''' اسلامی [[فقہ]] کی ایک اصطلاح ہے جس کے معنی عمدی جنایتوں میں مقابلہ بہ مثل کے ہیں۔ قصاص دو قسم قصاص نَفْس اور قصاص عضو میں تقسیم ہوتا ہے۔ قصاص کے حکم کو دین [[اسلام]] کے مسلّم [[احکام]] میں شمار کیا جاتا ہے اور [[قرآن]] کی متعدد [[آیات]]، [[متواتر]] احادیث اور  [[اجماع]] اس پر دلالت کرتی ہیں۔ غلام اور آزاد ہونے میں مساوی ہونا، دین کا ایک ہونا، [[بلوغ|بالغ]] ہونا اور [[عقل|عاقل]] ہونا قصاص کے تحقق کے شرائط میں سے ہیس۔ قصاص، [[دیہ]]، [[حد|حَدّ]] اور [[تعزیر]] [[جمہوری اسلامی ایران]] کے قانون مجازات اسلام کے چار اصلی مجازات میں سے ہیں۔
 
'''قِصاص''' اسلامی [[فقہ]] کی ایک اصطلاح ہے جس کے معنی عمدی جنایتوں میں مقابلہ بہ مثل کے ہیں۔ قصاص دو قسم قصاص نَفْس اور قصاص عضو میں تقسیم ہوتا ہے۔ قصاص کے حکم کو دین [[اسلام]] کے مسلّم [[احکام]] میں شمار کیا جاتا ہے اور [[قرآن]] کی متعدد [[آیات]]، [[متواتر]] احادیث اور  [[اجماع]] اس پر دلالت کرتی ہیں۔ غلام اور آزاد ہونے میں مساوی ہونا، دین کا ایک ہونا، [[بلوغ|بالغ]] ہونا اور [[عقل|عاقل]] ہونا قصاص کے تحقق کے شرائط میں سے ہیس۔ قصاص، [[دیہ]]، [[حد|حَدّ]] اور [[تعزیر]] [[جمہوری اسلامی ایران]] کے قانون مجازات اسلام کے چار اصلی مجازات میں سے ہیں۔
  
==مقابلہ بہ مثل==<!--
+
==جوابی کاروائی==<!--
 
مقابلہ بہ مثل در جنایات عمدی را قصاص می‌گویند۔<ref>مؤسسہ دایرۃ المعارف فقہ اسلامی، فرہنگ فقہ، ۱۳۹۵ش، ج۶، ص۵۹۷۔</ref> اگر کسی را کہ قتلی مترکب شدہ یا جراحتی بہ شخصی وارد کردہ است، بکشند یا ہمان جراحت را بہ او وارد کنند، او را قصاص کردہ‌اند۔<ref>نجفی، جواہر الکلام، ۱۴۰۴ق، ج۴۲، ص۷۔</ref> در کتاب‌ہای [[فقہ|فقہی]] و حقوقی، بہ فردی کہ جنایت را انجام دادہ است، جانی می‌گویند و آن را کہ مورد جنایت قرار گرفتہ است، مَجْنیٌّ‌علیہ می‌نامند۔<ref>نگاہ کنید بہ مؤسسہ دایرۃ المعارف فقہ اسلامی، فرہنگ فقہ، ۱۳۹۵ش، ج۶، ص۶۰۱؛ [http://www۔shora-gc۔ir/Portal/file/?10525/ghanoon-mojazat-eslami۔pdf سایت شورای نگہبان قانون اساسی، قانون مجازات اسلامی، مادہ ۴۰۰۔]</ref>
 
مقابلہ بہ مثل در جنایات عمدی را قصاص می‌گویند۔<ref>مؤسسہ دایرۃ المعارف فقہ اسلامی، فرہنگ فقہ، ۱۳۹۵ش، ج۶، ص۵۹۷۔</ref> اگر کسی را کہ قتلی مترکب شدہ یا جراحتی بہ شخصی وارد کردہ است، بکشند یا ہمان جراحت را بہ او وارد کنند، او را قصاص کردہ‌اند۔<ref>نجفی، جواہر الکلام، ۱۴۰۴ق، ج۴۲، ص۷۔</ref> در کتاب‌ہای [[فقہ|فقہی]] و حقوقی، بہ فردی کہ جنایت را انجام دادہ است، جانی می‌گویند و آن را کہ مورد جنایت قرار گرفتہ است، مَجْنیٌّ‌علیہ می‌نامند۔<ref>نگاہ کنید بہ مؤسسہ دایرۃ المعارف فقہ اسلامی، فرہنگ فقہ، ۱۳۹۵ش، ج۶، ص۶۰۱؛ [http://www۔shora-gc۔ir/Portal/file/?10525/ghanoon-mojazat-eslami۔pdf سایت شورای نگہبان قانون اساسی، قانون مجازات اسلامی، مادہ ۴۰۰۔]</ref>
  
سطر 50: سطر 50:
 
{{پایان}}
 
{{پایان}}
 
-->
 
-->
 +
 
==حوالہ جات==
 
==حوالہ جات==
 
{{حوالہ جات|2}}
 
{{حوالہ جات|2}}

نسخہ بمطابق 17:04, 10 نومبر 2018

مشہور احکام
توضیح المسائل2.png
نماز
واجب نمازیں یومیہ نمازیںنماز جمعہنماز عیدنماز آیاتنماز میت
مستحب نمازیں نماز تہجدنماز غفیلہنماز جعفر طیارنماز امام زمانہنماز استسقاءنماز شب قدرنماز وحشتنماز شکرنماز استغاثہدیگر نمازیں
دیگر عبادات
روزہخمسزکاتحججہاد
امر بالمعروف و نہی عن المنکرتولیتبری
احکام طہارت
وضوغسلتیممنجاساتمطہرات
مدنی احکام
وکالتوصیتضمانتکفالتارث
عائلی احکام
شادی بیاهمتعہتعَدُّدِ اَزواجنشوز
طلاقمہریہرضاعہمبستریاستمتاع
عدالتی احکام
قضاوتدیّتحدودقصاصتعزیر
اقتصادی احکام
خرید و فروخت (بیع)اجارہقرضسود
دیگر احکام
حجابصدقہنذرتقلیدکھانے پینے کے آدابوقفاعتکاف
متعلقہ موضوعات
بلوغفقہشرعی احکامتوضیح المسائل
واجبحراممستحبمباحمکروہ

قِصاص اسلامی فقہ کی ایک اصطلاح ہے جس کے معنی عمدی جنایتوں میں مقابلہ بہ مثل کے ہیں۔ قصاص دو قسم قصاص نَفْس اور قصاص عضو میں تقسیم ہوتا ہے۔ قصاص کے حکم کو دین اسلام کے مسلّم احکام میں شمار کیا جاتا ہے اور قرآن کی متعدد آیات، متواتر احادیث اور اجماع اس پر دلالت کرتی ہیں۔ غلام اور آزاد ہونے میں مساوی ہونا، دین کا ایک ہونا، بالغ ہونا اور عاقل ہونا قصاص کے تحقق کے شرائط میں سے ہیس۔ قصاص، دیہ، حَدّ اور تعزیر جمہوری اسلامی ایران کے قانون مجازات اسلام کے چار اصلی مجازات میں سے ہیں۔

جوابی کاروائی

حوالہ جات


مآخذ

سانچہ:حد و تعزیر